Wednesday , September 20 2017
Home / شہر کی خبریں / اقلیتوں، خواتین و اطفال کی فلاح و بہبود پر حکومت کے اقدامات کی ستائش

اقلیتوں، خواتین و اطفال کی فلاح و بہبود پر حکومت کے اقدامات کی ستائش

چیف منسٹر کے سی آر سے اظہار تشکر، تلنگانہ اسمبلی میں مطالبات زر پر مباحث، جی بالراج کا بیان
حیدرآباد 20 مارچ (سیاست نیوز) حکومت تلنگانہ اقلیتی طبقات اور خواتین و اطفال کی فلاح و بہبود پر اولین ترجیح دیتے ہوئے انتخابی منشور میں کئے گئے وعدوں کے علاوہ مزید اور بھی اقدامات کررہی ہے اور ان اقدامات کی اقلیتوں، خواتین و اطفال کی جانب سے زبردست ستائش کی جارہی ہے۔ آج یہاں تلنگانہ قانون ساز اسمبلی میں اقلیتی طبقات اور خواتین و اطفال کی بہبود سے متعلق پیش کردہ مطالبات زر پر مباحث کا آغاز کرتے ہوئے رکن اسمبلی ٹی آر ایس مسٹر جی بالراج نے یہ بات کہی اور حکومت تلنگانہ بالخصوص چیف منسٹر مسٹر کے چندرشیکھر راؤ کی خصوصی دلچسپی کے ذریعہ اقلیتوں و خواتین و اطفال کی فلاح و بہبود کیلئے کئے جانے والے اقدامات پر نہ صرف مسرت کا اظہار کیا بلکہ چیف منسٹر کا شکریہ بھی ادا کیا۔ انھوں نے اقلیتوں و خواتین اور اطفال کا فلاح و بہبود کیلئے کئے جانے والے اقدامات کو مثالی قرار دیتے ہوئے کہاکہ ان اقدامات کی ملک کی کسی اور ریاست میں ایسی کوئی نظیر نہیں ملے گی۔ مسٹر بالراج نے سابق کانگریس حکومت کو اپنی سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ کانگریس جب برسر اقتدار تھی تب اس نے اس طرح کے کوئی اقدامات کرنے کی کوئی کوشش بھی نہیں کی لیکن آج تلنگانہ میں ٹی آر ایس زیرقیادت حکومت ہر طبقہ کی فلاح و بہبود کیلئے جو مثالی اقدامات کررہی ہے ان کو برداشت نہ کرتے ہوئے حکومت کو اپنی غیر ضروری تنقید کا نشانہ بنانے کیلئے کوشاں ہے۔ رکن اسمبلی ٹی آر ایس نے کہاکہ چیف منسٹر نے اپنی خصوصی دلچسپی کے ذریعہ غریب مسلم لڑکیوں کی شادی کو یقینی بنانے کیلئے شادی مبارک اسکیم کا آغاز کیا۔ جو انتخابی منشور میں شامل ہی نہیں تھا، اس اسکیم سے آج ہزاروں غریب مسلم لڑکیوں کی شادی انجام دینے میں کافی مدد و تعاون حاصل ہورہا ہے۔ اس طرح اس اسکیم کے ذریعہ خواتین وغیرہ میں زبردست مسرت کا اظہار پایا جارہا ہے۔ بالخصوص اس اسکیم کیلئے چیف منسٹر نے 150 کروڑ روپئے فراہم کررہے ہیں۔ علاوہ ازیں اقلیتی طبقہ کے طلباء کو عصری زیور تعلیم سے آراستہ کرنے کے لئے چیف منسٹر نے ہی خصوصی دلچسپی کے ذریعہ ریاست تلنگانہ میں 70 نئے اقامتی اسکولس کی نہ صرف منظوری دی ہے بلکہ ان اسکولس کے قیام کیلئے مؤثر اقدامات کررہے ہیں اور ان اقامتی مدارس کے لئے 550 کروڑ روپئے بھی مختص کئے گئے۔ انھوں نے کہاکہ ریاست تلنگانہ میں اقلیتوں کی فلاح و بہبود کے لئے بیرونی ممالک میں تعلیم حاصل کرنے کے خواہشمند طلباء کے لئے اوورسیز اسکیم کو حکومت کی جانب سے متعارف کیا گیا اور اقلیتی طبقہ کے طلباء کے لئے اسکالرشپس و فیس کی ادائیگی کے لئے 223 کروڑ روپئے کی منظوری دی گئی۔ انھوں نے مزید بتایا کہ حکومت نے اوقافی اراضیات کے تحفظ وغیرہ کیلئے حکومت کی جانب سے وقف بورڈ کو 65 کروڑ روپئے کی گرانٹ ان ایڈ فراہم کی گئی۔ مسٹر جی بالراج رکن اسمبلی ٹی آر ایس نے سابق حکومتوں کو ہدف ملامت بناتے ہوئے کہاکہ سابق میں جو پارٹیاں برسر اقتدار تھیں، آج بہت کچھ اقلیتوں کی بہبود وغیرہ کے تعلق سے کہہ رہی ہیں جبکہ سابق میں وہ خود برسر اقتدار تھے لیکن اقلیتوں کی فلاح و بہبود کیلئے کوئی اقدامات نہیں کئے لیکن صرف اور صرف اقلیتوں کو ووٹ بینک کی طرح استعمال کرتے ہوئے ان ہی جماعتوں (کانگریس و تلگودیشم پارٹیوں) نے درخت کا نام کہہ کر پھلوں کو فروخت کرنے جیسے اقدامات کئے۔ انھوں نے خواتین کی بہبود کا تذکرہ کرتے ہوئے کہاکہ چیف منسٹر نے خواتین کی بہبود پر اولین ترجیح دی جس کی تازہ مثال جی ایچ ایم سی انتخابات میں خواتین کیلئے 50 فیصد تحفظات فراہم کئے گئے۔ خواتین کا تحفظ کرنے کے لئے شی ٹیموں کی تشکیل عمل میں لائی گئی۔ علاوہ ازیں ڈبل بیڈ روم مکانات میں بھی خواتین کو اولین ترجیح دی جارہی ہے۔ مطالبات زر پر بحث ختم ہونے کے ساتھ ہی اسپیکر نے اسمبلی کی کارروائی کو کل تک کیلئے ملتوی کردیا۔

TOPPOPULARRECENT