Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / اقامتی اسکولس کے تقررات میں بے قاعدگیوں کی جانچ

اقامتی اسکولس کے تقررات میں بے قاعدگیوں کی جانچ

شکایتوں کی وصولی کے بعد اے کے خاں سے رپورٹ کی طلبی
حیدرآباد۔ 13۔ جون ( سیاست نیوز) اقلیتوں کے اقامتی اسکولس کے تقررات میں بے قاعدگیوں کی شکایات کی جانچ کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ سکریٹری اقلیتی بہبود نے اس سلسلہ میں ڈائرکٹر جنرل اینٹی کرپشن بیورو اے کے خاں کو رپورٹ پیش کرنے کا فیصلہ کیا جو سوسائٹی کے نائب صدرنشین ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ پرنسپلس ، ٹیچرس اور غیر تدریسی اسٹاف کے تقررات میں بڑے پیمانہ پر بے قاعدگیوں اور دھاندلیوں کی شکایات ملی ہیں۔ سوسائٹی میں شامل بعض افراد نے من مانی طور پر اپنی پسند کے افراد کا تقرر عمل میں لایا۔ بعض تقررات کے سلسلہ میں بھاری رقومات حاصل کرنے کی شکایات بھی منظر عام پر آئی ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ سرکاری ٹیچرس کے مقابلہ میں خانگی ٹیچرس کو ترجیح دی گئی جس کے نتیجہ میں محکمہ تعلیم کے عہدیداروں نے سکریٹری اقلیتی بہبود کو سوسائٹی میں جاری بے قاعدگیوں سے واقف کرایا ۔ سکریٹری اقلیتی بہبود نے جائزہ اجلاس کے دوران سوسائٹی میں شامل افراد اور بالخصوص بعض ریٹائرڈ عہدیداروں پر برہمی کا اظہار کیا اور کہا کہ وہ تمام الزامات کی تحقیقات کیلئے حکومت سے سفارش کریں گے ۔ انہوں نے اعتراف کیا کہ مختلف گوشوں سے شکایات مو صول ہوئی ہیں اور ابتدائی جانچ میں الزامات درست پائے گئے۔ انہوں نے کہا کہ سرکاری ٹیچرس کو ترجیح دی جانی چاہئے تھے ۔ محکمہ تعلیم نے تقریباً 70 اساتذہ کی خدمات ڈیپیوٹیشن پر فراہم کی ہیں اور انہیں مختلف اسکولوں میں مقرر کیا جائے گا ۔ بتایا جاتا ہے کہ جہاں بھی خانگی اساتذہ کا تقرر کیا گیا ، ان کی جگہ سرکاری ٹیچرس دستیاب ہونے کی صورت میں سرکاری ٹیچرس کی خدمات حاصل کی جائیں گی۔ مختلف محکمہ جات سے بھی اساتذہ کے تقرر کے سلسلہ میں سفارشات موصول ہورہی ہیں۔ واضح رہے کہ اسکولوں کی سوسائٹی میں خانگی افراد اور رضاکارانہ تنظیموں کو شامل کیا گیا ہے جس کے سبب ان میں جوابدہی کا کوئی احساس نہیں ۔ جب تک سوسائٹی میں سرکاری عہدیداروں کا تقرر نہیں کیا جاتا اس وقت تک اسکولوں کو بہتر طور پر چلانا ممکن نہیں ہوگا۔ بتایا جاتا ہے کہ کئی پرنسپلس نے اپنے پسند کے مقام پر الاٹمنٹ نہ کرنے پر خدمات سے دستبرداری اختیار کرلی ہیں۔ ان تمام حالات کا اثر اسکولوں کے آغاز پر پڑ رہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT