Friday , August 18 2017
Home / جرائم و حادثات / القاعدہ کی مالی مدد کرنے والے امریکی بھائیوں کا حیدرآباد سے تعلق

القاعدہ کی مالی مدد کرنے والے امریکی بھائیوں کا حیدرآباد سے تعلق

سعیدآباد میں محمد یحییٰ فاروق اور ملے پلی میں ابراہیم زبیر کے گھروں پر پولیس کی نظر
ایس ایم بلال
حیدرآباد ۔ /8 نومبر۔امریکہ کیخلاف جدوجہد کیلئے القاعدہ کے اعلیٰ کاروں کو مالی امداد فراہم کرنے کے الزام میں ایف بی آئی کی جانب سے گرفتار کئے گئے دو این آر آئی برادران کا تعلق حیدرآباد سے ہونے کی توثیق کی گئی ہے ۔ 37 سالہ محمد یحییٰ فاروق اور اس کے بھائی 36 سالہ محمد ابراہیم زبیر کو فیڈرل بیورو آف انوسٹی گیشن نے امریکہ کے خلاف تشدد و جہاد کیلئے القاعدہ لیڈر انور عولقی کو کریڈٹ کارڈ کے ذریعہ معاشی مدد فراہم کی تھی۔ امریکی خفیہ ایجنسی نے مذکورہ دونوں بھائیوں کے علاوہ آصف احمد سلیم اور اس کے بھائی سلطان سلیم کو بھی گرفتار کیا ہے ۔ فاروق اور ابراہیم کی گرفتاری کے بعد ایف بی آئی نے ہندوستانی انٹلی جنس ایجنسیوں کو امریکہ کے خلاف جہاد میں ملوث ہونے پر ان کی گرفتاری اور انسداد دہشت گردی قوانین کے تحت گرفتاری کی اطلاع دی تھی ۔ باوثوق ذرائع نے بتایا کہ انٹلیجنس ایجنسیوں نے امریکہ میں گرفتار این آر آئی برادران کا پتہ حیدرآباد میں کامیاب طور پر لگالیا ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ محمد یحییٰ فاروق ساکن اکبر باغ سعیدآباد ، محمد احمد شاکر اور عارف النساء کا بیٹا ہے اور اس نے عثمانیہ یونیورسٹی سے 1995 ء سے 1999 ء تک انجنیئرنگ کی تعلیم حاصل کی اور بعد ازاں امریکہ کی لوئی سانا یونیورسٹی کو مزید تعلیم کیلئے روانہ ہوگیا تھا ۔ 2002 ء میں فاروق نے اوہیو یونیورسٹی سے ماسٹرس کی ڈگری حاصل کی اور اس نے امریکی شہری نبیلہ طلعت نامی لڑکی سے شادی کی ۔ جبکہ اس نے امریکی شہریت حاصل کرنے سے گریز کیا ۔  جبکہ اس کا بھائی محمد ابراہیم زبیر ساکن نیو ملے پلی سی آئی بی کوارٹرس نے ایلینائی یونیورسٹی میں 2001-05ء تک انجینئرنگ کی تعلیم حاصل کی ۔ ایف بی آئی نے اپنے الزامات میں یہ بتایا ہے کہ فاروق اور ابراہیم نے امریکہ کیخلاف جہاد چھیڑنے کی غرض سے کریڈٹ کارڈ کے ذریعہ القاعدہ کو مالی امداد کا منصوبہ تیار کیا تھا اور اس سلسلے میں دونوں بھائیوں نے ای میلس کا تبادلہ کیا جسے ایف بی آئی نے حاصل کرلیا ۔ امریکہ میں ایف بی آئی کیجانب سے دونوں بھائیوں کی گرفتاری پر حیدرآباد میں ان کے والدین میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے اور انٹلیجنس ایجنسیوں نے حیدرآباد کے علاقہ سعیدآباد اور ملے پلی میں مذکورہ نوجوانوں کے مکانات کا تجزیہ کیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT