Monday , September 25 2017
Home / Top Stories / ’’اقلیتی طبقہ کے کسی رکن نے ملک دشمن نعرہ نہیں لگایا ‘‘

’’اقلیتی طبقہ کے کسی رکن نے ملک دشمن نعرہ نہیں لگایا ‘‘

جے این یو تنازعہ پر بی جے پی قومی عاملہ اجلاس میں جیٹلی کا بیان
نئی دہلی ۔ /20 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) وزیر فینانس ارون جیٹلی نے جواہر لعل نہرو یونیورسٹی تنازعہ پر آج واضح کیا کہ اگرچہ تنازعہ کے پہلے دن چند افراد جے این یو پہونچے اور دیگر چند قوم دشمن نعرے لگائے لیکن مجموعی طور پر ملک دشمن نعروں کی بحث میں عام طور پر بائیں بازو کے انتہائی سخت گیر عناصر سب سے آگے تھے ۔ ارون جیٹلی نے جو یہاں بی جے پی قومی عاملہ کے اجلاس کے دوسرے دن خطاب کررہے تھے مزید کہا کہ ’’مجموعی طور پر اس (ملک دشمن نعرہ بازی) میں اقلیتی طبقہ کے افراد ملوث نہیں تھے ۔ ان (اقلیتوں) میں سے اکثر نے کوئی تبصرہ نہیں کیا اور بحث میں حصہ نہیں لیا تھا ‘‘ ۔ جیٹلی نے کہا کہ ’’قوم پرستی کا نظریہ بی جے پی کیلئے ایک اہم طاقت کی حیثیت رکھتا ہے ۔ حق آزادی اظہار خیال ، قوم پرستی کے نظریہ کے ساتھ باقی و برقرار رہ سکتا ہے ۔ ہمارے دستور نے جہاں ناراضگی اور خیال ظاہر کرنے کی آزادی دی ہے وہیں وہ قوم و ملک کو تباہ کرنے کی اجازت بھی نہیں دیتا ‘‘ ۔ جموں و کشمیر میں تشکیل حکومت کے مسئلہ پر جیٹلی نے کہا کہ بی جے پی اس ریاست میں حکمرانی کے ایجنڈہ کی پوری طرح پابند عہد ہے ۔لیکن بی جے پی کی قرارداد میں جموں و کشمیر کابا لخصوص قومی سلامتی کے ضمن میں حوالہ دیا گیا ہے ۔ جیٹلی نے ملک دشمن نعرہ بازی کیلئے سخت گیر انتہاپسند بائیں بازو کے عناصر پر الزام عائد کرتے ہوئے اقلیتی طبقہ کے ارکان کو ان الزامات سے بری کرتے ہوئے اس مسئلہ پر بی جے پی کو ہونے والی پشیمانی سے نجات دلانے کی کوشش کی ۔

TOPPOPULARRECENT