Thursday , August 17 2017
Home / شہر کی خبریں / اقلیتی بہبود محکمہ میں مختلف اسکیمات پر عمل آوری کا جائزہ

اقلیتی بہبود محکمہ میں مختلف اسکیمات پر عمل آوری کا جائزہ

شادی مبارک اسکیم پر غور ۔ حیدرآباد و رنگا ریڈی میں زیر التوا درخواستوں کی جلد یکسوئی کی ہدایت
حیدرآباد۔/17نومبر، ( سیاست نیوز) سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل نے آج اقلیتی بہبود کے عہدیداروں کے ساتھ جائزہ اجلاس منعقد کرتے ہوئے مختلف اسکیمات پر عمل آوری کا جائزہ لیا۔ حج ہاوز میں منعقدہ اس اجلاس میں ’ شادی مبارک‘ اسکیم کا بطور خاص جائزہ لیا گیا اور عہدیداروں کو ہدایت دی گئی کہ وہ حیدرآباد اور رنگاریڈی میں زیر التواء درخواستوں کی عاجلانہ یکسوئی کو یقینی بنائیں۔ انہوں نے شادی مبارک اسکیم کی درخواستوں کی یکسوئی میں تاخیر کی وجوہات کا جائزہ لیتے ہوئے عہدیداروں سے کہا کہ اس اسکیم کی درخواستوں کی جانچ کیلئے جن 9 ملازمین کی خدمات فراہم کی گئی ہیں ان سے استفادہ کرتے ہوئے جلد از جلد تمام درخواستوں کی یکسوئی کردی جائے۔ انہوں نے درخواستوں کی یکسوئی میں مکمل شفافیت کا مشورہ دیا۔ عہدیداروں نے بتایا کہ کئی درخواست گذار ایسے ہیں جنہوں نے آن لائن درخواستیں داخل کرنے کے بعد اپنی اسنادات کی نقولات ڈسٹرکٹ میناریٹی ویلفیر دفاتر میں داخل نہیں کی ہیں۔ حیدرآباد اور رنگاریڈی میں اس طرح کی کئی نامکمل درخواستیں دیکھی گئیں۔ عہدیداروں نے بتایا کہ جب تک امیدوار آن لائن درخواست کے ساتھ اسنادات کی نقولات دفتر میں داخل نہیں کرتے اسوقت تک درخواستوں کی جانچ ممکن نہیں ہے۔ عہدیداروں نے واضح کردیا کہ جن خاندانوں نے نامکمل درخواستیں داخل کی ہیں انہیں فوری اسنادات کی نقولات متعلقہ ڈی ایم ڈبلیو آفس میں جمع کرنی چاہیئے۔ سید عمر جلیل نے اقلیتی بہبود کے دفاتر میں اسٹاف کی قلت کو دور کرنے کیلئے حکومت سے نمائندگی کا حوالہ دیا اور کہا کہ حکومت سے خواہش کی گئی ہے کہ دیگر محکمہ جات سے عہدیداروں کو اقلیتی بہبود کیلئے الاٹ کیا جائے تاکہ اسکیمات پر موثر عمل آوری میں مدد مل سکے۔ تلنگانہ کے 10اضلاع کے منجملہ 7 میں ڈسٹرکٹ میناریٹی ویلفیر آفیسرس کے عہدے خالی ہیں اور صرف عبوری انتظامات کے تحت دیگر اداروں کے افراد سے کام لیا جارہا ہے۔ اس عہدہ کیلئے ڈپٹی کلکٹر رتبہ کا ہونا ضروری ہے لیکن بحالت مجبوری کم رینک والے افراد کو اس عہدہ کی ذمہ داری دی گئی۔ سید عمر جلیل نے اقلیتی فینانس کارپوریشن، اردو اکیڈیمی اور وقف بورڈ کے عہدیداروں کو طلب کرتے ہوئے ان کی کارکردگی کا جائزہ لیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے اقلیتی بہبود کیلئے جو بجٹ الاٹ کیا ہے اس کے مکمل خرچ پر توجہ دی جانی چاہیئے۔ انہوں نے اسکیمات پر عمل آوری میں تیزی پیدا کرنے کی ہدایت دی۔ شادی مبارک اسکیم کے تحت ریاست میں ابھی تک 23402 خاندانوں میں امداد جاری کی گئی اور 119کروڑ روپئے اس اسکیم کے تحت خرچ کئے گئے۔ حیدرآباد میں 2000 سے زائد درخواستیں زیر التواء ہیں جن کی جانچ کیلئے حج کمیٹی سے 9 ملازمین کی خدمات حاصل کی گئی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT