Sunday , July 23 2017
Home / شہر کی خبریں / اقامتی اسکولس میں نہ کے جی ہے نہ پی جی، سرکاری اسکولس میں انگلش میڈیم کا مطالبہ

اقامتی اسکولس میں نہ کے جی ہے نہ پی جی، سرکاری اسکولس میں انگلش میڈیم کا مطالبہ

حیدرآباد 16 اپریل (سیاست نیوز) تلنگانہ کے ٹیچرس اور طلباء تنظیموں نے حکومت سے مطالبہ کیاکہ تمام سرکاری اسکولس میں کنڈر گارٹن کلاسیس اور انگلش میڈیم شروع کیا جائے اور دھمکی دی کہ اگر حکومت نے ان کے مطالبات قبول نہ کئے تو وہ تعلیمی تحریک شروع کریں گے۔ ان تنظیموں نے کہاکہ گزشتہ 3 سال میں تعلیم کے شعبہ میں کوئی بہتری نہیں ہوئی۔ حکومت یہ دعویٰ نہیں کرسکتی کہ وہ کے جی سے پی جی تک مفت تعلیم کا وعدہ پورا کرچکی ہے۔ محض چند اقامتی اسکول قائم کرتے ہوئے یہ دعویٰ کرنا مناسب نہیں ہے۔ حکومت نے محض 260 اقامتی اسکولس قائم کئے ہیں جہاں نہ کے جی ہے نہ پی جی ہے۔ 5 ویں سے کلاسیس شروع ہوتے ہیں اور 12 ویں پر ختم ہوتے ہیں۔ سرکاری اسکولس میں جن 25 لاکھ طلبہ کو داخلہ دیا گیا ان کا مستقبل کیا ہے۔ ان کی مدد کے لئے انگلش میڈیم شروع کرنا چاہئے ان تاثرات کا اظہار پی مانک ریڈی نے کیا جو تلنگانہ اسٹیٹ یونائیٹیڈ ٹیچرس فیڈریشن کے نائب صدر ہیں۔ اسوسی ایشن نے کہاکہ وہ 24 اپریل کو حکومت اور کلکٹرس کو منشور مطالبات پیش کرے گی۔ مطالبات تسلیم نہ کئے گئے تو ایجی ٹیشن شروع کیا جائے گا۔ اسوسی ایشن نے پرائیوٹ اسکولس نے پرائیوٹ اسکولس میں فیس کو باقاعدہ بنانے کے لئے ایک کمیٹی قائم کرنے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT