Wednesday , August 16 2017
Home / شہر کی خبریں / اسلام اور اسلامی شریعت میں تا قیامت مداخلت کی گنجائش نہیں

اسلام اور اسلامی شریعت میں تا قیامت مداخلت کی گنجائش نہیں

قومی سالمیت کمیٹی کا جلسہ سیرت النبیؐ ، ایس کے افضل الدین ، نواب کاظم علی خاں کا خطاب
حیدرآباد ۔ 6۔ مئی : ( دکن نیوز ) : کائنات کے مالک نے مسلمانوں کے لیے اسلام اور اسلامی شریعت رسول محمد عربی ﷺ کے ذریعہ بھیجا ہے اس میں تا قیامت کسی قسم کی تبدیلی اور مداخلت کا کسی کو کوئی حق نہیں پہنچتا ۔ اس ملک جس میں مسلمان اپنی زندگیاں بسر کررہے ہیں اس کا دستور اور آئین اس بات کا حق تمام مذاہب کے ماننے والوں کو دیتا ہے کہ وہ ایک دوسرے مذاہب کی تعظیم و تکریم اور تبلیغ کریں ۔ اس کے باوجود اقتدار کے لالچ اور نام نہاد سیکولر اپنے آپ کو کہنے والی جماعتیں اور تنظیمیں اپنے مفادات حاصلہ کے لیے اقتدار میں آنے کے ساتھ ملک کی سالمیت کو خطرہ میں ڈالنے کے درپے ہوجاتی ہیں ۔ اس ملک میں یکساں سیول کوڈ اور طلاق ثلاثہ کو وہ رائج کر کے اسلام میں تبدیلی کے خواہاں ہیں ۔ لیکن ہم ( مسلمان ) اسلامی شریعت میں کسی قسم کی تبدیلی کو گوارہ نہیں کریں گے ۔ ہماری کامیابی اسی میں ہے کہ شریعت کی پابندی کی جائے جب کہ اس کی خلاف ورزی اللہ کے غضب کو دعوت دیتی ہے ۔ ان خیالات کا اظہار مقررین نے قومی سالمیت کمیٹی کے زیر اہتمام پرکاشم ہال گاندھی بھون میں 25 ویں جلسہ سیرت النبیؐ سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ جلسہ کی نگرانی صدر کمیٹی و جنرل سکریٹری تلنگانہ پردیش کانگریس جناب ایس کے افضل الدین نے کی ۔ نواب کاظم علی خاں صدر امبیڈکر نیشنل کانگریس نے حضور اکرم ﷺ کی حیات طیبہ کے مختلف گوشوں پر روشنی ڈالی ۔ مولانا محمد صلاح الدین قادری انوری صدر زوالنورین ایجوکیشنل سوسائٹی نے حضور اکرم ﷺ کی حیات طیبہ پر تفصیل سے روشنی ڈالی اور کہا کہ آپؐ نے مکہ کے ماحول میں اپنے اخلاق و کردار کے انمٹ نقوش چھوڑے جس کو قیامت تک انسانیت یاد رکھے گی ۔ مولانا مفتی نسیم احمد اشرفی جنرل سکریٹری آل انڈیا مرکز کونسل نے حضورﷺ کی حیات طیبہ پر روشنی ڈالی اور کہا کہ آپ ؐ کی دعوت اور فکر کو مسلمان ہندوستان میں پیش کریں ۔ حافظ صابر پاشاہ کی قرات اور ڈاکٹر ایم اے انصاری کی نعت شریف سے جلسہ کا آغاز ہوا ۔ اس موقع پر ڈاکٹر اعجاز الزماں صدر مکہ مدینہ عازمین حج و عمرہ ویلفیر اسوسی ایشن ، کانگریس قائد محمد امجد ، مولانا یعقوب کلیم ، مولانا سید فرید الدین قادری ، مولانا سید شوکت علی شاہ قادری ، ڈکٹر کے عبدالعزیز ، اے ذاکر حسین ( تمل ناڈو ) ، سید فیض الدین انعامدار ( مہاراشٹرا ) ، جبار ، سید فصیح حسین ، سید علی صادق ، مختار مبین ، اعجاز خاں ، مختار احمد فردین ، محمد امتیاز ، محترمہ کوثر جہاں ، محترمہ عشرت النساء بیگم کے علاوہ مرد و خواتین اور طالبات کی کثیر تعداد موجود تھی ۔۔

TOPPOPULARRECENT