Wednesday , October 18 2017
Home / شہر کی خبریں / اقتدار کے نشہ میں کے ٹی آر غرور اور تکبر کا مظاہرہ نہ کریں

اقتدار کے نشہ میں کے ٹی آر غرور اور تکبر کا مظاہرہ نہ کریں

کے سی آر خاندان کا اقتدار کانگریس کی دین، قائد اپوزیشن محمد علی شبیر کی پریس کانفرنس
حیدرآباد۔/7 مئی، ( سیاست نیوز) قائد اپوزیشن قانون ساز کونسل محمد علی شبیر نے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ اور ان کے فرزند کے ٹی راما راؤ کو مشورہ دیا کہ وہ غرور اور تکبر کے مظاہرہ سے گریز کریں کیونکہ عوامی زندگی میں غرور اور تکبر کا نتیجہ زوال کی صورت میں برآمد ہوتا ہے۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے محمد علی شبیر نے کہا کہ کانگریس پارٹی کو ختم کرنے سے متعلق کے ٹی راما راؤ کا بیان دراصل ان کے غرور کو ظاہر کرتا ہے۔ کے ٹی آر سیاست میں ناتجربہ کار ہیں اور اپنے والد کے سی آر کے سبب آج اس مقام پر ہیں۔ انہیں جاننا چاہیئے کہ کانگریس پارٹی کو ختم کرنے کا دعویٰ کرنے والے کئی قائدین سیاسی گمنامی کا شکار ہوچکے ہیں۔ کانگریس 123سالہ عظیم تاریخ رکھتی ہے اور وہ ملک کے ہر علاقہ میں قائم ہے۔ ٹی آر ایس محض ایک علاقائی چھوٹی جماعت ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس پارٹی دریائے گنگا کی طرح ہے جو مختلف رکاوٹوں کے باوجود اپنی رفتار سے بہہ رہی ہے جبکہ ٹی آر ایس جیسی جماعتیں چند برسوں میں سکڑ جاتی ہیں۔ محمد علی شبیر نے کے سی آر اور کے ٹی آر کو مشورہ دیا کہ وہ اقتدار کے نشہ میں غرور اور تکبر سے گریز کریں ورنہ عوام انہیں مناسب سبق سکھائیں گے۔ محمد علی شبیر نے کہا کہ کے ٹی آر کو یہ بھولنا نہیں چاہیئے کہ ان کے والد نے کانگریس پارٹی سے اپنے سیاسی سفر کا آغاز کیا تھا اور آج وہ جو کچھ بھی ہیں کانگریس کی دین ہے۔ تلنگانہ ریاست میں کے سی آر اور ان کا خاندان آج اقتدار پر فائز ہے وہ کانگریس کی مہربانی ہے جس نے مختلف گوشوں سے مخالفت کے باوجود تلنگانہ تشکیل دیا۔ انہوں نے کہا کہ کے سی آر جس طرح اپنے وعدوں کی تکمیل میں عوام کو دھوکہ دے رہے ہیں اسی طرح انہوں نے تلنگانہ کی تشکیل کے وقت دھوکہ سے کام لیا تھا۔ انہوں نے پارٹی کو کانگریس میں ضم کرنے کا وعدہ کیا اور پھر ریاست کی تشکیل کے بعد اپنے موقف سے منحرف ہوگئے کیونکہ ان کے پیش نظر صرف اقتدار تھا۔ کے سی آر نے الیکشن سے قبل اعلان کیا تھا کہ وہ کوئی عہدہ قبول نہیں کریں گے اور دلت کو چیف منسٹر کے عہدہ پر فائز کیا جائے گا لیکن الیکشن کے فوری بعد انہوں نے چیف منسٹر کی گدی سنبھال لی اور اب اپنے فرزند کو چیف منسٹر بنانے کی تیاری کررہے ہیں۔ محمد علی شبیر نے کہا کہ آبپاشی پراجکٹس کے مسئلہ پر کے سی آر عوام کے جذبات کو مشتعل کررہے ہیں۔ کانگریس قائدین چیف منسٹر کرناٹک سدارامیا سے ملاقات کریں گے اور آر ڈی ایس پراجکٹ سے 3 ٹی ایم سی پانی کی اجرائی کیلئے نمائندگی کریں گے۔ انہوں نے بتایا کہ آئی سی سی جنرل سکریٹری ڈگ وجئے سنگھ کے ساتھ کانگریس قائدین کی ملاقات میں تلنگانہ کے آبپاشی پراجکٹس پر بات چیت ہوئی اور ڈگ وجئے سنگھ نے سدارامیا سے فون پر بات کرتے ہوئے تلنگانہ کانگریس قائدین کی ملاقات کا وقت متعین کیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کا الزام بے بنیاد ہے کہ کانگریس آبپاشی پراجکٹس میں حکومت کی تائید سے گریز کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کسی بھی مسئلہ پر چیف منسٹر نے آج تک کُل جماعتی اجلاس طلب نہیں کیا۔ انہوں نے ریمارک کیا کہ کے سی آر اور چندرا بابو نائیڈو پراجکٹ کے مسئلہ پر ایک دوسرے کے خلاف بیان بازی کا ڈرامہ کررہے ہیں۔ ایک طرف دونوں نے بریانی، مچھلی اور جھینگے ساتھ کھائے ہیں لیکن دوسری طرف سیاسی مقصد براری کیلئے بیان بازی کررہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT