Thursday , August 17 2017
Home / اضلاع کی خبریں / اقتدار بھی ہے اور اختیار بھی، تو پھر تاخیر کیوں ؟

اقتدار بھی ہے اور اختیار بھی، تو پھر تاخیر کیوں ؟

12فیصد تحفظات کا مسئلہ

چیف منسٹر صاحب ہمارے مستقبل کو تاریک نہ بنائیں، وعدہ کو پورا کریں، مسلم طلبہ کی خواہش

کریم نگر۔/10اگسٹ، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) کلکٹریٹ کریم نگر کے روبرو جاری زنجیری بھوک ہڑتال کے تیسرے دن 12% تحفظات اور اقلیتی سب پلان کا مطالبہ کرتے ہوئے ایس آر آر کالج کے بہت سارے طلباء نے بھی اس زنجیری بھوک ہڑتال میں حصہ لیا، ان کے ہاتھوں میں پلے کارڈس تھے جن پر لکھا تھا ’’ سی ایم صاحب وعدہ پورا کرو ‘‘ ’’ سی ایم صاحب 12% مسلم تحفظات کی منظوری دے دو ‘‘ انہوں نے نعرے بھی لگائے جس میں چیف منسٹر سے مطالبہ کیا گیا کہ مسلمانوں کو 12% تحفظات دیئے جائیں۔ اس موقع پر محمد رفیع، سید شعیب، سید یونس، عبید بن عابد، محمد الطاف، محمد یسین بلال، سید زبیر، محمد سیف، سید  مفصل ، طفیل، شیخ اویس، محمد مدحت موجود تھے۔ قبل ازیں بھوک ہڑتال کے دوسرے دن ایم ایس آر اے سی ضلع صدر وسیم احمد نے اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ جب تک مسلم اقلیتوں کے لئے سب پلان قانون کے نفاذ اور 12% تحفظات شعبہ تعلیم اور ملازمتوں میں عمل آوری کو یقینی نہیں بنایا جائے گا اس وقت تک ہماری جدوجہد اور زنجیری بھوک ہڑتال جاری رہے گی۔ انہوں نے کہا کہ ریاست تلنگانہ کے چیف منسٹر کے سی آر وقت کے ساتھ ساتھ اپنے اعلانات اور بیانات بدلتے جارہے ہیں اور مسلم عوام کو گمراہ کررہے ہیں وہ اقتدار سنبھالنے کے بعد مسلمانوں کے 12% تحفظات کے تعلق سے کوئی نہ کوئی بہانہ کرتے چلے جارہے ہیں۔ سدھیر کمیٹی کی رپورٹ، اسمبلی میں قرارداد، مرکز کو یادداشت منظوری کیلئے حوالگی، مسلمانوں کو عدالتی کشاکش سے بچانے مستقل حل، اس طرح کے بیانات دیتے ہوئے وقت گزاری کررہے ہیں۔

 

مسلمان جانتے ہیں سدھیر کمیٹی، اسمبلی قرارداد، مرکز کو رپورٹ کی روانگی سے خاطر خواہ نتیجہ برآمد ہونے والا نہیں ہے۔ کے سی آر کو بھی اس بات کا علم ہے لیکن مسلسل یہ گمراہ کن بیانات کے ساتھ شادی مبارک، دعوت افطار، کپڑوں کی تقسیم، موذن اورائمہ کو مشاہرہ اس طرح کے احسانات گنواتے آرہے ہیں۔مسلمانوں کی اکثریت اور دانشوروں کی طرف سے یہ مطالبہ ہے کہ انتخابات سے پہلے کیا ہوا مسلمانوں کو 12% تحفظات کا وعدہ کیا ہوا پہلے اس کو پورا کریں۔ اسمبلی میں قرارداد کی منظوری کے لئے تمہیں کس نے روکا ہے اور کیا رکاوٹ ہے، انہوں نے کہا کہ آئندہ اسمبلی اجلاس میں بی سی کمیشن، سب پلان قانون لایا جاکر 12% تحفظات پر عمل آوری کیلئے قرارداد کی منظوری کی جائے بصورت دیگر چلو حیدرآباد پروگرام منظم کیا جائے گا۔ اخبار ’سیاست‘ کے نیوز ایڈیٹر جناب عامر علی خاں کا شروع کرد 12% مسلم ریزرویشن شعور بیداری پروگرام آج مختلف مسلم تنظیموں کی جانب سے مختلف مقامات پر ریاست تلنگانہ کے مختلف اضلاع شہروں منڈلوں میں شعور بیداری مہم کے ذریعہ ٹی آر ایس حکومت سے مطالبہ کیا جارہا ہے۔ کے سی آر مسلمانوں کو معمولی تحفے تحائف بھیک کی طرح دے کر مسلمانوں پر احسان جتارہے ہیں۔ وسیم احمد نے کہا کہ مسلمان ناجائز مطالبات نہیں کررہے ہیں بلکہ اپنا جائز حق مانگ رہے ہیں۔ کے سی آر نے جو وعدہ کیا تھا اقتدار میں آنے کے بعد مسلمانوں کو 12% تحفظات دینے کا وعدہ پورا کریں جس سے مسلمانوں کی ساری پریشانیاں دور ہوجائیں گی۔ مسلمانوں کا اب امتحان نہ لیں مسلمانوں کے صبر کا پیمانہ لبریز ہوچکا ہے مزید اور انتظار نہ کروائیں بلکہ اپنا وعدہ پورا کریں۔ اس موقع پر ایم ایس آر اے سی جنرل سکریٹری گڈی کندلہ ستیم، نائب صدر محمد عبداللہ، بابو بھائی، ساجد بھائی، سراج، ٹی ڈی پی واجد، سید رفیع عرفان، ریکرتی حاجی، شوکت، ذاکر، محمد غوث، صادق بھائی، منا اور عظیم کے علاوہ دیگر مسلم نوجوان موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT