Tuesday , September 26 2017
Home / Top Stories / داعش پرچم نذر آتش کرنے کے خلاف سرینگر میں عام ہڑتال

داعش پرچم نذر آتش کرنے کے خلاف سرینگر میں عام ہڑتال

اننت ناگ میں گرینیڈ حملہ سے ایک شہری ہلاک اور دیگر 6 زخمی
سرینگر 25 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) ضلع راجوری میں ایک جہادی تنظیم اسلامک اسٹیٹ ( آئی ایس ) پرچم نذر آتش کردینے کے خلاف تاجروں کی تنظیم کی عام ہڑتال سے آج سرینگر اور کشمیر کے دیگر ٹاؤنس میں عام زندگی درہم برہم ہوگئی۔ اس ہڑتال کو مختلف گروپس بشمول میر واعظ عمر فاروق کی حریت کانفرنس، یٰسین ملک کی زیرقیادت جے کے ایل ایف اور کشمیر ٹریڈرس اینڈ مینوفیکچررس فیڈریشن نے تائید کی تھی جس کے دوران شہر اور دیگر مقامات پر مارکٹس اور تعلیمی ادارہ جات بند رکھے گئے۔ عوامی ٹرانسپورٹ دستیاب نہ ہونے پر سرکاری اور نیم سرکاری دفاتر میں ملازمین کی حاضری کم تھی کیونکہ ہڑتال کے باعث ٹرانسپورٹ گاڑیوں کو سڑکوں سے ہٹادیا گیا تھا۔ اس مسئلہ پر ہائیکورٹ بار اسوسی ایشن کے احتجاج پر وکلاء کی غیر حاضری سے عدالتوں میں کام کاج متاثر رہا۔ واضح رہے کہ ضلع راجوری میں 21 جولائی کو اس وقت غیر معینہ مدت کا کرفیو نافذ کردیا گیا جب اسلامک اسٹیٹ کا پرچم بعض وشوا ہندو پریشد کارکنوں کی جانب سے نذر آتش کردینے پر اقلیتی فرقہ کے احتجاج پر پرتشدد تصادم ہوگیا۔ احتجاجیوں کا کہنا تھا کہ اس پرچم پر مذہبی کلمات تحریر تھے۔ شہریان راجوری سے اظہار یگانگت کے لئے حریت اور جے کے ایل ایف کے علاوہ ایک درجن سے زائد مختلف تنظیموں کے نمائندوں نے عام ہڑتال کی تائید کا وعدہ کیا تھا۔ تاہم آج حالات پرامن رہے۔ بند کے دوران کہیں سے بھی تشدد کی اطلاع نہیں ملی ہے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ حساس علاقوں میں امن و قانون کی برقراری کے لئے پولیس اور نیم فوجی دستوں کو متعین کردیا گیا ہے۔

دریں اثناء جنوبی کشمیر کے ضلع اننت ناگ میں عسکریت پسندوں کے گرینیڈ حملہ میں ایک شہری ہلاک اور دیگر 6 بشمول سی آر پی ایف جوان زخمی ہوگئے۔ یہ حملہ شہر میں عسکریت پسندوں کی جانب سے پرائیوٹ موبائیل شورومس کو گرینڈس کے نشانہ بنانے کے ایک دن بعد کیا گیا۔ اننت ناگ میں حملہ کی تفصیلات بتاتے ہوئے ایک پولیس عہدیدار نے بتایا کہ عسکریت پسندوں نے 2 بجے دن اچھابل بس اسٹانڈ پر گرینیڈ پھینکا جس میں ایک سی آر پی ایف جوان اور 5 راہگیر زخمی ہوگئے۔ انھوں نے بتایا کہ ایک زخمی شہری 50 سالہ محمد جبار بغرض علاج سرینگر منتقلی کے دوران جانبر نہ ہوسکا۔ بظاہر یہ حملہ سکیوریٹی فورسیس کی گشتی پارٹی کو نشانہ بنانے کے لئے کیا گیا تھا لیکن نشانہ چوک کر سڑک کے کنارے گرینیڈ پھٹ گیا۔ انھوں نے بتایا کہ دیگر زخمیوں میں ایک کی حالت تشویشناک ہے۔ واضح رہے کہ عسکریت پسندوں نے سرینگر کے علاقوں کرن نگر اور شہید گنج میں موبائیل کمیونکیشن مراکز پر 3 گرینیڈ کا دھماکہ کیا تھا جس میں 4 افراد زخمی ہوگئے تھے۔

TOPPOPULARRECENT