Tuesday , October 24 2017
Home / کھیل کی خبریں / اسمتھ اور وارنر کو گلابی گیند سے ٹسٹ کھیلنے میں دقت

اسمتھ اور وارنر کو گلابی گیند سے ٹسٹ کھیلنے میں دقت

ملبورن۔ 24 مئی (سیاست ڈاٹ کام ) آسٹریلیا کے کپتان اسٹیون اسمتھ نے کہا ہے کہ انہیں ایک اور ڈے اینڈ نائٹ ٹسٹ کھیلنے میں کوئی مسئلہ نہیں لیکن انہوں نے میچ میں استعمال ہونے والی گلابی گیند پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا ہے۔پاکستان اور آسٹریلیا کے درمیان رواں سال کے آخر میں ہونے والی ٹسٹ سیریز کا ایک ٹسٹ ڈے اینڈ نائٹ رکھنے کی تجویز پیش کی گئی ہے اور ممکنہ طور پر گابا میں 15 دسمبر کو دونوں حریفوں کے درمیان ڈے اینڈ نائٹ ٹسٹ میچ کھیلا جائے گا۔ گزشتہ سال ایڈیلیڈ میں نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کے درمیان تاریخ کا پہلا ڈے اینڈ نائٹ ٹسٹ میچ کھیلا گیا تھا جو تین دن میں ہی آسٹریلیا کی فتح پر ختم ہوا تھا۔ سابق کھلاڑیوں اور کرکٹ ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ فلڈ لائٹ میں اوس کے حامل گراؤنڈ پر بیٹسمینوں کیلئے گلابی گیند کو کھیلنا ناممکن ہو گا۔کرکٹ آسٹریلیا ایڈیلیڈ میں جنوبی افریقہ کے خلاف بھی ڈے نائٹ ٹسٹ میچ کھیلنے کیلئے بھی پرامید ہے لیکن جنوبی افریقہ نے گلابی گیند کے خلاف کھیلنے کا کوئی تجربہ نہ ہونے کے سبب اس منصوبے میں کوئی دلچسپی ظاہر نہیں کی۔ اسٹیون اسمتھ نے برسبین میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میرے خیال میں ڈے نائٹ ٹسٹ کیلئے ایڈیلیڈ سب سے بہترین مقام ہے لیکن ہمیں اس سال ایک میچ گابا میں بھی کھیلنا ہے تو دیکھتے ہیں کہ وہ کیسا رہتا ہے۔ تاہم انہوں نے کہا کہ برسبین میں عام طور پر پڑنے والی شبنم کی وجہ سے گیند کا معاملہ تھوڑا مختلف ہو گا اور اگر خصوصاً وکٹ پر گھاس رہ جاتی ہے تو بیٹسمینوں کیلئے اسے کھیلنا ناممکن ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں اب بھی پنگ گیند میں بہتری لانے کی اشد ضرورت ہے۔ یاد رہے کہ اس سے قبل آسٹریلین ٹیم کے نائب کپتان ڈیوڈ وارنر بھی گلابی گیند کے حوالے سے اپنے تحفظات کا اظہار کر چکے ہیں۔ اوپنر نے کہا کہ کھلاڑی گلابی گیند میں بہتری چاہتے ہیں، یہ نظریہ بہت اچھا ہے لیکن ان کیلئے جو اسے کھیل چکے ہیں، سب سے اہم چیز ہے کہ صحیح گیند کا انتخاب عمل میں لایا جائے۔ ڈیوڈ وارنر نے کہا کہ کھلاڑیوں کو کبھی کبھی گیند دیکھنے میں مشکلات پیش آتی ہیں، دن کے اختتامی وقت میں گیند کو دیکھنا کافی مشکل ہوتا ہے جبکہ باؤنڈری پر کھڑے کھلاڑیوں کو اسے پکڑنے میں دشواریوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے، اس کو ٹھیک کرنا ہو گا۔پہلے ڈے اینڈ نائٹ کو دنیا بھر میں شائقین اور ماہرین کی جانب سے کافی سراہا گیا تھا لیکن نے اس حوالے سے اپنے تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ گیند دیکھنے، گیند سیم نہ ہونے اور زیادہ دیر تک گیند موثر نہ ہونے کی شکایات کی تھیں۔

TOPPOPULARRECENT