Monday , April 24 2017
Home / شہر کی خبریں / !اسمبلی انتخابات کی صورت میں کانگریس کو 70 نشستوں پر کامیابی 

!اسمبلی انتخابات کی صورت میں کانگریس کو 70 نشستوں پر کامیابی 

ٹی آر ایس حکومت کی نصف میعاد پوری ہونے پر کانگریس کا سروے ، تلنگانہ میں پارٹی کا حوصلہ افزاء موقف
حیدرآباد ۔ /14 فبروری (سیاست نیوز) تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی انتخابی تیاریوں کا آغاز کرچکی ہے ۔ ممبئی کے مشہور ایجنسی سے سروے کرایا ہے ۔ ابھی انتخابات منعقد ہوتے ہیں تو کانگریس کو 70 اسمبلی حلقوں پر کامیابی حاصل ہوگی جن میں 50 حلقوں پر پارٹی کی کامیابی آسان ہے ۔ تھوڑی سی محنت پر مزید 20 اسمبلی حلقوں پر کانگریس کو کامیابی ممکن ہے ۔ 10تا 15 ایسے اسمبلی حلقے ہیں جہاں کانگریس کو سخت مقابلہ درپیش ہے ۔ ٹی آر ایس کی نصف میعاد مکمل ہونے کے بعد صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کیپٹن اتم کمار ریڈی نے عوام کی نبض جاننے پارٹی کی کارکردگی اور حکومت سے عوام کی ناراضگی کا جائزہ لینے کیلئے ممبئی کی شہرت یافتہ ایجنسی سے ریاست میں سروے کرایا ہے ۔ سروے کے نتائج کانگریس کیلئے حوصلہ افزاء ثابت ہوئے ہیں جس سے پارٹی کے سینئر قائدین میں کافی جوش و خروش پیدا ہوا ہے ۔ جن اضلاع میں پارٹی کا موقف کمزور ہے ، وہاں پارٹی کو مستحکم کرنے کے لئے اسمبلی سطح پر ٹاسک فورس کمیٹیاں تشکیل دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ ساتھ ہی حکومت کے خلاف محاذ کھولدینے کا فیصلہ کرتے ہوئے حکومت کی غلطیوں ، مخالف عوام پالیسیوں کی نشاندہی کرتے ہوئے احتجاجی مہم شروع کرنے سے اتفاق کیا گیا ۔ جن اسمبلی حلقوں میں 2014 ء کے عام انتخابات میں کانگریس کے ارکان اسمبلی منتخب ہوئے ہیں اور سیاسی وفاداریاں تبدیل کرکے حکمران ٹی آر ایس میں شامل ہوئے ہیں ۔ ان حلقوں میں کانگریس کا موقف مستحکم ہے ۔ ذرائع نے بتایا کہ پارٹی نے گزشتہ انتخابات میں کمزور مظاہرہ کرنے والے پارٹی امیدواروں کو دوبارہ ٹکٹ دینے کے بجائے نئے چہروں کو انتخابی میدان میں اُتارنے کا فیصلہ کیا ہے ۔اس طرح 30 تا 36 امیدواروں کو دوبارہ ٹکٹ دینے کے امکانات نہیں ہے ۔ کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی کے سیاسی مشیر پرشانت کشور فبروری کے اواخر یا مارچ کے پہلے ہفتے میں تلنگانہ کا دورہ کرسکتے ہیں ۔ باوثوق ذرائع نے بتایا کہ اے آئی سی سی ایس سی ڈپارٹمنٹ کے صدر کے راجو نے پارٹی کے سینئر قائدین سے بات چیت کی ہے اور انہیں بتایا کہ 2019 ء میں کانگریس پارٹی تلنگانہ میں بھاری اکثریت سے کامیاب ہوسکتی ہے ۔ عوامی رجحان سے یہی پتہ چلتا ہے ۔ اب ساری ذمہ داری پارٹی قائدین پر ہے ۔ وہ اپنے آپ کو چیف منسٹر کا امیدوار ظاہر کرتے ہوئے آپس میں ایک دوسرے پر سبقت لے جانے کی کوشش نہ کریں جس سے پارٹی اور اس کی کامیابی پر اثر پڑسکتا ہے ۔ تمام قائدین متحدہ طور پر کام کریں اور عوام کو یہ مثبت تاثر دیں کہ کانگریس ہی حکمراں ٹی آر ایس جماعت کی متبادل ہے اور عوام کا اعتماد حاصل کرنے کی ہرممکن کوشش کریں ۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کیپٹن اتم کمار ریڈی نے گاندھی بھون میں منعقدہ تلنگانہ پی سی سی کے اجلاس میں سروے رپورٹ پر روشنی بھی ڈالی اور پارٹی کے تمام قائدین کو نظریاتی اختلافات سے بالاتر ہوکر پارٹی مفادات کیلئے متحد ہوجانے اور عوامی مسائل پر منظم ہونے والے پروگرامس کو کامیاب بنانے پر زور دیا ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT