Friday , July 21 2017
Home / شہر کی خبریں / اطاعت احکام الٰہی و اتباع سنت میں فلاح دارین

اطاعت احکام الٰہی و اتباع سنت میں فلاح دارین

’’قرآن حکیم‘‘ پر سالانہ مذاکرہ۔ ڈاکٹرسید محمد حمید الدین شرفی،پروفیسرسید محمد حسیب الدین حمیدی اور دیگر کے خطاب
حیدرآباد ۔18؍جون ( پریس نوٹ) قرآن حکیم اللہ تعالیٰ کا کلام اور حضور انور صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کا زندہ جاوید معجزہ ہے جو صبح قیامت تک اپنی تابناک ہدایات کے ساتھ باقی و برقرار رہے گا۔ انبیاء سابقین کے معجزات کے اثرات ان کے ادوار کی حد تک رہے لیکن سرکار دو عالم ؐ کے جملہ معجزات کے اثرات اپنی نورانی اور حقانی کیفیات کے ساتھ آج تک موجود ہیں اور ان شاء اللہ تعالیٰ تا قیام شمس و قمر باقی رہیں گے بالخصوص قرآن حکیم کی اثر آفرینی ابتداء وحی سے لے کر تا حال اور اب سے قیامت تک ساری انسانیت کی ہدایت فرماتی ہوئی موجود ہے اور رہے گی۔ مسلمانوں کو یہ فخر حاصل ہے کہ انھوں نے قرآن مجید کی شایان شان خدمت کے سلسلے میں اللہ تعالیٰ کی عطا کردہ تمام تر علمی و فکری اور عملی صلاحیتوں کو نذر کر کے ایسی نظیر قائم کی ہے جس کا جواب نہیں قرآن مجید کی تفسیر کے سلسلے میں صحابہ کرام کی مقدس جماعت سے آج تک علما کرام اور مفسرین قرآن پاک کا ایک سنہری سلسلہ قائم ہے قرآن حکیم کی تلاوت، سماعت، فہم اور ارشادات کلام الٰہی پر عمل پیرائی کو ہر دور میں سعادت عظمیٰ مانا گیا اور ہمیشہ ایسا ہی سمجھا جاتا رہے گا۔ قرآن پاک کا سمجھنا اور فرامین قرآن کی اطاعت میں درحقیقت اسلام اور صالحیت کا نشان ہے علوم قرآنی کی تعلیم و تدریس، نشر و اشاعت اور توسیع و ترویج میں ایمانی سنجیدگی کے ساتھ ہمہ تن مصروف و مشغول رہنا علماء حقانی کی شناخت اور پہچان ہے۔ علماء کرام اور دانشور حضرات نے آج صبح 9 بجے ’’ایوان تاج العرفاء حمیدآباد‘‘ واقع شرفی چمن،سبزی منڈی اور 11.30بجے دن جامع مسجد محبوب شاہی ، مالاکنٹہ روڈ،روبرو معظم جاہی مارکٹ میں اسلامک ہسٹری ریسرچ کونسل انڈیا ( آئی ہرک) کے زیر اہتمام 1256 ویں تاریخ اسلام اجلاس کے موقع پر منعقدہ موضوعاتی مذاکرہ ’’قرآن حکیم‘‘میں حصہ لیتے ہوے ان خیالات کا مجموعی طور پر اظہار کیا۔ مذاکرہ کی نگرانی ڈاکٹر سید محمد حمید الدین شرفی ڈائریکٹر آئی ہرک نے کی۔قرآن حکیم کی آیات شریفہ کی تلاوت سے مذاکرہ کا آغاز ہوا۔ نعت شہنشاہ کونین ؐپیش کی گئی اہل علم اور باذوق روزہ دار سامعین کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ نگران مذاکرہ ڈاکٹر سید محمد حمید الدین شرفی نے کہا کہ بحیثیت مسلمان ہم سب اطاعت الٰہی، محبت و اتباع رسول مقبولؐ اور حق رسانی کی ذمہ داری سے پہلو تہی نہیں کر سکتے پہلے خود کو قرآن و سنت کی تعمیل کا نمونہ بنا لینا ہے پھر دوسروں کو ایمان، عمل صالح ،اخلاق حسنہ ، نیکی ، پا رسائی ، حق گوئی اور راست بازی کی طرف مائل کردینا سعادت عظیم ہے اور بحیثیت مسلمان ہمارا نصب العین ہونا چاہئیے۔ انھوں نے رمضان مبارک میں عبادت گزار بندوں کی بخشش و نجات کے مژدئہ بابرکت پر مسلمانوں کو یاد دلایا کہ جو صالح مشاغل کا سلسلہ رحمت و مغفرت و نجات والے ماہ مبارک میں جاری ہیں اسے ساری زندگی جاری و ساری رکھنا اہل ایمان و اطاعت کی ذمہ داری ہے اور یہی قرآن مجید اور رمضان مقدس کا پیام ہے۔پروفیسر سید محمد حسیب الدین حمیدی، مفتی سید محمد سیف الدین حاکم حمیدی اور صاحبزادہ سید محمد علی موسیٰ رضا حمیدی نے بھی مخاطب کیا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT