Saturday , March 25 2017
Home / Top Stories / امریکہ سے تین ملین تارکین وطن کا فوری اخراج

امریکہ سے تین ملین تارکین وطن کا فوری اخراج

میکسیکو سے متصل سرحد پر دیوار تعمیر ہوکر رہے گی : ڈونالڈٹرمپ

واشنگٹن ۔ /13 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ کے نو منتخب صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے تارکین وطن کے خلاف اپنا سخت موقف برقرار رکھتے ہوئے فوری طور پر 3 ملین غیرمجاز تارکین وطن کو واپس بھیج دینے کا اعلان کیا ۔ انہوں نے کہا کہ ہم انہیں جلد سے جلد ملک سے نکال باہر کررہے ہیں ورنہ ہم سب قید ہوجائیں گے ۔ انہوں نے سی بی ایس نیوز کو بتایا کہ ایسے افراد کو جو مجرم ہیں یا مجرمانہ ریکارڈ رکھتے ہیں ، ٹولیوں کے ارکان ، منشیات کے ڈیلرس جن کی تعداد تقریباً 2 ملین یا پھر 3 ملین ہوسکتی ہے ، ان تمام کو ہمارے ملک سے نکال باہر کیا جائے گا ، ورنہ ہم عملاً قید کی زندگی گزارنے پر مجبور ہوں گے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ سب غیرقانونی تارکین وطن ہیں ۔ انتخابی مہم کے دوران ٹرمپ نے ان ممالک کو انتباہ دیا تھا جو ان غیرقانونی تارکین وطن کو قبول نہیں کریں گے کہ قانونی راستہ اختیار کرتے ہوئے ایسے ممالک کے افراد کو ویزا کی اجرائی بند کردی جائے گی ۔ ایک اندازہ کے مطابق امریکہ میں 11 ملین تارکین وطن ہیں جو دستاویزات رکھتے ہیں ۔ ان میں سے کئی ہزار ہندوستانی نژاد امریکی ہیں ۔ ڈونالڈ ٹرمپ نے کہا کہ مابقی غیرقانونی تارکین وطن کے بارے میں وہ سرحد کو محفوظ بنانے کے بعد فیصلہ کریں گے ۔ جیسے ہی ہماری سرحد محفوظ ہوجائے گی تمام حالات معمول پر آجائیں گے ۔ ہم ان لوگوں کے خلاف کارروائی کریں گے جو عوام میں خوف و دہشت پیدا کرتے ہیں ۔ لیکن ایسا کرنے سے پہلے ضروری ہے کہ ہماری سرحد کو محفوظ بنایا جائے ۔ ٹرمپ نے اس بات پر زور دیا کہ وہ میکسیکو کی سرحد پر دیوار تعمیر کرنے کا ایک اور انتخابی وعدہ بھی ضرور پورا کریں گے ۔ ٹرمپ کے بحیثیت صدر انتخاب کے بعد دیوار کی تعمیر کے سلسلے میں لائحہ عمل تیار کرنا شروع کردیا گیا ہے اور حکومت میکسیکو نے برسرعام یہ یاددہانی کرائی کہ دیوار کی تعمیر کیلئے وہ رقم ادا نہیں کرے گی ۔

 

ٹرمپ کیخلا ف امریکی شہروں میں مظاہرے جاری
نیویارک ؍ لاس اینجلس۔13نومبر (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ کے نو منتخب صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی مخالفت میں ملک بھر میں مظاہروں کا سلسلہ مسلسل بڑھتا جا رہا ہے ۔نیویارک، لاس اینجلس اور شکاگو میں ہزاروں کی تعداد میں مظاہرین نے ریلیوں میں حصہ لیا۔ ریلیوں کے منتظمین کا کہنا ہے کہ منگل کو صدارتی انتخابات میں ریئل اسٹیٹ کے بڑے کاروباری مسٹر ٹرمپ کی چونکانے والی فتح کے بعد اس طرح کے احتجاج مسلسل بڑھ رہے ہیں۔مظاہرین کا الزام ہے کہ ان کی جیت شہریوں اور انسانی حقوق کے لیے خطرہ ہے ۔نو منتخب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے خلاف ریاست اورگن کے ساحلی شہر پورٹ لینڈ میں ہفتے کی صبح ہونے والا مظاہرہ تشدد میں بدل گیا۔ مظاہرہ کرنے والے گروپوں نے کہا ہے کہ وہ آنے والے دنوں میں امریکہ بھر کے کئی شہروں میں مظاہروں کی منصوبہ بندی کر رہے ہیں۔ یہ مظاہرے ان خدشات کے پیش نظر کیے جا رہے ہیں کہ ٹرمپ کے صدارتی دور میں امریکیوں کے شہری حقوق کو نقصان پہنچ سکتا ہے ۔جمعہ کے روز سینکڑوں مظاہرین نے پورٹ لینڈ کی سڑکوں پر مارچ کیا جس سے ٹریفک کی روانی میں خلل پڑا۔ مظاہرین نے دیواروں پر بنے گرافیٹی آرٹ پر رنگوں کو اسپرے کر کے انہیں نقصان پہنچایا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT