Tuesday , July 25 2017
Home / Top Stories / اقلیتی نوجوانوں کیلئے مرکز کی جانب سے فروغ مہارت مراکز

اقلیتی نوجوانوں کیلئے مرکز کی جانب سے فروغ مہارت مراکز

ملک کے 100 اضلاع میں مسلم نوجوانوں کو روزگار پر مبنی تربیت دی جائے گی: مختار عباس نقوی
نئی دہلی ۔ 6 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی حکومت کی جانب سے اقلیتی نوجوانوں کی روزگار پر مبنی تربیت کیلئے ملک کے 100 اضلاع میں فروغ مہارت مراکز قائم کئے جائیں گے۔ ان مراکز کا نام ’’غریب نواز‘‘ ہوگا۔ اقلیتی طبقہ سے تعلق رکھنے والے نوجوانوں کو بہتر روزگار فراہم کرنے کی غرض سے مرکزی حکومت تربیتی مراکز قائم کررہی ہے۔ مرکزی وزیراقلیتی امور مختار عباس نقوی نے کہا کہ حکومت کی جانب سے طالبات کے ارکان خاندان کو فی کس 51 ہزار روپئے کی شادی امداد کے طور پر رقم دی جائے گی۔ جو لڑکیاں اپنی گرائجویشن کو پورا کریں گی، انہیں مرکز کے بیگم حضرت محل اسکالر شپ سے استفادہ کا موقع ملے گا۔ اس بات کا فیصلہ مولانا آزاد ایجوکیشن فاؤنڈیشن کے گورننگ باڈی اجلاس کے دوران کیا گیا۔ یہ ادارہ غیرسیاسی اور غیرمنفعت بخش سماجی خدمات انجام دینے والا ادارہ ہے جس کو ان کی وزارت کی جانب سے امداد فراہم کی جاتی ہے۔ مختار عباس نقوی نے اجلاس کے بعد اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے فیصلہ کیا ہیکہ آئندہ 6 ماہ کے دوران ملک کے 100 اضلاع میں ’’غریب نواز‘‘ فروغ مہارت مراکز شروع کئے جائیں، جس میں مسلم طلبہ کو پیشہ وارانہ مہارت سے آراستہ کیا جائے گا۔

یہ مراکز حیدرآباد اور نوئیڈا کے علاوہ دیگر مقامات پر شروع کئے جائیں گے۔ اترپردیش میں لکھنؤ، رامپور، الہ آباد اور شاہجہاں پور، مہاراشٹرا میں ممبئی اور ناگپور، مدھیہ پردیش میں بھوپال اور اندور، ہریانہ میں پانی پت، پٹنہ اور کشن گنج کے علاوہ جھارکھنڈ کے رانچی اور گریدھی مقامات پر سنٹرس قائم کئے جائیں گے۔ طالبات کو شادی امداد کے طور پر اسکالر شپ اسکیم سے استفادہ کا موقع ملے گا۔ مختار عباس نقوی نے مزید کہا کہ اس سلسلہ میں ان کی وزارت کو ملنے والی درخواستوں کے پیش نظر یہ فیصلہ کیا گیا ہے۔ ہم طالبات کی حوصلہ افزائی کرنے کیلئے قدم اٹھا رہے ہیں۔ اس موقع پر مرکزی وزیر نے 7 امیدواروں کو تہنیت پیش کی جنہوں نے سیول سرویس امتحانات کامیاب کئے ہیں۔ ان طلبہ کو ان کی وزارت کی جانب سے ’’نئی اڑان‘‘ اسکیم کے تحت مالی امداد دی گئی تھی۔ اس امداد کے ذریعہ ہی طلبہ نے مسابقتی امتحانات کیلئے کوچنگ حاصل کی تھی۔ حکومت اب ایسے امیدواروں کیلئے مالی امداد میں اضافہ پر غور کررہی ہے۔ ان کی وزارت نے 3198 امیدواروں کو مالی اعانت فراہم کی ہے۔ یہ خوش آئند بات ہیکہ کی طلبہ نے یو پی ایس سی کا امتحان پاس کیا ہے۔ مسلم طلبہ کی تعداد بھی زیادہ ہے۔ سیول سرویس امتحان پاس کرنے والے طلبہ میں 50 مسلم طلبہ شامل ہیں جو ایک مثبت فضاء کا مظہر ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT