Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / اقلیتوں کی خود روزگار اسکیمات کی تواریخ میں توسیع کی ضرورت

اقلیتوں کی خود روزگار اسکیمات کی تواریخ میں توسیع کی ضرورت

لمحہ آخر درخواست گذاروں کا ہجوم ، عدم شعور سے کئی درخواست گزار محروم
حیدرآباد ۔ 10۔  فروری  (سیاست نیوز) اقلیتوںکو خود روزگار اسکیمات سے مربوط کرنے کیلئے متعارف کی گئی سبسیڈی اسکیم کیلئے درخواستوں کے ادخال کی آخری تاریخ میں توسیع کی ضرورت ہے۔ حکومت نے 50 فیصد سبسیڈی سے متعلق اسکیم میں ترمیم کرتے ہوئے 60 تا 80  فیصد سبسیڈی کی اسکیم تیار کی ہے۔ اس اسکیم سے متعلق اقلیتوں میں شعور بیداری کی کمی کے باعث لمحہ آخر میں درخواست گزاروں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے ۔ اقلیتی فینانس کارپوریشن کی جانب سے عمل کی جانے والی اس اسکیم کیلئے آن لائین رجسٹریشن کی آخری تاریخ 15 فروری مقرر کی گئی ہے اور تاحال 21 ہزار سے زائد درخواستیں آن لائین داخل کردی گئیں۔ گزشتہ دو دن میں آن لائین درخواستوں کے ادخال میں تیزی پیدا ہوئی ہے ۔ روزنامہ سیاست کی جانب سے قائم کردہ ہیلپ لائین سنٹر میں درخواست گزاروں کا کافی ہجوم دیکھا گیا جو چھوٹے کاروبار کے آغاز کے خواہاں ہیں تاکہ ان کی معاشی صورتحال بہتر ہوسکے۔ درخواست گزاروں اور رضاکارانہ تنظیموں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہیکہ آن لائین رجسٹریشن کی تاریخ میں کم از کم ایک ہفتہ کی توسیع دی جائے ۔ درخواستوں کے ادخال کیلئے جو شرائط رکھی گئی ہیں، ان کے مطابق سرٹیفکٹس کی تیاری میں امیدواروں کو وقت درکار ہے۔ انکم سرٹیفکٹس اور دیگر سرٹیفکٹس کے حصول کیلئے امیدواروں کو تحصیل آفس کے چکر کاٹنے پڑ رہے ہیں۔ لہذا امیدواروں نے آخری تاریخ میں توسیع کا مطالبہ کیا ہے۔ نئی اسکیم کے تحت تین زمروں کیلئے علحدہ سبسیڈی فراہم کی جائے گی ۔ ایک لاکھ روپئے کے یونٹ کے لئے 80 فیصد سبسیڈی حاصل رہے گی جبکہ ایک تا دو لاکھ روپئے پر مشتمل کاروبار کے آغاز پر 70 فیصد اور دو لاکھ سے زائد کے کاروبار کے لئے 60 فیصد سبسیڈی اقلیتی فینانس کارپوریشن فراہم کرے گا۔ سبسیڈی کی آخری حد 5 لاکھ روپئے ہوگی۔ اسی دوران 2014-15 ء میں بینکیبل اسکیم کیلئے منظورہ درخواستوںکیلئے ابھی تک سبسیڈی اور بینک قرض جاری نہیں کیا گیا۔ کارپوریشن کے اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ سال 8240 افراد کو سبسیڈی کی فراہمی کا نشانہ مقرر کیا گیا تھا اور 8142 امیدواروں کو کارپوریشن کی جانب سے سبسیڈی جاری کی گئی لیکن بینکوں کی جانب سے قرض کی منظوری میں تاخیر کے سبب صرف 3602 افراد ہی سبسیڈی اور بینک قرض حاصل کرنے میں کامیاب ہوئے۔ اس طرح گزشتہ سال اقلیتی فینانس کارپوریشن بینکوں سے مربوط سبسیڈی کی فراہمی اسکیم پر مکمل عمل آوری میں ناکام ثابت ہوا ہے۔

TOPPOPULARRECENT