Tuesday , October 17 2017
Home / شہر کی خبریں / اقلیتی اقامتی اسکولس کی کارکردگی کا جائزہ ، عہدیداروں کا دورہ اضلاع

اقلیتی اقامتی اسکولس کی کارکردگی کا جائزہ ، عہدیداروں کا دورہ اضلاع

جناب اے کے خاں کی ہدایت پر اسٹیٹ آفیسرس کی روانگی ، معیار تعلیم کو بہتر بنانے پر توجہ
حیدرآباد ۔ 17۔اکتوبر (سیاست نیوز) حکومت کی جانب سے قائم کردہ اقلیتوں کے اقامتی اسکولس کی کارکردگی کا جائزہ لینے کیلئے اقلیتی بہبود کے اعلیٰ عہدیدار مختلف اضلاع کے دورہ پر ہیں۔ اسکول سوسائٹی کے نائب صدرنشین اے کے خاں نے اسٹیٹ آفیسرس کو اضلاع کے دورہ کی ہدایت دی تھی تاکہ اسکولوں کے معیار اور تعلیمی سرگرمیوں کا حقیقی طور پر پتہ چلایا جاسکے۔ اقلیتی اداروں کے سربراہ پروفیسر ایس اے شکور ، محمد اسد اللہ بی وکٹر اور معصومہ بیگم نے آج سے اضلاع کے دورہ کا آغاز کیا۔ چیف اگزیکیٹیو آفیسر وقف بورڈ محمد اسد اللہ نے آج نلگنڈہ ضلع کا دورہ کرتے ہوئے اقامتی اسکولس کا جائزہ لیا ۔ انہوں نے اسکولوں میں تعلیم اور بنیادی سہولتوں کی فراہمی کے بارے میں معلومات حاصل کی ۔ طلبہ کے علاوہ اولیائے طلبہ سے بھی ملاقات کرتے ہوئے معلومات حاصل کی گئی ۔ انہوں نے اسکولوں کی کارکردگی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے پرنسپل اور اساتذہ کو ہدایت دی کہ وہ کسی بھی مسئلہ کی صورت میں  اسکول سوسائٹی کے عہدیداروں سے رجوع ہوں ۔ انہوں نے کہا کہ تعلیمی معیار کو بہرصورت برقرار رکھا جائے تاکہ اقلیتوں میں تعلیمی پسماندگی کے خاتمہ سے متعلق حکومت کے مقصد کی تکمیل ہوسکے ۔ اسپیشل آفیسر حج کمیٹی پروفیسر ایس اے شکور نے آج ورنگل ضلع میں اقامتی اسکولوں کا معائنہ کیا ۔ انہوں نے بتایا کہ اسکولوں کی کارکردگی پر طلبہ اور اولیائے طلبہ نے اطمینان کا اظہار کیا ہے ۔ طلبہ کو بنیادی انفراسٹرکچر کے علاوہ بہتر کھانا اور کتابیں سربراہ کی گئی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ تمام اسکولوں میں درکار سہولتیں فراہم کردی گئیں۔ اسکولوں میں طلبہ کی تعداد کو برقرار رکھنے کیلئے اقلیتوں میں شعور بیداری کے اقدامات کئے جارہے ہیں۔ اقامتی اسکولوں میں آؤٹ سورسنگ کی بنیاد پر خدمات انجام دینے والے پرنسپلس اور اساتذہ نے شکایت کی ہے کہ انہیں گزشتہ دو ماہ سے تنخواہ ادا نہیں کی گئی ۔ اس سلسلہ میں جب اسکول سوسائٹی کے ذمہ داروں سے نمائندگی کی گئی تو انہوں نے تیقن دیا کہ اندرون دو یوم تنخواہ جاری کردی جائے گی ۔ واضح رہے کہ شہر اور اضلاع میں زیادہ تر اساتذہ اور پرنسپلس آؤٹ سورسنگ کی بنیاد پر مقرر کئے گئے ہیں۔ باقاعدہ تقررات تلنگانہ پبلک سرویس کمیشن کے ذریعہ انجام دیئے جائیں گے ۔ اضلاع میں اسکولوں کی ذاتی عمارت کیلئے اراضی کے الاٹمنٹ کا کام  ضلع کلکٹرس کے ذریعہ انجام دیا جائے گا ۔ اسٹیٹ آفیسرس نے ضلع کلکٹرس سے خواہش کی ہے کہ وہ جلد سے جلد اراضی الاٹ کردیں۔ دیہی علاقوں میں پانچ ایکر اور شہری علاقوں میں تین ایکر اراضی پر اسکول تعمیر کئے جائیں گے۔ حکومت نے موجودہ 71 اسکولوں کے علاوہ آئندہ تعلیمی سال سے مزید 90 اسکولوں کے قیام کا فیصلہ کیا ہے ۔ اسکول سوسائٹی کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ  آئندہ سال سے قائم ہونے والے اسکولوں کی تیاریوں کا ابھی سے آغاز کردیں۔

TOPPOPULARRECENT