Wednesday , July 26 2017
Home / شہر کی خبریں / الکٹرانک ادائیگیوں کے رجحان میں کمی

الکٹرانک ادائیگیوں کے رجحان میں کمی

کارڈ اور فون کے ذریعہ ادائیگیوں کو یقینی بنانے حکومت کے سخت اقدامات
حیدرآباد۔مئی(سیاست نیوز) حکومت الکٹرانک ادائیگیوں کے فروغ اور اس میں اضافہ کا دعوی کر رہی ہے لیکن سال گذشتہ کے آخری ایام اور گذشتہ مارچ کی بہ نسبت حالیہ عرصہ میں الکٹرانک ‘ کارڈ اور فون کے ذریعہ ادائیگیوں میں کمی ریکارڈ کی جا رہی ہے اور بتایا جاتا ہے کہ حکومت کی جانب سے ادائیگیوںمیں کمی کے اس رجحان کو روکنے کیلئے سخت گیر اقدامات کئے جا سکتے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ گذشتہ ماہ اپریل کے دوران یونیفائیڈ پے منٹ انٹرفیس (UPI) کے ذریعہ ادائیگیوںمیں 7.9فیصد کی گراوٹ ریکارڈ کی گئی ہے جبکہ کارڈ کے ذریعہ ادائیگی میں 1.1فیصد کی گراوٹ ریکارڈ کی گئی ہے۔ گذشتہ 6ماہ کا جائزہ لئے جانے کے بعد ایسا محسوس ہوتا ہے کہ ملک گیر سطح پر ماہ مارچ کے دوران کارڈ اور الکٹرانک ادائیگیوں میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا ۔ موبائیل بینکنگ ماہ مارچ 2017کے دوران 38.9فیصد ریکارڈ کی گئی جبکہ اپریل کے دوران اس میں 32.6 فیصد کی گراوٹ ریکارڈ کی گئی ہے ۔ان اعداد و شمار کو دیکھتے ہوئے معاشی ماہرین کا کہنا ہے کہ ملک میں شہریوں کے ہاتھ میں نقد رقومات پہنچ چکی ہیں جس کے نتیجہ میں موبائیل کے ذریعہ یا کارڈ و الکٹرانک ادائیگی کے رجحان میں کمی واقع ہونے لگی ہے۔ ڈسمبر 2016میں یونیفائیڈ پے منٹ انٹرفیس کے ذریعہ ادائیگی کے حجم میں 566.7فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا تھا جس کی قدر میں 677.8فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا تھا۔ الکٹرانک ادائیگی کے ایپلیکیشن کے تیارکنند گان وعہدیداروں کا کہنا ہے کہ ملک میں کرنسی تنسیخ کے فیصلہ کے بعد دیگر ذرائع ادائیگی کو کافی فروغ حاصل ہوا ہے اور توقع کی جا رہی ہے کہ الکٹرانک و ڈیجیٹل ادائیگی کے فروغ کیلئے آئندہ کئے جانے والے اقدامات سے اسے مزید استحکام حاصل ہوگا۔ماہرین کا کہنا ہے کہ الکٹرانک ادائیگیوں کے فروغ کیلئے کئے جانے والے اقدامات کے آغاز کی صور ت میں نقد ادائیگیوں کے رجحان میں مزید کمی واقع ہوگی ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT