Sunday , September 24 2017
Home / شہر کی خبریں / اسمبلی میں قائد اپوزیشن کا احترام نہیں: کانگریس، روایات سے انحراف: بی جے پی ۔ الزامات مسترد: ہریش راؤ

اسمبلی میں قائد اپوزیشن کا احترام نہیں: کانگریس، روایات سے انحراف: بی جے پی ۔ الزامات مسترد: ہریش راؤ

حیدرآباد۔22 مارچ (سیاست نیوز) کانگریس پارٹی نے تلنگانہ اسمبلی کی کارروائی غیر جمہوری انداز سے چلانے کا الزام عائد کیا اور کہا کہ قائد اپوزیشن کا احترام بھی ملحوظ نہیں رکھا جارہا ہے۔ آج صبح ایوان کی کارروائی کے آغاز کے ساتھ ہی قائد اپوزیشن جانا ریڈی نے یہ مسئلہ اٹھایا اور کہا کہ کل مطالبات زر پر مباحث کے دوران ڈپٹی اسپیکر پدمادیویندر ریڈی نے انہیں اظہار خیال کا موقع دیئے بغیر ہی کارروائی کو ملتوی کردیا۔ انہوں نے کہا کہ اچانک ان کا مائک کٹ کردیا گیا اور اجلاس ملتوی ہوگیا۔ جانا ریڈی نے اسپیکر اسمبلی مدھوسودن چاری کو مشورہ دیا کہ وہ اپوزیشن قائدین کے ساتھ اجلاس منعقد کریں تاکہ مستقبل میں اس طرح کے واقعات کا تدارک ہوسکے۔ جانا ریڈی نے کہا کہ جمہوریت میں اپوزیشن کو اظہار خیال کا موقع ملنا چاہئے۔ اگر یہی صورتحال رہی تو ایوان میں موجودگی کے بارے میں سوچنا پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ جس انداز میں اسمبلی کی کارروائی چلائی جارہی ہے عوام اس کا مشاہدہ کررہے ہیں۔ بی جے پی کے فلور لیڈر کشن ریڈی نے کہا کہ اسمبلی میں روایات سے انحراف کیا جارہا ہے۔ سابق میں ایک رکنی جماعت کو بھی ہر موضوع پر اظہار خیال کی روایت موجود ہے اور یہی جمہوری سیاست کا حصہ ہے۔ لیکن ٹی آر ایس حکومت اپوزیشن کو نظرانداز کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر ایک رکن کی تقریر کے دوران 10 مرتبہ مائک کٹ کیا جائے تو اس پر کیا گزرے گی۔ انہوں نے کہا کہ عوام اپنے مسائل کے سلسلہ میں نمائندگی کے لیے آتے ہیں اور ہم اسمبلی کے علاوہ عوامی مسائل کو آخر کہاں پیش کریں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے عوامی احتجاج کے مقام اندرا پارک دھرنا چوک کو بھی ختم کردیا ہے۔ وزیر امور مقننہ ہریش رائو نے اپوزیشن کے الزامات کو مسترد کردیا اور کہا کہ اپوزیشن جماعتیں تنگ نظری کے ساتھ کام کررہی ہیں۔ تمام جماعتوں کو ان کی عددی طاقت کے مطابق وقت دیا جاتا ہے

لیکن ٹی آر ایس حکومت نے ہر مسئلہ پر اپوزیشن کو مناسب وقت دیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ مطالبات زر پر مباحث میں ٹی آر ایس ارکان نے 37 منٹ بات کی جبکہ کانگریس کو ایک گھنٹہ 35 منٹ کا وقت دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ اسمبلی میں اب تک کے مباحث میں ٹی آر ایس نے چھ گھنٹے 35 منٹ کا وقت دیا ہے جبکہ کم تعداد کے باوجود کانگریس پارٹی کو 7 گھنٹے 35 منٹ کا وقت دیا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ مطالبات زر پر مباحث میں بی جے پی نے 46 منٹ، تلگودیشم 23 منٹ اور سی پی ایم نے 13 منٹ کا وقت لیا ہے۔ انہوں نے ڈپٹی اسپیکر پر قائد اپوزیشن کے اعتراضات کو نامناسب قرار دیا۔ اسپیکر مدھوسودن چاری نے اس موقع پر مداخلت کرتے ہوئے کہا کہ ایوان میں ان سے زیادہ تجربہ رکھنے والے ارکان موجود ہیں اور قائد اپوزیشن کا ہر کوئی احترام کرتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کرسی صدارت پر موجود ہر شخص قائد اپوزیشن کا مکمل احترام کرتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سابق میں جس طرح کارروائی چلائی گئی اور پڑوسی ریاست آندھراپردیش میں اسمبلی کے حالات سے ہر کوئی بخوبی واقف ہے۔ اسپیکر نے کہا کہ ڈپٹی اسپیکر کی موجودگی میں کل جو کچھ بھی ہوا وہ جان بوجھ کر نہیں ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ قائد اپوزیشن جانا ریڈی کے جذبات کا وہ احترام کرتے ہیں اور ان کی تکلیف کا احساس ہے۔ اسپیکر نے کہا کہ اسمبلی کی کارروائی مکمل جمہوری انداز میں چلائی جارہی ہے۔ اپوزیشن کو برسر اقتدار پارٹی سے زیادہ موقع دیا جارہا ہے۔ انہوں نے ارکان کو مشورہ دیا کہ وہ ایوان کا وقار برقرار رکھیں۔ اسپیکر کی وضاحت کے بعد قائد اپوزیشن جانا ریڈی نے پھر ایک مرتبہ اپوزیشن کے ساتھ انصاف کی اپیل کرتے ہوئے معاملے کو ختم کردیا۔

TOPPOPULARRECENT