Friday , March 24 2017
Home / شہر کی خبریں / اسمبلی میں کانگریس رکن سمپت کمار اور وزیر امور مقننہ ہریش راؤ کے درمیان لفظی جھڑپ

اسمبلی میں کانگریس رکن سمپت کمار اور وزیر امور مقننہ ہریش راؤ کے درمیان لفظی جھڑپ

تحریری جوابات کی عدم فراہمی پر کانگریس کا اظہار ناراضگی ، وزیر کا جواب کانگریس کے لیے برہمی کا باعث
حیدرآباد۔17 مارچ (سیاست نیوز) تلنگانہ اسمبلی میں آج اس وقت کانگریس رکن سمپت کمار اور وزیر امور مقننہ ہریش رائو کے درمیان لفظی تکرار ہوگئی جب وقفہ سوالات کے دوران تحریری جواب نہ دیئے جانے پر کانگریسی رکن نے ناراضگی کا اظہار کیا۔ پٹہ جات پاس بک کی منسوخی سے متعلق مسئلہ پر ضمنی سوال کرتے ہوئے کانگریس کے رکن سمپت کمار نے شکایت کی کہ سوالات کے تحریری جواب قبل از وقت ارکان کو فراہم نہیں کئے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سابق میں قبل از وقت تحریری جواب فراہم کرنے کی روایت موجود ہے جس سے ارکان کو ضمنی سوالات کی تیاری میں مدد ملتی ہے۔ اس مرحلہ پر مداخلت کرتے ہوئے ہریش رائو نے کہا کہ قبل از وقت تحریری جواب حوالے کرنے کی صورت میں حکومت کے جواب سے قبل ہی میڈیا میں فلاش ہونے کا خطرہ رہتا ہے۔ اس کے علاوہ حکومت اگر چاہے تو لمحہ آخر میں جواب تبدیل کرسکتی ہے۔ اگر تحریری جواب قبل از وقت جاری کردیا جائے تو یہ دونوں خطرات برقرار رہیں گے۔ لہٰذا جیسے ہی سوال کا وقت آتا ہے ارکان کو تحریری جواب فراہم کئے جارہے ہیں۔ سمپت کمار کے احتجاج پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے ہریش رائو نے انہیں ’’بابو‘‘ کہہ کر مخاطب کیا اور کہا کہ اسمبلی میں آپ نئے رکن ہیں لہٰذا معلومات کی کمی ہے۔ اس جملے پر سمپت کمار نے سخت احتجاج کیا اور کہا کہ وزیر کا ساتھی ارکان کو مخاطب کرنے کا طریقہ کار انتہائی قابل اعتراض ہے۔ ہریش رائو نے اپنے الفاظ کے ذریعہ ایوان کے وقار کو مجروح کیا ہے۔ سمپت کمار برہمی کے عالم میں اظہار خیال کررہے تھے کہ اسپیکر مدھوسدن چاری نے ان کا مائک بند کردیا۔ کانگریس کے دیگر ارکان بھی ان کے ساتھ احتجاج میں شامل ہوگئے۔ اسپیکر نے کہا کہ مائک ملنے پر بڑی آواز کے ساتھ من مانی الفاظ کے استعمال کی وہ اجازت نہیں دیں گے۔ بعد میں سینئر ارکان کی مداخلت پر یہ معاملہ ختم ہوا اور ہریش رائو نے سمپت کمار کی نشست تک جاکر ان سے ملاقات کی اور دونوں نے خوشگوار موڈ میں گفتگو کی۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT