Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / اقلیتوں کے بشمول پسماندہ طبقات کی تعلیم کو معیاری بنانے کی تجویز

اقلیتوں کے بشمول پسماندہ طبقات کی تعلیم کو معیاری بنانے کی تجویز

اسٹیٹ میناریٹی کمیشن کا اجلاس ، چیرمین جناب عابد رسول خاں کی ارکان سے مشاورت
حیدرآباد۔18جنوری(سیاست نیوز) اقلیتوں اور دیگر پسماندہ طبقات کے تعلیمی معیار میںاضافے کے لئے تعلیمی سال 2015-16 میں رائٹ ٹو ایجوکیشن ‘ طریقہ کار اورقوانین و ریگولیشن کے عنوان پر اسٹیٹ میناریٹی کمیشن کا ایک ا ہم اجلاس منعقد ہوا جس کی نگرانی چیرمن اسٹیٹ میناریٹی کمیشن جناب عابدرسول خان نے کی جبکہ سردار سرجیت سنگھ‘ جناب جی ایم قادری‘ٹھاکر ہردے ناتھ سنگھ‘ جناب اعظم علی‘پروفیسر ایم اے منظور‘پروفیسر شیخ جیلانی‘جناب مظہر حسین ‘ جناب اے بشیر الدین فاروقی‘ایم ایس فاروق‘ جناب نعیم اللہ شریف‘جناب رشید احمد‘محمد سمیع اللہ قریشی آزاد‘جناب ایس کیومقصود‘جناب سید نبی‘ اچیوتا رائو‘انورادھا رائو‘ محمدافضل نے شرکت کرتے ہوئے ریاست تلنگانہ اور آندھرا میںاقلیتوں کے بشمول معاشی پسماندگی کا شکار دیگر طبقات کے لئے معیاری تعلیم کے نظام کو یقینی بنانے کے متعلق حکومت پر دبائو کے لئے مشاورت کی اور تجاویز بھی پیش کئے ۔ اس موقع پرقانون حق لازمی تعلیمی قوانین کے متعلق عوام میںشعور بیداری کے لئے بھی تجاویز پیش کئے گئے تاکہ انتظامیہ ‘ اسکول اور تعلیم کو عام کرنے کی جدوجہد میںلگی ہوئی رضاکارانہ تنظیموں کے درمیان میںرابطہ قائم کیاجاسکے۔بعد ازاں گول میزکانفرس کے چند نکات کو بھی قطعیت دی گئی جس میں دونوں ریاستوں کی حکومتوں سے مطالبہ کیاگیا کہ وہ تما م تعلیمی اداروں کو آر ٹی ای قانون کے تحت کام کرنے کے متعلق نوٹس جاری کریں اورتعلیمی اداروں میںداخلوں اور قانون حق لازمی تعلیم کے لئے صاف او رشفاف طریقہ کار دونوں حکومت کی جانب سے جاری کیا جائے اس کے علاوہ متحدہ ریاست آندھرا پردیش کے دور میںپہلے سے قائم کئے گئے قوانین کی کوتاہیوں اور خامیوں کودور کرنے کے متعلق بھی ہدایت جاری کی جائے اور ڈسٹرکٹ ایجوکیشنل آفیسر کے دائرہ اختیار کے اسکول کی تمام جانکاری انہی کے دفتر سے فراہم کی جائے ۔ ا سکے علاوہ قانون حق لازمی تعلیم کو عام کرنے کے لئے اور ہر تعلیمی ادارے میںنافذ کرنے کے لئے ایک او ربڑے اجلاس کا بھی اس موقع پر اعلان کیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT