Sunday , April 23 2017
Home / ہندوستان / اقلیتوں کی فلاح و بہبودکے بجٹ میں تخفیف

اقلیتوں کی فلاح و بہبودکے بجٹ میں تخفیف

حکومت مہاراشٹرا کا اقدام ‘  گذشتہ کی بہ نسبت جاریہ مالی سال میں کم رقم مختص
ممبئی ۔ 19مارچ ( سیاست ڈاٹ کام) حکومت مہاراشٹرا نے اقلیتوں کی فلاح و بہبود کیلئے کم رقومات مختص کی ہیں ۔ ریاستی بجٹ برائے مالی سال 2017-18ء کا کل ریاستی اسمبلی میں اعلان کیا گیا ۔ اقلیتوں کی فلاح و بہبود کیلئے 350کروڑ روپئے مختص کئے گئے جب کہ مالی سال 2016-17ء میں  405کروڑ روپئے مختص کئے گئے تھے ۔ اسکالرشپس اور اقلیتی نوجوانوں کی تربیت کے مختلف اسکیمس اور اقلیتی شہریوں کی بنیادی سہولتوں کیلئے مختص رقم میں کمی کی وجہ سے مکمل نہیں ہوسکیں گی ۔ 350کروڑ روپئے مالی سال 2017-18ء کیلئے مختص کئے گئے ہیں جن میں سے 125کروڑ روپئے اقلیتوں کی بستیوں کو بہتر بنانے اور مختلف بنیادی سہولتیں دیہی اور شہری علاقوں میں فراہم کرنے کیلئے مختص کئے گئے ہیں ۔ ریاستی وزیر فینانس سدھیر منگنٹیوار نے بجٹ پیش کرتے ہوئے کل کہا تھا کہ ان کی طبعیت کیلئے اقلیتی طبقہ کے طلبہ کو بجٹ فراہم کیا جائے گا ۔ ایسا معلوم ہوتاہے کہ انہیں یو پی ایس سی ‘ ایم پی ایس سی ‘ بینکنگ خدمات اور دیگر کیلئے مسابقتی امتحانات میں شرکت کرنی پڑے گی ۔ علاوہ ازیں مہارتی تربیت فراہم کرنے کا بھی انہوں نے تیقن دیا لیکن اس اقدام کیلئے صرف 8کروڑ روپئے مختص کئے گئے ۔ بجٹ میں اقلیتوں کی فلاح و بہبود کیلئے کم رقم مختص کرنے پر مسلم ارکان نے ناراضگی ظاہر کی اور کہا کہ حکومت ’’سب کا ساتھ ‘سب کا وکاس ‘‘ کا نعرہ لگاتی ہے لیکن اقلیتوں کیلئے کم رقم مختص کرتی ہے ۔ اقلیتوں نے اپنی فلاح و بہبود کیلئے ایک ہزار کروڑ روپئے مختص کرنے کا مطالبہ کیا تھا لیکن ان کے مطالبہ کو نظرانداز کردیا گیا اور ماضی کی بہ نسبت انہیں کم رقم فراہم کی گئی ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT