Friday , October 20 2017
Home / شہر کی خبریں / اقلیتوں کیلئے مزید چار اقامتی اسکولوں کی منظوری : احکام جاری

اقلیتوں کیلئے مزید چار اقامتی اسکولوں کی منظوری : احکام جاری

حیدرآباد۔7 اپریل ( سیاست نیوز) تلنگانہ حکومت نے اقلیتوں کیلئے مزید 4 اقامتی اسکولس کے قیام کو منظوری دے دی ہے ۔ اس سلسلہ میں آج احکامات جاری کردیئے گئے ہیں ۔ اس طرح تلنگانہ میں قائم ہونے والے اقلیتی اقامتی اسکولس کی تعداد بڑھ کر 71ہوگئی ہے ۔ حکومت نے 70 اقامتی اسکولس کے قیام کا اعلان کیا تھا اور 67مقامات کی نشاندہی کرلی گئی تھی ۔ مزید 3مقامات کی نشاندہی باقی تھی تاہم عوامی نمائندوں کی جانب سے اصرار پر حکومت نے اسکولس کی تعداد میں اضافہ کردیا ہے ۔ 70اقامتی اسکولس کے علاوہ میدک کے ظہیر آباد میں لڑکیوںکیلئے اقامتی اسکول کو منظوری دی گئی اور جملہ تعداد 71کردی گئی ۔ سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل نے آج جی او ایم ایس نمبر 11جاری کیا جس میں نئے چار اسکولوں کی نشاندہی کی گئی ۔ میدک ضلع کے دوباک اسمبلی حلقہ میں لڑکوں کے اقامتی اسکول کو منظوری دی گئی ۔ محبوب نگر کے دیورکدرہ اور نظام آباد کے بانسواڑہ اسمبلی حلقہ میں کوٹاگری کے مقام پر لڑکوں کیلئے اقامتی اسکولس کی منظوری دی گئی ۔ جب کہ میدک کے ظہیرآباد میں لڑکیوں کیلئے اسکول قائم کیا جائے گا ۔ جی او میں کہا گیا ہے کہ جون سے تمام 71اسکولس کارکرد ہوجائیں گے ۔ اقامتی اسکولس کی سوسائٹی کے سکریٹری کو ہدایت دی گئی کہ وہ نئے منظورہ چار اسکولوں کیلئے کرایہ کی عمارتوں کا انتخاب کریں ۔ سوسائٹی کو یہ بھی ہدایت دی گئی کہ اندرون دو ماہ تمام 71 اسکولوں کیلئے مستقل عمارتوں کی تعمیر کیلئے اراضی کی نشاندہی کرلیں اور حکومت کو رپورٹ پیش کریں تاکہ تعمیری تخمینہ تیار کیا جاسکے ۔ واضح رہے کہ حکومت نے عادل آباد میں 7 ‘ نظام آباد 6 ‘ کریم نگر 8 ‘ کھمم 5 ‘ میدک 11 ‘ محبوب نگر 8 ‘ حیدرآباد 8 ‘ رنگاریڈی 9 ‘ نلگنڈہ 5 ‘ ورنگل میں 4 اسکولوں کو منظوری دی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT