Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / اقلیتی طلباء کو بیرون ملک اعلیٰ تعلیم کیلئے حکومت کی امداد

اقلیتی طلباء کو بیرون ملک اعلیٰ تعلیم کیلئے حکومت کی امداد

آن لائن درخواستوں کا ادخال، خواتین کیلئے 33فیصد تحفظات، شرائط میں نرمی ، زیادہ سے زیادہ طلباء استفادہ کریں: مسرس زاہد علی خاں اورعمر جلیل کا خطاب

حیدرآباد ۔ 22 جولائی ۔ ( سیاست نیوز) حکومت تلنگانہ اقلیتی امیدواروں کو بیرون ممالک میں اعلیٰ تعلیم کے حصول کیلئے دس لاکھ روپئے فی طالب علم کی گرانٹ دے رہی ہے ۔ اس کیلئے جی او جاری ہوچکا اور آن لائن رجسٹریشن کی آخری تاریخ یکم اگست ہے۔ پی جی کورسز اور پی ایچ ڈی کسی بھی فارن یونیورسٹی جو امریکہ ، آسٹریلیا ، برطانیہ ، کناڈا اور سنگاپور میں ہے اس کیلئے اہل ہیں جو طلبہ بیرون ممالک حصول تعلیم کے متلاشی ہیں حکومت کی اس اسکیم سے بھرپور استفادہ کریں۔ ان خیالات کا اظہار جناب عمر جلیل آئی اے ایس اسپیشل سکریٹری محکمہ اقلیتی بہبود حکومت تلنگانہ نے یہاں دفتر سیاست کے محبوب حسین جگر ہال عابڈس پر روزنامہ سیاست کے زیراہتمام ’’سی ایم او ایس ایس ایم ‘‘ اسکیم کے خصوصی جلسہ کو مخاطب کرتے ہوئے کیا اور کہا کہ ایس سی ؍ ایس ٹی طلبہ کیلئے  جو امبیڈکر کے نام سے بیرون ممالک میں اعلیٰ تعلیم کی مالی امداد کی اسکیم تھی اس طرز کو اب تلنگانہ میں اقلیتی طلبہ کیلئے بھی روبۂ عمل لایا جارہاہے اس کیلئے 25 کروڑ روپئے کی رقم مختص کی گئی ہے اور خواتین کو 33 فیصد تحفظات بھی ہیں۔ انھوں نے پُرزور انداز میں کہا کہ اقلیتیں بالخصوص مسلم نوجوان اس اسکیم سے پورا فائدہ اُٹھائیں اگر وہ جاریہ اگست کیلئے یہ مختص کردہ رقم کو پورا استعمال کرتے ہیں تو وہ چیف منسٹر سے آئندہ سیزن جنوری ؍ فبروری کیلئے مزید رقم کے حصول کی مساعی کریں گے ۔ محکمہ اقلیتی بہبود کے تحت اس کے ویب سائیٹ پر جو CGG کے تحت چلتا ہے اب ترمیمات کرتے ہوئے مسلم امیدوار کو کاسٹ سرٹیفکیٹ ، ٹیکس کے پرچے اور رہائشی صداقت ناموں کے ساتھ بیرون ممالک کے حصول تعلیم کے ہونے والے امتحانات کے اقل ترین اسکور ؍ بانڈ کو بھی کم کردیئے گئے ۔ ان کے ہمراہ کمپویٹر آن لائن کی ٹکنیکل ٹیم مسٹر چکرادھر کے زیرنگرانی موجود تھی جو اب تبدیلیوں اور ترمیمات سے سامعین کو واقف کروایا ۔ او ایس ایس ایم جو تلنگانہ چیف منسٹر کی شروع کردہ ہے اس میں طالب علم کو سب سے پہلے درخواست آن لائن داخل کرنا ہے ۔ سلیکشن کمیٹی اس کیلئے انتخاب کرے گی ۔ بیرون ملک جانے کے بعد ایک طرفہ ہوائی سفر کا ٹکٹ کی رقم دی جائے گی ۔

طالب علم کے بنک اکاؤنٹ میں یونیورسٹی کے داخلے کے اڈمٹ کارڈ اور فیس کی تفصیلات جو ادا کرچکے پیش کرنا ہوگا ۔ یہ گرانٹ یونیورسٹی کی جتنی فیس ہوگی اتنی ہی ادا کی جائے گی ۔ دس لاکھ کا مطلب پورے دس لاکھ نہیں بلکہ دس لاکھ روپئے تک ہے ۔ پہلے سال کے بعد کامیاب ہوئے سال دوم میں جانے پر مابقی رقم دی جائے گی ۔ اس کیلئے امیدوار ویب سائٹ پر تفصیلات کو ملاحظہ کریں، اہلیت شرائط کو دیکھ لیں۔ ڈگری امتحان میں کم از کم 60 فیصد سے کامیابی پہلی شرط ہے ۔ پھر جی آر ای ، جی میاٹ ٹوفل ، یا آئی ای ایل ٹی ایس کے اسکور کو دیکھا جائے گا۔ جناب زاہد علی خان ایڈیٹر سیاست نے صدارت کی اور اپنی صدارتی تقریر میں کہا کہ جو اسکیمات چاہے وہ مرکزی حکومت کی ہو یا ریاستی حکومت اس سے بھرپور فائدہ اقلیتوں کو پہنچانے کیلئے ادارہ سیاست ہمیشہ سے سرگرم عمل ہے اور یہ اس کی کڑی ہے۔ انھوں نے تلنگانہ ریاست کی نئی حکومت کے اقلیتوں کی بھلائی کے اقدامات کی سراہنا کرتے ہوئے کہا کہ ریاستی حکومت مرکز پر دباؤ ڈالیں کہ وہ اس ریاست میں اقلیتوں کی فلاح و بہبود کیلئے اسکیمات کو روبہ عمل لائیں۔ اقلیتوں کے لئے مختص بجٹ نہ پورا ریلیز ہوتا ہے اور نہ پورا خرچ ہوتا ہے ۔ اب تلنگانہ میں ایک نہایت حرکیاتی اور فعال اقلیتی بہبود کے سکریٹری ہے جن سے کئی امیدیں وابستہ ہیں اور ان کو پوری یکسوئی کیساتھ نافذالعمل کررہے ہیں ۔

لڑکیوں کی تعلیم اور اچھے مظاہرہ کے حوالہ سے جناب زاہد علی خان نے کہا اس اسکیم میں بھی 33 فیصد لڑکیوں کیلئے محفوظ ہے اب لڑکیوں کو بھی اچھے مواقع ہیں کہ وہ بیرون ملک سرکاری خرچ پر اعلیٰ تعلیم حاصل کریں۔ وہ کسی بھی قسم کی سرکاری سطح پر نمائندگی کیلئے پیشکش کی اور اسکالرشپ اور ہلپ لائن اور کیرئیر گائیڈنس کے ذریعہ اسکیمات کیلئے شعور بیدار کیا جاتا ہے ۔ اس موقع پر جناب جلال الدین اکبر ڈائرکٹر تلنگانہ میناریٹی فینانس کارپوریشن نے اس اسکیم پر تفصیلی روشنی ڈالی۔ محکمہ اقلیتی بہبود کے شعبۂ کمپیوٹر اور آن لائن کے انچارج عہدیدار مسٹر چکرادھر او ایس ڈی اور دلاور علی نے اپنی ٹیم کے ہمراہ اس موقع پر آن لائن ہونے والی دشواریوں اور تبدیلیوں سے واقف کروایا۔ ابتداء میں کارپوریٹ ٹرینر سید حسان الدین انس نے انگریزی بول چال ، کمیونکیشن اسکل نے خصوصی لکچر دیا۔ بیرون ممالک میں اعلیٰ تعلیم کے لئے فارم داخل کئے اور فارن یونیورسٹیز میں داخلے کے خواہاں سینکڑوں طلبہ نے اپنے شکوک اور سوالات شخصی طورپر کیا جس کا نہایت سکون کے ساتھ جناب عمر جلیل سکریٹری اقلیتی بہبود نے جوابات دیئے اور ہر طالب علم کو انفرادی طورپر مشورہ دیا ۔ دیڑھ گھنٹہ سوال جواب سیشن بھی رہا جس میں جناب ولایت حسین منیجر فینانس کارپوریشن شہ نشین پر موجود تھے ۔ پروگرام کے انعقاد میں سیاست ہیلپ لائن کی ٹیم سید خالد محی الدین اسد ، محمد رضوان ، سلمان سعدی ، فرح شاذیہ اور احمد صدیقی مکیش ، فہیم انصاری نے معاونت کی ۔ ایم اے حمید نے کارروائی چلائی اور آخر میں شکریہ ادا کیا ۔

 

چیف منسٹرس اوورسیز اسکالر شپ اسکیم برائے اقلیتیں
رجسٹریشن کا طریقہ کار،کاسٹ سرٹیفکیٹ کی ضرورت نہیں
حیدرآباد۔/22جولائی، ( سیاست نیوز)چیف منسٹرس اوورسیز اسکالر شپ اسکیم برائے اقلیتیں کیلئے رجسٹریشن کا طریقہ کار اس طرح ہے۔ درخواست گذار کوویب www.telanganaepass.cgg.gov.inلاگ آن کرنا ہوگا، پھر اسٹوڈنٹس سرویس کو کلک کیجئے اور سلسلہ نشان 16 درخواست رجسٹریشن برائے سمندر پار اسکالر شپس برائے ایس سی؍ ایس ٹی مائناریٹی طلبہ پر کلک کیجئے، پھر رجسٹریشن پر کلک کیجئے اور پھر تازہ رجسٹریشن برائے سمندر پار اسکالر شپس کھل جائے گی، اس پر مائناریٹی زمرہ کا انتخاب کیجئے اور پھر رجسٹریشن اُمور کی تکمیل کیجئے۔تمام درخواست گذاروں سے خواہش کی گئی ہے کہ وہ زیادہ سے زیادہ تعداد میں درخواستیں داخل کریں۔ بتایا گیا ہے کہ درخواستوں کے رجسٹریشن کی وصولی کی آخری تاریخ یکم اگسٹ 5بجے تک ہے۔درخواستوں کیلئے کاسٹ سرٹیفکیٹ کا لزوم ختم کردیا گیا ہے چنانچہ امیدواروں کو می سیوا سے کاسٹ سرٹیفکیٹ داخل کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ انہیں درج ذیل دستاویزات پیش کرنا ہوگا: انکم سرٹیفکیٹ جو می سیوا سے حاصل کیا گیا ہو، تاریخ پیدائش سرٹیفکیٹ، آدھار کارڈ، ای پاس آئی ڈی نمبر، رہائشی؍ سکونت کا سرٹیفکیٹ، 7پاسپورٹ نقولات، ایس ایس سی ؍ انٹر؍ گریجویٹ؍ پی جی مارکس شیٹ، جی آر ای؍ جی ایم اے ٹی یا اس کے مماثل اہلیتی امتحان ؍ ٹسٹ اسکور کارڈ۔ ٹوفیل؍ آئی ای ایل ٹی ایس اسکور کارڈ، بیرونی یونیورسٹی سے اڈمیشن آفر لیٹر( 1 تا 20 اڈمیشن لیٹر یا اس کے مماثل)۔ حالیہ ٹیکس اسسمنٹ کی نقل منسلک کی جائے، کسی قومیائے ہوئے بینک کی پاس بک کی نقل منسلک کی جائے اور فوٹو اسکیننگ کے بعد اَپ لوڈکی جائے۔

TOPPOPULARRECENT