Sunday , October 22 2017
Home / Top Stories / اقتدار ملنے پر آندھرا پردیش میں شراب پر امتناع

اقتدار ملنے پر آندھرا پردیش میں شراب پر امتناع

چھوٹے کسانوں کو 50 ہزار روپئے کی امداد ۔ مزید کئی وعدے ۔ عملا انتخابی منشور کی اجرائی
چیف منسٹر بننا میری شدید خواہش ‘ 30 سال تک حکومت کرنا چاہتا ہوں ‘ جگن موہن ریڈی
امراوتی 9 جولائی ( پی ٹی آئی ) آندھرا پردیش میں وائی ایس جگن موہن ریڈی کی قیادت والی وائی ایس آر کانگریس نے عملا 2019 اسمبلی انتخابات کا منشور جاری کردیا ہے اور اس نے ریاست میں کئی فلاحی اقدامات کے علاوہ اقتدار ملنے پر ریاست میں شراب بندی نافذ کرنے کا اعلان کیا ہے ۔ وائی ایس آر کانگریس کے دو روزہ پلینری سے اختتامی خطاب کرتے ہوئے پارٹی صدر جگن موہن ریڈی نے پارٹی کے قائدین اور کارکنوں پر زور دیا کہ وہ پارٹی کے نئے نعرے ’’ بڑا بھائی آ رہا ہے ۔ مستقبل ہمارا ہے ‘‘ کے نعرہ کو ریاست میں گھر گھر تک پہونچایا جائے ۔ جگن آندھرا پردیش اسمبلی میں قائد اپوزیشن ہیں۔ انہوں نے اپنی مستقبل کی حکومت کیلئے نو نکاتی ایجنڈہ کا اعلان کیا ۔ اس میں انہوں نے کسانوں ‘ خواتین ‘ طلبا اور وظیفہ یابوں کیلئے کئی ترغیبات کا اعلان کیا ہے ۔ جگن نے اپنے خطاب میں کہا کہ مستقبل ہمارا ہے ۔ جیسے ہی وہ چیف منسٹر بنیں گے وہ ہمارے آنجہانی لیڈر وائی ایس راج شیکھر ریڈی کے سنہرے دور کو واپس لائیں گے ۔ یہ بات ریاست میں ہر کسی تک پہونچائے جانے کی ضرورت ہے اور سب کو اس کا یقین دلایا جانا چاہئے ۔ جگن نے کہا کہ یہ ان کی شدید خواہش ہے کہ چیف منسٹر بنیں۔ وہ چاہتے ہیں کہ ریاست پر 30 سال تک اسی طرح حکمرانی کریں جس کے ذریعہ ہر گھر میں ان کی موت کے بعد ان کے والد راج شیکھر ریڈی کے ساتھ ان کی بھی تصویر لگ جائے ۔

انہوں نے موجودہ چیف منسٹر این چندرا بابو نائیڈو کو تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ انہوں نے 2014 انتخابات سے قبل جھوٹے وعدے کرتے ہوئے ریاست کو دھوکہ دیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس کی مثال کسانوں کے قرض معافی کی ہے ۔ کسانوں کا جملہ قرض 87,000 کروڑ تھا اور نائیڈو نے صرف 11,000 کروڑ روپئے معاف کئے ۔ یہ رقم بھی کسانوں کو فراہم نہیں کی گئی ہے ۔ لیکن جیسے ہی وہ ریاست کے چیف منسٹر بنیں گے وہ پانچ ایکڑ سے کم اراضی رکھنے والے ہر کسان کو 50 ہزار روپئے فراہم کرینگے ۔ جگن نے کہا کہ قیمتوں کو مستحکم رکھنے کیلئے 3000 کروڑ روپئے سے ایک فنڈ قائم کیا جائیگا جبکہ آفات ریلیف فنڈ 2000 کروڑ کے صرفہ سے قائم کیا جائیگا انہوں نے کہا کہ خواتین کے سیلف ہیلپ گروپس کو 15,000 کروڑ روپئے فراہم کئے جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ شراب پر تین مراحل میں امتناع عائد کیا جائیگا ۔ پلے مرحلہ میں بیلٹ شاپس کو ختم کیا جائیگا ‘ اس کے بعد شراب نوشی کے مضر اثرات پر شعور بیدار کرنے سرگرم مہم چلائی جائے گی اور پھر شراب کی قیمتیں اتنی بڑھادی جائیں گی کہ صرف کروڑ پتی افراد اسے خرید سکیں گے ۔ اس کے بعد ریاست میں شراب پر مکمل امتناع عائد کردیا جائیگا ۔ انہوں نے کہا کہ سوشیل سکیوریٹی پنشن کی رقم کو موجودہ 1000 کروڑ سے بڑھا کر 2000 کروڑ کردیا جائیگا۔

TOPPOPULARRECENT