Tuesday , June 27 2017
Home / ہندوستان / اسلامک اسٹیٹ کیلئے ہندوستانی خاتون برسر پیکار

اسلامک اسٹیٹ کیلئے ہندوستانی خاتون برسر پیکار

این آئی اے کی تحقیقات میں ایک شخص کا دعوی
نئی دہلی۔14 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) عراق اور شام میں اسلامک اسٹیٹ کے زیر قبضہ علاقہ میں ایک ہندوستانی خاتون کی موجودگی کا پہلی مرتبہ انکشاف ہوا ہے۔ ایک تاملناڈو کے شہری جس نے موصل میں عسکریت پسند تنظیم کے لئے جدوجہد کی تھی، این آئی اے ٹیم کی پوچھ تاچھ کے دوران بتایا ہے کہ وہاں 5 ماہ تک قیام کے دوران اس نے مہاراشٹرا کے ایک جوڑے سے ملاقات کی تھی۔ ملزم سبحانی حاجہ محی الدین (35 سال ) کو این آئی اے نے 6 اکٹوبر کو اس وقت گرفتار کرلیا تھا، جب وہ شیوا کاشی میں دھماکو اشیاء کے انتظام کی کوشش میں تھا۔ تاہم محی الدین نے یہ بھی بتایا ہے کہ وہ یقین سے نہیں کہہ سکتا کہ مذکورہ جوڑا، اسلامک اسٹیٹ کیلئے لڑرہا ہے۔ اس نے بتایا کہ مہاراشٹرا کے متوطن جوڑے سے عراق میں ملاقات ہوئی تھی اور جب واحد ہندوستانی جوڑا تھا جس سے جنگ زدہ علاقہ میں آمنا سامنا ہوگیا اور ایک مقام پر مختصر سا تبادلہ خیال بھی ہوا تھا۔ این آئی اے کے ذرائع نے بتایا کہ جاریہ سال جولائی تک یہ معلوم نہیں تھا۔ اسلامک اسٹیٹ کے زیر قبضہ علاقہ میں کوئی ہندوستانی خاتون بھی برسر پیکار ہے۔ لیکن کیرالا سے وابستہ 21 افراد 3 خواتین اور 6 بچے اسلامک اسٹیٹ میں شمولیت کے لئے افغانستان روانہ ہونے کی تصدیق ہوگی ایسے میں خواتین اپنے شوہروں کے ساتھ سفر کیا تھا۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ تحقیقاتی ایجنسی مہاراشٹرا سے لاپتہ لوگوں کے ریکارڈ کو جانچ شروع کردیا ہے تاکہ یہ پتہ چلایا جاسکے کہ مذکورہ خاتون راست ہندوستان سے روانہ ہوئی ہے یا پھر گرفتاری سے بچنے کے لئے کسی تیسرے ملک سے سفر کیا ہے۔ محی الدین نے یہ بھی دعوی کیا ہے کہ اسلامک اسٹیٹ کے محاذ جنگ پر بمشکل 2 تا 3 ہندوستانی ہوسکتے ہیں اور ہندوستان فی الحال داعش کے نشانہ پر نہیں ہے کیوں کہ آئی ایس کی ایجنسی مغربی ممالک پر حملہ کرنے میں ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT