Friday , September 22 2017
Home / دنیا / اسپین دہشت گرد حملہ ‘ مراقشی امام مشتبہ

اسپین دہشت گرد حملہ ‘ مراقشی امام مشتبہ

مہلوکین کا سوگ‘ تحقیقات سے مراقشی امام یونس ابو یعقوب کی نشاندہی ‘ ویان ڈرائیور ہونے کا الزام
بارسلونا ۔20اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) بارسلونا میں آج دو دہشت گرد حملوں کے مہلوکین کا سوگ منایا گیا ۔ یہ افراد سگرادا فیمیلیا چرچ میں دعائیہ اجتماع کے دوران حملہ میں ہلاک ہوئے تھے ۔ حملوں کی تحقیقات سے ایک مراقشی امام کی نشاندہی ہوتی ہے جس میں مبینہ طور پر نوجوان حملہ آوروں کو بنیاد پرست بنایا تھا ۔ مراقشی امام فی الحال مفرور ہے ۔ شاہ فلپ ‘ وزیراعظم میریانو راجوئے اور کیتالونیا کے صدر چارلس ‘ پگ ڈے ماؤنٹ نے تعزیتی اجلاس کی قیادت کی ۔ جہادیوں نے دو گاڑیوں کے ذریعہ بارسلونا کے لاس رامبلاس میں راہگیروں کو کچل دیا تھا ۔ یہ واقعہ ساحلی تفریح گاہ کیمریلس میں جمعہ کے دن ابتدائی ساعتوں میں پیش آیا تھا ۔ آگزیلیری بشپ سبسٹیا ٹلٹاول نے کہا کہ یہ انسوؤں کے دن ہے ‘ کئی آنسوؤں کے۔ چرچ کے باہر نشانچیوں کو مشہور عمارت گوڈی کے اطراف عمارتوں کی چھتوں پر تعینات کیا گیاہے ۔ مسلح پولیس محاظین کے طور پر تعینات ہیں ۔ کیونکہ سینکڑوں افراد مہلوکین کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے کھلے آسمان تلے جمع ہے ۔ صدر کیتالونیا ٹریسا راڈریک نے کہا کہ لاس رمبلاس میں جو کچھ ہوا ناقابل یقین ہے ۔

وہ وہاں پر چہل قدمی کیلئے جایا کرتی تھیں ۔ مہلوکین میں وہ یا ان کے بچے یا کوئی بھی شامل ہوسکتا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ زبردست پیمانہ پر خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے ایک لاکھ افراد بارسلونا کیمپ 9اسٹیڈیم میں حاضر ہوئے ۔مہلوکین کی یاد میں ایک منٹ کی خاموشی منائی گئی ۔ وزیر داخلہ جوانگ گنیشیو زویوڈو نے کہا کہ کل کے قتل عام میں 120 افراد زخمی بھی ہوئے ۔ مقامی عہدیداروں نے اس سلسلہ میں محتاط رویہ اختیار کیا ہے ۔ پولیس کو 22سالہ یونس ابو یعقوب کی تلاش ہے جو اخباری اطلاعات کے بموجب ایک ویان کا ڈرائیور تھا جو مقبول راس رمبلاس کے علاقہ میں ہجوم میں گھس گئی تھی جس سے 13افراد ہلاک ہوئے ۔ اسی طرح کے ایک اور حملہ کیمبریلس قصبہ میں بھی ہوا جس میں ایک خاتون ہلاک ہوگئی ۔ پولیس نے پانچ حملہ آوروں کو گولی مار کر ہلاک کردیا ۔ ان میں سے کوئی بھی دھماکو مادوں کا بیلٹ پہنے ہوئے نہیں تھا ۔ بڑے پیمانے پر صیانتی کارروائی بشمول سڑکوں کی ناکہ بندی پورے کیتولینیا میں جاری رہی ۔ حملہ کی ذمہد اری دولت اسلامیہ نے قبول کرلی ہے ۔یہ اسپین میں پہلا دہشت گرد حملہ ہے ۔

TOPPOPULARRECENT