Wednesday , September 20 2017
Home / شہر کی خبریں / اسمبلی میں ڈی کے ارونا کے تلخ ریمارک پر ڈپٹی اسپیکر اشکبار

اسمبلی میں ڈی کے ارونا کے تلخ ریمارک پر ڈپٹی اسپیکر اشکبار

پدما دیویندر ریڈی سے معذرت خواہی کیلئے ہریش راؤ کا اصرار بے اثر
حیدرآباد 22 مارچ (این ایس ایس) تلنگانہ اسمبلی میں آج حکمراں ٹی آر ایس اور اپوزیشن کانگریس کے ارکان کے درمیان سخت الفاظ کا تبادلہ عمل میں آیا۔ کانگریس کی رکن ڈی کے ارونا نے کرسی صدارت پر فائز ڈپٹی اسپیکر پدما دیویندر ریڈی کے خلاف مبینہ طور پر چند ’اہانت آمیز‘ ریمارکس کئے جس پر وہ (پدما دیویندر ریڈی) اشکبار ہوگئیں۔ ڈی کے ارونا نے کسی مسئلہ پر بحث کے دوران ریمارک کیا تھا کہ چند لوگ ’آداب و اخلاق‘ کے بغیر ایوان کی کارروائی چلارہے ہیں۔ جس پر پدما دیویندر ریڈی شدید جذبات سے مغلوب ہوگئیں اور اُن کی آنکھ سے آنسو رواں ہوگئے۔ اُنھوں نے کانگریس کی خاتون رکن سے دریافت کیاکہ آخر کیا وجہ تھی کہ انھوں نے اِس قسم کے ریمارکس کئے۔ اس دوران ایوان میں دونوں پارٹیوں کے ارکان کے درمیان بحث کا آغاز ہوگیا اور وزیر اُمور مقننہ ٹی ہریش راؤ کو بار بار مداخلت کرتے ہوئے دیکھا گیا جنھوں نے ڈی کے ارونا پر زور دیا کہ وہ غیر مشروط طور پر معذرت خواہی کے ساتھ ناشائستہ ریمارکس سے دستبرداری اختیار کریں یا پھر معطلی کا سامنا کریں۔ جس پر قائد اپوزیشن کے جانا ریڈی نے ارونا کی جانب سے کوئی ناشائستہ ریمارکس کئے جانے کی تردید کی۔ لیکن جانا ریڈی کے ادعا سے ہریش راؤ مطمئن نہیں ہوئے۔ اسی مسئلہ پر بحث چلتی رہی اور ایوان میں پہلے سے مقررہ کارروائی روک دی گئی۔ ہریش راؤ نے پھر ایک مرتبہ ارونا سے معذرت خواہی کا مطالبہ کرتے ہوئے خبردار کیاکہ اگر وہ اُن کی اپیل پر مثبت ردعمل کا مظاہرہ نہیں کریں گے تو دفعہ 319 کے تحت معطل کیا جائے گا۔ ارونا نے بالآخر وضاحت کی کہ اُنھوں نے کرسیٔ صدارت کے خلاف کوئی اہانت آمیز تبصرہ نہیں کیا ہے، ہریش راؤ مجھ پر جو الزام عائد کررہے ہیں وہ سراسر غلط ہے۔

TOPPOPULARRECENT