Friday , July 28 2017
Home / شہر کی خبریں / اقلیتی اقامتی اسکولس میں 90 فیصد نشستوں پر داخلے مکمل

اقلیتی اقامتی اسکولس میں 90 فیصد نشستوں پر داخلے مکمل

طلبہ کی معیاری تعلیم پر خصوصی توجہ ، تعلیم کے علاوہ کھیل کود بھی متعارف
حیدرآباد۔6جولائی (سیاست نیوز) تلنگانہ اقلیتی اقامتی اسکولوں میں منظورہ نشستوں کی جملہ تعداد 46ہزار 120 ہے جس میں 95فیصد یعنی 43ہزار 722 نشستوں پر داخلہ ہو چکے ہیں ۔ تلنگانہ اقلیتی رہائشی ایجوکیشنل سوسائٹی کے عہدیداروں کا کہنا ہے کہ مابقی نشستوں پر داخلوں کے سلسلہ میں بھی وہ مطمئن ہیں کہ یہ نشستیں بھی پُر ہوجائیں گی ۔ تلنگانہ اسٹیٹ مائنارٹیز ریسڈینشل اسکولس ایجوکیشنل سوسائٹی کی جانب سے فراہم کردہ تفصیلات کے مطابق شہر حیدرآباد میں جملہ 39اسکول شروع کئے گئے ہیں جن میں 9240نشستیں ہیں اور ان میں 8360نشستوں پر داخلہ مکمل کیا جاچکا ہے اور مابقی نشستوں پر داخلہ ہونے باقی ہیں۔ سال گذشتہ حکومت تلنگانہ نے 71اسکول شروع کئے تھے اور جاریہ سال ان میں مزید 121اسکولوں کے اضافہ کا فیصلہ کیا گیا ہے اوران اسکولوں میں بنیادی سہولتوں کی فراہمی کے علاوہ طلبہ کی بہتر نگہداشت کے انتظامات سے اقلیتی طبقہ کی جانب سے اطمینان کا اظہا رکیا جا رہا ہے اور داخلوں کے حصول میں دلچسپی دکھائی جانے لگی ہے۔ بتایاجاتا ہے کہ سوسائٹی کی جانب سے طلبہ کوتعلیم کے ساتھ ساتھ اضافی سرگرمیوں بالخصوص کھیل کود کی سرگرمیوں میں حصہ لینے کیلئے تربیت فراہم کی جا رہی ہے جس کے مثبت نتائج برآمد ہونے لگے ہیں۔ جناب سید ولایت حسین رضوی نے بتایا کہ ریاست میں چلائے جانے والے رہائشی اسکولوں میں معیاری تعلیم کی فراہمی کے ساتھ ساتھ ان میں دیگر سرگرمیوں میں حصہ لینے کا حوصلہ پیدا کیا جا رہا ہے تاکہ وہ دیگر اسکولوں کے طلبہ کے ساتھ ہونے والے مقابلوںحصہ لینے کے اہل بن سکیں۔ اقلیتی رہائشی اسکولوں میں طلبہ کے داخلوں میں ہونے والے اضافہ سے سوسائٹی کے ذمہ داروں کی دلچسپی میں اضافہ بھی ہوا ہے اور کہا جا رہا ہے کہ ریاستی حکومت کی جانب سے اقلیتی رہائشی اسکولوں میں داخلوں کے عمل کو حوصلہ افزاء تصور کرتے ہوئے ستائش کی جانے لگی ہے۔ ریاستی حکومت کی جانب سے جاریہ سال جو 121رہائشی اسکول شروع کئے گئے ہیں ان اسکولوں میں بھی طلبہ کو بستر‘ پلنگ‘ بنیادی سہولتوں کے علاوہ شفاف پینے کے پانی کی سہولت اور معیاری کلاس رومس کی فراہمی کے ذریعہ ان میں اعتماد پیدا کیا جا رہا ہے اور ان اسکولوں میں طلبہ کی تعلیم کے معیار پر خصوصی توجہ مرکوز کی جانے لگی ہے۔جناب بی شفیع اللہ آئی ایف ایس نے بتایا کہ طلبہ کوصرف تعلیم کی حد تک محدود رکھنے کے بجائے انہیں معیاری کھیلو ںمیں حصہ لینے کی ترغیب دی جا رہی ہے تاکہ وہ مسابقتی دوڑ میں شامل رہ سکیں۔ اقلیتی رہائشی اسکولوں میں قیام کرتے ہوئے تعلیم حاصل کرنے والے طلبہ کو گھڑ سواری ‘ تیراکی ‘ تیر اندازی اور نشانہ بازی کی تربیت کی فراہمی کی منصوبہ بندی کی گئی ہے اور بہت جلد ان کھیلوںکو ان طلبہ کیلئے متعارف کروایا جائے گا اور ان کی دلچسپی کے مطابق کھیلوں میں متعارف کروایاجائے گا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT