Thursday , August 24 2017
Home / دنیا / اقوام متحدہ میں اصلاحات وقت کی اہم ضرورت :ہندوستان

اقوام متحدہ میں اصلاحات وقت کی اہم ضرورت :ہندوستان

اقوام متحدہ 4 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کا موقف زیادہ بہتر ہونا چاہئے۔ خصوصی طور پر عالمی ادارہ کے لئے اب نئے سکریٹری جنرل کے انتخاب کے معاملہ میں جنرل اسمبلی کا رول اگر مؤثر ہو تو یہ عالمی برادری کے حق میں مجموعی طور پر انتہائی منفعت بخش قدم ثابت ہوگا کیوں کہ اگر عالمی ادارہ کا سربراہ کوئی مناسب اور اہل شخص ہو تو ادارہ کا وقار دوبالا ہوجاتا ہے۔ دورہ پر آئے ہندوستانی ایم پی رام گوپال یادو نے جنرل اسمبلی کو مؤثر بنانے کے موضوع پر ایک مباحثہ میں شرکت کرتے ہوئے کہاکہ جنرل اسمبلی عالمی برادری کی آواز ہے اور سکریٹری جنرل کے انتخاب کے لئے اسے زائد اختیارات دیئے جانے کی ضرورت ہے کیوں کہ ایسا کرنے سے اقوام متحدہ کا مفاد عام طور پر اور اسمبلی کے وقار کو خصوصی طور پر تقویت حاصل ہوگی۔ مسٹر یادو نے کہاکہ ہم چونکہ ایک انتہائی ایجنڈہ 2030 ء کا اطلاق کرنے والے ہیں لہذا عالمی مجلس کے سربراہ کی حیثیت سے ایک انتہائی مناسب اور اہل شخصیت کا تقرر وقت کی اہم ضرورت ہے۔ سکریٹری جنرل کا انتخاب سلامتی کونسل کے پانچ مستقل رکن ممالک اور اقوام متحدہ کی مابقی رکنیت کا سوال ہے۔ انھوں نے کہاکہ ہندوستان نے سلامتی کونسل پر زور دیا ہے کہ وہ جنرل اسمبلی کے لئے ایک سے زیادہ ناموں کی سفارش کرے۔ انھوں نے اس موقع پر جنرل اسمبلی میں عاجلانہ اصلاحات کے لئے ہندوستان کے مطالبہ کا اعادہ کیا اور کہاکہ غیر مؤثر سلامتی کونسل کی وجہ سے مختلف جنگوں میں معصوم انسانی جانوں کا اتلاف ہورہا ہے جسے عالمی برادری کبھی بھی منصفانہ قرار نہیں دے سکتی۔ ہمارا ایقان ہے کہ اب اقوام متحدہ میں اصلاحات ناگزیر ہوچکے ہیں تاکہ وہ آج کی موجودہ صورتحال سے ہم آہنگ ہوکر اس کی حقیقی عکاس بن سکے اور موجودہ دور کے انتہائی مشکل اور پیچیدہ معاملات سے نمٹنے اپنی اہلیت میں اضافہ کرسکے۔ یاد رہے کہ اقوام متحدہ کے موجودہ سکریٹری جنرل بان ۔ کی ۔ مون کی میعاد عنقریب اختتام پذیر ہونے والی ہے۔

TOPPOPULARRECENT