Wednesday , June 28 2017
Home / اضلاع کی خبریں / اسلامی قوانین مسلمانوں کیلئے باعث فخر

اسلامی قوانین مسلمانوں کیلئے باعث فخر

بیدر میں تحفظ شریعت کانفرنس برائے خواتین، مفتیہ رضوانہ زرین کا خطاب

بیدر۔/18ڈسمبر، ( ذریعہ فیاکس ) جامعتہ الزہرہ کے زیر اہتمام ممتاز فنکشن ہال نور خاں تعلیم بیدر میں منعقد ہوئے جشن آمد روح کائنات ؐ کانفرنس و تحفظ شریعت برائے خواتین کے کثیر اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر مفتیہ رضوانہ زرین پرنسپل و شیخ الحدیث جامعتہ المومنات نے کہا کہ ہمارا ملک ہندوستان ایک سیکولر جمہوری ملک ہے ہندوستانی آئین کے مطابق ہر ہندوستانی کو اپنے مذہب کے مطابق زندگی گزارنے کا پورا پورا حق حاصل ہے۔ حکومت اس معاملہ میں کسی کو پابند نہیں کرسکتی ۔شریعت کا قانون یہ اللہ کا قانون ہے اس کی حفاظت مسلمانوں کی متاع عزیز ہے، خواہ طلاق کا مسئلہ ہو یا دیگر عائیلی مسائل جو قرآن و حدیث سے ماخوذ ہیں، ہمارا امتیاز ہے اور ہمارے لئے باعث فخر ہے اس میں ترمیم و تحریف تو کیا ایک نقطہ کی کمی بیشی بھی مسلمانوں کو گوارہ نہیں ہے، مسلم پرسنل لا کے جو قوانین ہیں وہ قانون شریعت کے موافق ہیں پچھلے کئی صدیوں سے مسلمانان ہند اسی پر عمل کرتے آرہے ہیں اور قیامت تک اسی پر عمل کرتے رہیں گے۔ اسلام نے عورتوں کے تحفظ اور ان کے حقوق کیلئے جو اصول پیش کئے ہیں وہ کسی دوسرے مذاہب میں نہیں ہے، مسئلہ طلاق خواتین پر ظلم نہیں ہے بلکہ فریقین کے درمیان ہونے والے ظلم کا بہترین حل ہے۔ اگر طلاق پر پابندی لگادی جائے گی تو ظلم و زیادتی میں روز افزوں اضافہ ہوتا رہے گا۔ قرآن و حدیث میں طلاق دینے کے مکمل اصول بنائے گئے ہیں اور کسی آدمی کو یہ اختیار نہیں ہے کہ وہ اپنی بیوی کو اپنے سے علحدہ کرے یہ مسئلہ  زندگی کی ناخوشگواری کے موقع پر ہر دو کیلئے سہولت ہے۔ اس کو ظلم سمجھنا بھی ظلم ہے، آج مسلمانوں کے معتدل مسائل کو غیر منصفانہ بناکر بھولی بھالی مسلم خواتین کو ورغلانے کی کوشش کی جارہی ہے، یہ ایک ناپاک کوشش ہے تمام خواتین کو چاہیئے کہ مسلمانوں کے مسائل اچھی طرح سمجھ کر دین محمدی کے تحفظ کیلئے ہر پل مستعد رہیں۔ مفتیہ سیدہ غوثیہ شاہد مومناتی نائب مفتیہ جامعتہ المومنات نے کہا کہ جشن عید میلادالنبیؐ منانا زبان سے، عبادت سے، انفاق مال سے ہر طرح جائز و مستحسن ہے۔ پیارے آقا صلی اللہ علیہ وسلم نے خود اپنی حیات طیبہ میں اپنا میلاد منایا، حضرت عبداللہ بن عباس ؓ ایک مرتبہ اپنے گھر میں پیارے آقا کی ولادت کے واقعات سنارہے تھے کہ اچانک پیارے آقا صلی اللہ علیہ وسلم کا گذر وہاں سے ہوا تو آپ نے فرمایا تم پر میری شفاعت واجب ہے۔ جس گھر یا جس محلہ میں میلاد کی محفل سجائی جاتی ہے وہ گھر اور محلہ سال بھر بلاؤں، مصیبتوں سے محفوظ رہتا ہے۔ مفتیہ سمیرہ خاتون مومناتی نائب مفتیہ جامعتہ المومنات نے کہا کہ اللہ کے رسول ؐ نے مسلمانوں کو زیارت قبور کرنے کا حکم دیا ہے اس لئے کہ زیارت قبور سے دل نرم ہوتے ہیں، اللہ کے رسول ؐ نے اوائل اسلام میں زیارت قبور سے منع فرمائے تھے بعد میں آپ نے اجازت دے دی، عورتیں بھی زیارت قبور کرسکتی ہیں بشرطیکہ مرد و زن کا اختلاط نہ ہو اور فتنہ کا اندیشہ نہ ہو۔ جلسہ کا آغاز قاریہ صبا انجم کی قرأت اور حافظہ ثمرین بیگم کی نعت شریف سے ہوا جبکہ عالمہ ناز محمدی، آفرین فاطمہ نے نظامت کے فرائض انجام دیئے۔ خطبہ استقبالیہ محترمہ سیدہ سلمی بانو نشاط اور کلمات تشکر حافظہ سلمیٰ شیخ نے ادا کئے۔ محترمہ سیدہ اطہر جعفری صدر معلمہ جامعتہ الزہرہ نے سالانہ رپورٹ پیش کی۔ سید متین علی شاہ قادری، سید شعیب شاہ نے پس پردہ جلسہ کے انتظامات کئے۔ ڈاکٹر مفتی حافظ محمد مستان علی قادری ناظم اعلیٰ جامعتہ المومنات کی رقت انگیز دعا پر جلسہ کا اختتام عمل میں لایا گیا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT