Monday , August 21 2017
Home / شہر کی خبریں / اقلیتی بجٹ (1204) کروڑ فیس بازادائیگی (223) اور سبسیڈی اسکیم 150 کروڑ کی تخصیص

اقلیتی بجٹ (1204) کروڑ فیس بازادائیگی (223) اور سبسیڈی اسکیم 150 کروڑ کی تخصیص

شادی مبارک (150) کروڑ ، اوورسیز اسکیم (30) کروڑ ، بعض اسکیمات میں کمی
حیدرآباد۔ 14۔ مارچ (سیاست نیوز)  تلنگانہ حکومت نے مالیاتی سال 2016-17 ء میں اقلیتی بہبود کیلئے 1204 کروڑ 43 لاکھ 67 ہزار روپئے مختص کئے ہیں، جن میں نان پلان بجٹ کے تحت 4 کروڑ 43 لاکھ 67 ہزار رو پئے مختص کئے گئے جبکہ پلان بجٹ کے تحت 1200 کروڑ روپئے مختص کئے گئے۔ اسمبلی میں پیش کئے گئے محکمہ فینانس کی بجٹ تفصیلات کے مطابق گزشتہ سال پلان بجٹ کے تحت 1100 کروڑ اور نان پلان کے تحت 4 کروڑ 86 لاکھ 83 ہزار روپئے مختص کئے گئے تھے۔ حکومت نے بجٹ میں اگرچہ معمولی اضافہ کیا ہے لیکن بعض جاریہ اسکیمات کو ختم کرنے کی تیاری کرلی ہے، جس کا اظہار بجٹ کی عدم منظوری سے ہے۔ بعض اسکیمات کیلئے کوئی بجٹ مختص نہیں کیا گیا۔ اقلیتی بہبود کے مختلف اداروں اور اسکیمات کیلئے بجٹ میں اضافہ کیا گیا ہے۔ اقلیتی طلبہ کے اسکالرشپ کیلئے بشمول پری میٹرک اسکالرشپ جملہ 80  کروڑ روپئے مختص کئے گئے۔ گزشتہ سال اس اسکیم کے تحت 100 کروڑ روپئے مختص کئے گئے تھے۔ اسکالرشپ کے لئے زائد درخواستوں کی عدم وصولی کو دیکھتے ہوئے بجٹ میں کمی کا فیصلہ کیا گیا۔ فیس باز ادائیگی اسکیم کیلئے 223 کروڑ مختص کئے گئے جبکہ گزشتہ سال بجٹ میں 425 کروڑ کی گنجائش رکھی گئی تھی ، بعد میں اسے ہٹاکر 138 کرو ڑ 34 لاکھ کیا گیا تھا۔اقلیتی فینانس کارپوریشن کے ذریعہ عمل کی جانے والی بینک سے مربوط سبسیڈی اسکیم کے لئے 150 کروڑ روپئے کی گنجائش رکھی گئی ہے۔ گزشتہ سال اس اسکیم کیلئے 108 کروڑ 87 لاکھ مختص کئے گئے تھے۔ دائرۃ المعارف کیلئے تین کروڑ ، اردو اکیڈیمی ، 23 کروڑ تلنگانہ وقف بورڈ کو امداد اور آئمہ اور مؤذنین کو ماہانہ اعزازیہ کیلئے 65 کروڑ ،’ سروے کمشنر وقف دو کروڑ ، سنٹر فار ایجوکیشنل ڈیولپمنٹ آف میناریٹیز کیلئے تین کروڑ ، تلنگانہ حج کمیٹی تین کروڑ، دودے کلا مسلم کوآپریٹیو سوسائٹی 50 لاکھ ، اقلیتی طلبہ کو کوچنگ کیلئے تلنگانہ اسٹڈی سرکل کو 7 کروڑ ، شادی مبارک اسکیم 150 کروڑ ، اوورسیز اسکالرشپ اسکیم 30 کروڑ ، دعوت افطار اور کرسمس تقاریب 30 کروڑ ، اقلیتی طلبہ کے 70 اقامتی مدارس کیلئے 350 کروڑ ، مکہ مسجد و شاہی مسجد کیلئے 2 کروڑ 50  لاکھ روپئے اور اقلیتوں کی ہمہ جہتی ترقی سے متعلق MSDP اسکیم کیلئے 29 کروڑ 75 لاکھ روپئے مختص کئے گئے۔ بجٹ میں وقف بورڈ،  سروے کمشنر وقف اور سی ای ڈی ایم کے بجٹ میں کمی کی گئی۔ جبکہ اردو گھر شادی خانوں کی تعمیر اور اقلیتوں کے اسٹڈی سرکل کے بجٹ میں اضافہ کیا گیا۔ جن اسکیمات کیلئے کوئی بجٹ مختص نہیں کیا گیا، ان میں بیسٹ اویلیبل اسکولس میں داخلوں کی اسکیم ، چرچس اور قبرستانوں کی تعمیر و مرمت ، یروشلم کے دورہ کیلئے امداد جیسی اسکیمات شامل ہیں۔ نان پلان بجٹ کے تحت اقلیتی کمیشن کیلئے 54 لاکھ 88 ہزار روپئے مختص کئے گئے۔

TOPPOPULARRECENT