Thursday , August 24 2017
Home / شہر کی خبریں / اقلیتوں کو سودخوروں سے نجات دلانے چھوٹے قرض

اقلیتوں کو سودخوروں سے نجات دلانے چھوٹے قرض

اسکیم کو چیف منسٹر کے سی آر کی منظوری، اندرون ہفتہ اسکیم کا اعلان
حیدرآباد۔/23اپریل، ( سیاست نیوز) تلنگانہ حکومت غریب اقلیتوں کو سود خوروں سے نجات دلانے کیلئے چھوٹے قرض کی فراہمی کا منصوبہ رکھتی ہے۔ اس سلسلہ میں چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے اسکیم کو منظوری دے دی جس کے تحت غریب افراد کو چھوٹے کاروبار کے آغاز کیلئے سبسیڈی کے ساتھ چھوٹا قرض فراہم کیا جائے گا۔ توقع ہے کہ اندرون ایک ہفتہ اسکیم کا باقاعدہ اعلان کردیا جائے گا۔ واضح رہے کہ اقلیتی فینانس کارپوریشن کے پاس قرض اور سبسیڈی سے متعلق اسکیم میں کم سے کم ایک لاکھ روپئے کی حد مقرر ہے جس سے روزانہ چھوٹے کاروبار کرنے والوں کو دشواری کا سامنا ہے جنہیں 20تا 25ہزار روپئے کا قرض کافی ہوجائے گا۔ اکثر دیکھا گیا ہے کہ میوہ فروش اور روزانہ کی بنیاد پر کاروبار کرنے والے افراد سودخوروں سے بھاری شرح سود پر قرض حاصل کرنے پر مجبور ہیں اور 20 فیصد تک سود  ادا کیا جاتا ہے۔ قرض کی واپسی کیلئے سود خور ہراسانی اور تشدد کا راستہ اختیار کرتے ہیں۔ ایسے غریب افراد کو سود خوروں کے چنگل سے آزاد کرانے کیلئے حکومت نے چھوٹے قرض کی اسکیم شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس کے تحت 20تا25 ہزار روپئے قرض کے ساتھ سبسیڈی بھی فراہم کی جائے گی۔ معمولی قرض کی یہ رقم امیدوار باآسانی ادا کرسکتا ہے۔ حکومت نے اقلیتی طلبہ کی فیس بازادائیگی کیلئے 238کروڑ اور اسکالر شپ کیلئے 62کروڑ روپئے جاری کردیئے ہیں۔ توقع ہے کہ 2015-16 تعلیمی سال کے بقایا جات بھی جاری کردیئے جائیں گے۔ حکومت نے 71 اقامتی اسکولس کیلئے 350کروڑ روپئے جاری کئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT