Tuesday , September 26 2017
Home / ہندوستان / اسکولی بچوں میں منشیات کے استعمال کی حوصلہ شکنی

اسکولی بچوں میں منشیات کے استعمال کی حوصلہ شکنی

قومی ایکشن پلان بنانے مرکز کو سپریم کورٹ کی ہدایت
نئی دہلی۔14 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) سپریم کورٹ نے آج مرکزی حکومت سے کہا ہے کہ اسکولی طلباء میں منشیات اور الکحل کے استعمال کی روک تھام کے لئے اندرون 6 ماہ ایک قومی منصوبہ عمل (ایکشن پلان) تیار کیا جائے اور یہ نشاندہی کی کہ منشیات فروخت کرنے والے، اسکولی بچوں کو نشانہ بناتے ہوئے نشہ آوار ادویات کا عادی بنارہے ہیں۔ چیف جسٹس ٹی ایس ٹھاکر اور جسٹس ٹی وی چندرا چوڑ پر مشتمل بنچ نے مرکز سے یہ بھی کہا ہے کہ ملک گیر سطح پر اسکولی طلباء میں نشہ آور اشیاء اور الکحل کے استعمال پر ایک قومی سروے کروایا جائے۔ حکومت کو ہدایات جاری کرتے ہوئے بنچ نے یہ مشاہدہ پیش کیا کہ بچوں کو منشیات کے استعمال کی ترغیب دی جارہی ہے تاکہ آگے چل کر وہ عادی بن جائیں۔ عدالت نے تعلیمی نصاب پر نظر ثانی کا مشورہ دیا ہے تاکہ اسکولی بچوں کو منشیات کے تباہ کن اثرات سے آگاہ کیا جاسکے۔ سپریم کورٹ نے یہ ہدایت، نوبل انعام یافتہ کیلاش ستیارتھی کی غیر سرکاری تنظیم بچپن بچائو آندولن کی پیش کردہ مفاد عامہ کی درخواست پر جاری کی ہے۔ تنظیم کے نمائندہ وکیل ایچ ایس بھولکا نے یہ استدعا بھی کی کہ ملک کے ہر ایک ضلع میں منشیات کے عادی بچوں کی کونسلنگ اور بازآبادکاری کے لئے مراکز قائم کئے جائیں۔

TOPPOPULARRECENT