Saturday , September 23 2017
Home / Top Stories / افغان امن مساعی،دہشت گردی خطرات پر تبادلہ خیال

افغان امن مساعی،دہشت گردی خطرات پر تبادلہ خیال

سشماسوراج کی افغان صدر سے بات چیت، ایران اور کرغزستان کے وزرائے خارجہ سے بھی ملاقات
اسلام آباد ۔ 9 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) وزیرخارجہ سشماسوراج نے آج یہاں افغان صدر اشرف غنی سے ملاقات کی اور جنگ زدہ ملک (افغانستان) کو لاحق دہشت گردی کے خطرات، امن و مصالحت کے عمل اور رابطہ کے امور و مسائل پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔ اسلام آباد میں جاری ’قلب ایشیاء‘ کانفرنس کے موقع پر سشماسوراج نے اشرف غنی سے تقریباً 30 منٹ تک بات چیت کی۔ اس موقع پر معتمد خارجہ ایس جیاشنکر کے علاوہ ہندوستانی سفراء برائے پاکستان و افغانستان بھی موجود تھے۔ دونوں قائدین نے افغان ۔ پاک تجارت سمجھوتہ میں شمولیت سے ہندوستان کے اتفاق پر بھی تبادلہ خیال کیا۔ دونوں فریقوں نے طویل عرصہ سے تعطل پذیر تاپی گیس پائپ لائن پراجکٹ پر پیشرفت کے بارے میں بھی تبادلہ خیال کیا۔ تاپی گیس پائپ لائن پراجکٹ کی تعمیر کے آغاز کیلئے آئندہ ہفتہ ترکمانستان میں رسم سنگ بنیاد تقریب منعقد ہوگی، جس میں افغان صدر اشرف غنی بھی شرکت کریں گے۔ نائب صدر جمہوریہ حامد انصاری ہندوستان کی نمائندگی کریں گے۔

وزارت امورخارجہ کے ایک ترجمان وکاس سواروپ نے ٹوئیٹر پر سشماسوراج اور صدر اشرف غنی کی تصاویر کے ساتھ جاری پیام میں کہا کہ ’’دوستی کا ایک مضبوط عہد۔ وزیرخارجہ سشماسوراج نے ’قلب ایشیا‘ کانفرنس کے موقع پر افغان صدر اشرف غنی سے ملاقات کی‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ’’دونوں قائدین نے بشمول راہداری افغانستان میں دہشت گردی کے خطرات کے علاوہ امن و مصالحت کے عمل کے موقف پر تبادلہ خیال کیا‘‘۔ سشماسوراج نے کرغزستان کے وزیرخارجہ ارلان عبدالدعیف اور ایرانی وزیرخارجہ جواد ظریف سے بھی ملاقات کی۔ ایک ہندوستانی کشتی کے ملاحوں کی رہائی پر انہوں نے شخصی طور پر ایران کا شکریہ ادا کیا۔ وکاس سواروپ کے مطابق کرغزستان کے وزیرخارجہ نے کہا کہ وسط ایشیاء میں ہندوستان کی موجودگی کی سخت ضرورت ہے، جس کی ستائش کی جائے گی۔ جواد ظریف سے بات چیت کے دوران سشماسوراج نے ہندوستانی ملاحوں کی رہائی پر ایران کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ ہندوستان بھی اپنی جیلوں میں قید 11 ایرانی ملاحوں کو رہا کرتے ہوئے جوابی خیرسگالی کا مظاہرہ کرنا چاہتا ہے۔ ایران کے خلاف جائز تحدیدات کے خاتمہ کے بعد ظریف نے ہند ۔ ایران مشترکہ منصوبہ پر بھی سشماسوراج سے تبادلہ خیال کیا۔ سشماسوراج نے چہ بہار بندرگاہ کیلئے دونوں ملکوں کے مابین طئے شدہ سمجھوتہ پر عمل آوری کا جائزہ بھی لیا۔ سشماسوراج نے کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بین الاقوامی برادری پر زور دیا کہ دہشت گردوں کو دنیا کے کسی بھی کونے کسی بھی نام یا شکل میں محفوظ پناہ گاہیں حاصل کرنے کا موقع نہیں دیا جانا چاہئے۔ سشماسوراج نے افغانستان کے اتحاد اور سلامتی کو یقینی بنانے کیلئے بین الاقوامی برادری کی بھرپور تائید جاری رکھنے کی ضرورت پر بھی زور دیا۔

TOPPOPULARRECENT