Sunday , September 24 2017
Home / دنیا / امریکہ :صدارتی انتخابی نتائج میں دھاندلیاں

امریکہ :صدارتی انتخابی نتائج میں دھاندلیاں

سائنسدانوں کا ہلاری کو نتائج کو چیلنج کرنے کا مشورہ
واشنگٹن ۔ 24 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ میں اب جبکہ ریپبلکن ڈونالڈ ٹرمپ کو آئندہ صدر منتخب کرلیا گیا ہے وہیں ووٹرس کی کثیر تعداد ہلاری کلنٹن کی شکست کے صدمہ سے ہنوز ابھر نہیں پائی ہے۔ انہیں اب تک یقین نہیں ہورہا ہیکہ ہر مرحلہ پر ٹرمپ سے سبقت لینے والی ہلاری آخری لمحات میں کیونکر شکست کھا گئیں۔ لہٰذا امریکہ کے متعدد کمپیوٹر سائنسدانوں نے ہلاری کلنٹن کیمپین کو مشورہ دیا ہیکہ وہ رائے دہی کے اہم حلقوں ونکانسن، مشی گن اور پنسلوانیا میں ووٹوں کی گنتی دوبارہ کروائیں کیونکہ انہیں یہ ثبوت ملے ہیں کہ مذکورہ بالا مقامات پر انتخابی دھاندلیاں ہوئی ہیں۔ کمپیوٹر سائنسداں کا ایقان ہیکہ تینوں مقامات پر ووٹوں کی گنتی سے چھیڑچھاڑ ہوئی ہے یا پھر انہیں ہیک کیا گیا ہے جبکہ انتخابی مہمات کے دوران خود ٹرمپ یہ دہائی دیا کرتے تھے کہ رائے دہی کے دوران دھاندلی کی جاسکتی ہے اور اگر اس دھاندلی کے نتیجہ میں ان کی (ٹرمپ) شکست کا اعلان کیا گیا تو وہ اسے قبول نہیں کریں گے مگر ہلاری کی اعلیٰ ظرفی دیکھئے کہ وہ خود ٹرمپ کی دھاندلیوں کا شکار ہوکر خاموش ہیں۔ ٹرمپ کو اہم رائے دہی حلقوں ونکانسن، پنسلوانیا اور مشی گن میں 8 نومبر کو منعقدہ صدارتی انتخابات میں کامیابی حاصل ہوئی تھی۔ سائنسدانوں میںجے الیکس ہلڈرمین بھی شامل ہیں جو یونیورسٹی آف مشی گن سنٹر فار کمپیوٹر سیکوریٹی اینڈ سوسائٹی کے ڈائرکٹر ہیں، نے کلنٹن کیمپین کو اشارہ دیا ہیکہ ہلاری کلنٹن کو صرف ان حلقوں میں شکست ہوئی جہاں الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کا استعمال ہوا جبکہ دیگر حلقوں میں پیپربیالٹس اور آپٹیکل اسکیانرس استعمال کئے گئے تھے ۔

TOPPOPULARRECENT