Wednesday , April 26 2017
Home / Top Stories / اسرائیلی ’ناسور‘ سے فلسطین کی مکمل آزادی پرزور

اسرائیلی ’ناسور‘ سے فلسطین کی مکمل آزادی پرزور

تحریک انتفاضہ سے اظہاریگانگت کیلئے بین الاقوامی کانفرنس، علی خامنہ ای کا خطاب
تہران ۔ 21 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) ایران کے رہبر اعلیٰ آیت اللہ علی خامنہ ای نے اسرائیل کے وجود کے حق کو تسلیم کرنے سے اپنی حکومت کے انکار کی آج تجدید کرتے ہوئے ’’اسرائیلی ناسور‘‘ سے فلسطین کی مکمل آزادی پر زور دیا۔ خامنہ ای یہاں فلسطینی تحریک انتفاضہ کی تائید میں چھٹویں بین الاقوامی کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔ یہ کانفرنس بھی ایرانی حکام کی طرف سے منعقد  کئے جانے والے ان بے شمار پروگراموں میں سے ایک ہے جو فلسطینیوں سے ایران کے اظہاریگانگت کیلئے منعقد کئے جاتے ہیں۔ سرکاری ٹیلیویژن سے نشر کردہ اپنے خطاب میں خامنہ ای نے کہا کہ ’’یہ سرطانی ناسور اپنی ابتداء سے انتہائی تیزی کے ساتھ بڑھ رہا ہے اور اسی رفتار سے اس کا علاج بھی ضروری ہے‘‘۔ انہوں نے کہاکہ ’’ناسور کے خاتمہ کے مقصد سے انتفاضہ جیسی کئی تحریکات اور مسلسل مزاحمت کامیاب ثابت ہوتی ہیں۔ اگر یہ سلسلہ اپنے مقاصد کی راہ پر گامزن رہے گا تو یقیناً فلسطین مکمل طور پر آزاد ہوگا‘‘۔ خامنہ ای نے 2000 میں جنوبی لبنان اور 2005ء میں غزہ سے اسرائیل کی واپسی کو دو اہم کامیابیاں قرار دیا۔ خطاب کے موقع پر اعتدال پسند صدر حسن روحانی کے علاوہ دو قدامت پسند برادران پارلیمانی سربراہ علی لاری جانی اور عدالتی سربراہ آیت اللہ صادق لاری جانی بھی آیت اللہ خامنہ ای کے ساتھ تھے۔ اس کانفرنس میں 80 ملکوں کے نمائندے حصہ لے رہے ہیں۔

 

فلسطینی مملکت پر رعایت دینے سے اردن اور مصر کا انکار
قاہرہ ۔ /21 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) صدر مصر عبدالفتح السیسی اور اردن کے شاہ عبداللہ ثانی نے آج کہا کہ فلسطینیوں کی مملکت کے قیام کے سلسلہ میں کوئی رعایت نہیں دی جاسکتی ۔ مصر کے قصر صدارت میں دونوں عرب ممالک کے سربراہوں نے کہا کہ صدر امریکہ ڈونالڈ ٹرمپ انتظامیہ کی تجویز پر کہ وہ مشرق وسطیٰ امن معاہدہ کیلئے فلسطینی مملکت کے قیام کیلئے اصرار نہیں کرے گا ۔ مصر اور اردن کا یہ ردعمل منظر عام پر آیا ہے ۔ دونوں ممالک نے مشرق وسطی امن کارروائی کے جمود کو ختم کرنے کے بارے میں تبادلہ خیال کیا ۔ خاص طور پر ٹرمپ کے برسراقتدار آنے کے بعد کے حالات پر غور کیا گیا ۔ دونوں عرب سربراہان مملکت نے کہا کہ فلسطینی مملکت کے جس کا دارالحکومت یروشلم ہو اسرائیل ۔ فلسطین تنازعہ کا حل ممکن ہے ۔ قبل ازیں جاریہ ماہ وزیراعظم اسرائیل بنجامن نتن یاہو نے صدر امریکہ ڈونالڈ ٹرمپ سے ملاقات کی تھی اور ٹرمپ نے اس کے بعد بیان دیتے ہوئے کہا تھا کہ وہ تنازعہ کے واحد مملکتی یا دو مملکتی حل کیلئے اصرار نہیں کریں گے بلکہ امن کارروائی میں پیشرفت کے طریقوں پر غور کریں گے ۔ مصر اور اردن دونوں امریکہ کے حلیف ہیں ۔چنانچہ صدر امریکہ کے بیان پر دونوں ممالک کے سخت ردعمل کی اہمیت ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT