Thursday , August 24 2017
Home / شہر کی خبریں / اسکولس میں گرمائی تعطیلات کے نئے شیڈول سے الجھن

اسکولس میں گرمائی تعطیلات کے نئے شیڈول سے الجھن

طلباء کے حق میں مفید فیصلہ لیکن والدین و سرپرستوں پر مالی بوجھ
حیدرآباد ۔ 7 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : موسم گرما کے آغاز کے ساتھ ہی گرمائی تعطیلات کا جو انتظار ہوا کرتا تھا اب وہ انتظار بچوں میں نہیں ہے چونکہ حکومت تلنگانہ کی جانب سے تعلیمی سال کے آغاز و اختتام میں لائی گئی تبدیلیاں بچوں اور اسکول انتظامیہ دونوں کے لیے ہی تکلیف دہ ثابت ہورہی ہیں ۔ عموماً سالانہ امتحانات کے فوری بعد گرمائی تعطیلات کا آغاز ہوا کرتا تھا لیکن اس تعلیمی سال کا اختتام گرمائی تعطیلات پر نہیں ہوگا بلکہ سالانہ امتحانات کے اختتام کے فوری بعد اندرون چند یوم نتائج کا اعلان کردیا جائے گا اور کامیاب طلبہ کو اگلی جماعت میں تقریبا ایک ماہ کلاسیس میں شرکت کرنی ہوگی ۔ حکومت تلنگانہ کے محکمہ تعلیم کی جانب سے تعلیمی سال کے اوائل میں گرمائی تعطیلات کا فیصلہ کچھ حد تک مناسب ہے لیکن اس عمل کا پہلا سال ہونے کے باعث طلبہ ، اولیائے طلبہ اور اساتذہ میں بے چینی پائی جارہی ہے ۔ گزشتہ برس بھی حکومت نے تمام اسکولوں میں یکم تا نویں جماعت کے امتحانات بیک وقت منعقد کرنے کے اقدامات کئے تھے لیکن جاریہ تعلیمی سال کے دوران اس عمل پر سختی کی گئی ہے جس کے سبب تقریبا تمام اسکولوں میں امتحانات ایک ہی وقت پر منعقد ہورہے ہیں اور تعطیلات بھی تقریبا ایک ماہ بعد شروع ہوں گے ۔ اولیائے طلبہ کا کہنا ہے کہ سابق سے جو عمل چلتا آیا ہے اس میں ہوئی اچانک تبدیلی کو فوری قبول کیا جانا دشوار ہے لیکن اس کے مثبت نتائج کی توقع کی جاسکتی ہے چونکہ امتحانات کے فوری بعد طلبہ کو نتائج حاصل ہونے اور دوسری جماعت میں کلاس کا آغاز ہوجانے کا طلبہ کو فائدہ ہی ہوگا اور چند یوم بعد ملنے والی گرمائی تعطیلات کے دوران بھی وہ اگلے نصاب کی تیاری کرسکتے ہیں ۔ اولیائے طلبہ کا یہ پہلو بھی درست ہے اور یہ بھی کہا جارہا ہے کہ سالانہ امتحانات کے فوری بعد تعلیمی سال شروع ہونے پر مالی بوجھ عائد ہونے کا خدشہ ہے چونکہ جیسے ہی نئی جماعت و تعلیمی سال کا آغاز ہوتا ہے نئی نصابی کتب ، بیاگ ، یونیفارم وغیرہ کی خریداری کا عمل شروع ہوجاتا ہے اور اس کے ساتھ فوری فیس کی ادائیگی پر بھی انتظامیہ کی جانب سے دباؤ بڑھنے لگتا ہے ۔ حکومت کی جانب سے کیا گیا یہ فیصلہ اسکول انتظامیہ کو بھی پریشان کئے ہوئے ہے چونکہ سالانہ امتحان کے فوری بعد جو تعطیلات ہوا کرتی تھیں ان میں اسکول انتظامیہ و مالکین بھی خود کو الجھنوں سے پاک تصور کیا کرتے تھے لیکن اب جب وہ ایک ماہ اسکول چلانے کے بعد تعطیلات دیں گے تو ان کو نہ صرف طلبہ کو تعطیلات کے دوران کرنے کے لیے کام تفویض کرنا ہوگا بلکہ تعطیلات کے فوری بعد طلبہ میں آنے والی تبدیلیوں پر بھی فوری کنٹرول حاصل کرنے کے لیے تیار رہنا ہوگا ۔ چونکہ اسکول انتظامیہ اور اساتذہ کا ماننا ہے کہ تعطیلات کے فوری بعد طلبہ کو اسکولی ماحول میں واپس دلچسپی پیدا کرنے کے لیے یہ ضروری ہوتا ہے کہ انہیں 10 تا 15 دن دوستانہ ماحول فراہم کیا جائے اور ان 10 ۔ 15 ایام میں کوئی خاص مضامین کی پڑھائی پر مکمل توجہ مبذول کرنا دشوار کن مرحلہ ہوتا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT