Monday , August 21 2017
Home / ہندوستان / امرناتھ حملہ میں ملوث 4 دہشت گردوں میں 2پاکستانی

امرناتھ حملہ میں ملوث 4 دہشت گردوں میں 2پاکستانی

سرغنہ کیلئے تلاشی مہم جاری۔ جموں و کشمیر میں سخت ترین چوکسی۔ دومرکزی وزراء کا دورہ ٔسرینگر

نئی دہلی ؍ سرینگر ۔ 12 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) چار دہشت گردوں جن میں سے دو پاکستانی ہیں، امرناتھ یاتریوں پر حملہ میں مشتبہ طور پر ملوث ہیں، جس میں 7 یاتری ہلاک ہوئے۔ وزارت داخلہ کے عہدیداروں نے آج انٹلیجنس مواد کے حوالہ سے کہا کہ پاکستانی شہری اور لشکرطیبہ کا کمانڈر ابواسمعیل دوشنبہ کے حملہ کا سرغنہ ہے اور اس اعانت ایک دیگر پاکستانی اور دو مقامی عسکریت پسندوں نے کی۔ عہدیداروں نے بتایا کہ چاروں دہشت گردوں کیلئے زبردست تلاشی مہم جاری ہے، جنہوں نے سمجھا جاتا ہیکہ یاتریوں کی بس پر حملہ کے بعد مقام واردات سے فراری کیلئے دو موٹرسائیکلوں کا استعمال کیا۔ گجرات کے رجسٹریشن والی بس جس پر حملہ ہوا، جموں میں 7 جولائی کو پہنچی تھی اور امرناتھ مندر سے متعلق سنٹر پر اسے درج رجسٹر کیا گیا۔ ابتداء میں یہ بس یاتریوں کے معمول کے قافلہ کا حصہ تھی اور بلتال تک اس کا سفر قافلہ کے ساتھ رہا۔ اس بس کے یاتریوں نے 8 جولائی کو مندر کے درشن کئے اور واپس ہوئے۔ واپسی کے راستہ پر یاتریوں نے قافلہ چھوڑ دیا اور سرینگر کیلئے روانہ ہوئے۔ گجراتی یاتری سرینگر میں دو یوم سیاحوں کے طور پر رہے۔ 10 جولائی کو شام میں تقریباً 4:30 بجے وہ سرینگر سے کاترا کیلئے روانہ ہوئے۔ یہ گاڑی تقریباً 6:30 بجے کھنابل سے 10 کیلو میٹر دور ایک مقام پر پنکچر ہوئی۔ جب بس نے اپنے سفر کا احیاء کیا، تقریباً 8:15 بجے کھنابل میں دہشت گردوں کے حملے کا نشانہ بنی اور پھر بس کے ڈرائیور سلیم شیخ کی بہادری نے یاتریوں کی اکثریت کو بچا لیا۔ اس دوران وزارت داخلہ نے آج کہا کہ جموں و کشمیر میں سخت ترین چوکسی اختیار کی گئی ہے۔ ریاست میں پیدا شدہ صورتحال پر گورنر این این ووہرہ اور چیف منسٹر محبوبہ مفتی اور سیکوریٹی اداروں کے سرکردہ عہدیداروں نے وزیراعظم کے دفتر (پی ایم او) میں وزیرمملکت جتیندر سنگھ اور مملکتی وزیرداخلہ ہنس راج اہیر پر مشتمل مرکزی وزارتی ٹیم کے تفصیلی غوروخوض کے بعد سخت ترین چوکسی اختیارکرنے کی ہدایت جاری کی گئی۔ وزارت داخلہ کے بیان میں کہا گیا ہیکہ حالیہ دہشت گرد حملے میں یاتریوں کی جانوں کے اتلاف اور چند دوسروں کے زخمی ہونے کے بدبختانہ واقعہ کو ملحوظ رکھتے ہوئے وزراء نے سارے سیکوریٹی نظام کو اعلیٰ ترین سطح پر چوکس کردیا ہے۔ وزیراعظم نریندر مودی اور وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ کی ہدایت پران دونوں وزراء نے سرینگر کا دورہ بھی کیا۔ انہوں نے گورنر اور چیف منسٹر سے اس صورتحال پر تفصیلی تبادلہ خیال سے قبل مقامی فوجی کمانڈر، چیف سکریٹری، پولیس سربراہ، ریاستی حکومت کے سینئر عہدیداروں، سی آر پی ایف کے ڈائرکٹر جنرل، بی ایس ایف اور دیگر سیکوریٹی اداروں کے افسران سے بات چیت کے دوران سیکوریٹی انتظامات کا جائزہ لیا۔ ہمالیائی پہاڑیوں کے غار میں واقع اس مندر میں تاحال 1.5 لاکھ یاتری پوجا کرچکے ہیں۔ یہ 40 روزہ یاترا 29 جون کو شروع ہوئی تھی۔

TOPPOPULARRECENT