Saturday , August 19 2017
Home / Top Stories / امریکہ میں اسلام اور مسلمانوں کیخلاف تعصب میں اضافہ ، مسجد الکریم کو دھمکی آمیز مکتوب

امریکہ میں اسلام اور مسلمانوں کیخلاف تعصب میں اضافہ ، مسجد الکریم کو دھمکی آمیز مکتوب

۔2016ء میں مسلمانوں سے نفرت اور حملوں کے 2,213 واقعات، ٹرمپ کی کامیابی کے بعد شدت مسلمانوں میں خوف

بوسٹن، 9 مئی (سیاست ڈاٹ کام) روڈے آئی لینڈ میں مسجدالکریم کو ایک دھمکی آمیز خط بھیجا گیا جس میں مسلمانوں کو گندہ پلیت اور ذلیل کہا گیا تھا اس سے مسلمان اتنے خوفزدہ ہوگئے انہوں نے پولیس کا تحفظ مانگا۔42 سال پرانی یہ مسجد اکیلی نہیں ہے جس کے خلاف دھمکی دی گئی ہے ۔ خط ملنے کا یہ واقعہ امریکہ میں پچھلے سال ہوئے مسلم مخالف تعصب کے 2,213واقعات میں سے ایک ہے ۔ یہ بات کونسل برائے امریکہ اسلامی تعلقات کی طرف سے جاری رپورٹ میں کہی گئی ہے ۔رپورٹ کے مطابق 2016 ان واقعات میں 57 فی کا اضافہ ہوا ہے 2015 میں 1409 واقعات ہوئے تھے اور 2014 سے 2015 کے درمیان ان میں 5 فی صد اضافہ ہوا ہے ۔ تنظیم کا کہنا ہے کہ ڈونالڈ ٹرمپ کی صدارتی مہم اور نومبر کے الیکشن میں ان کی غیر متوقع جیت سے پہلے ہی مسلم مخالف واقعات میں کافی اضافہ ہوگیا تھا۔بعد میں تعصب کے واقعات میں اضافہ کی ایک وجہ ٹرمپ کی جنگجو اسلامی تنظیموں پر توجہ اور تارکین وطن کے خلاف بیانات دیں۔روڈے جزیرے کی سب کی سب سے پرانی مسجد کو تو محض دھمکی دی گئی ہے جبکہ فلوریڈا اور ٹیکساس کی مساجد کو تو آگ ہی لگادی گئی۔ تاہم مسجد کے بورڈ کے ایک رکن فیصل انصاری نے کہا کہ اس طرح کی دھمکیوں سے بہت پریشانی ہے ۔ انہوں نے کہا صرف دھمکی سننا اور اسے دیکھنا ایک جیسا نہیں ہوتا یقیناً یہ پریشان کن ہے ۔2014 میں جب مشرق وسطی میں داعش کے حملے بڑھے اور اس گروپ سے تحریک پاکر یوروپ اور امریکہ میں بھی حملے کئے گئے تو اس کے ردعمل میں مساجد پر حملے بڑھے اور شکایات میں بھی اضافہ ہوا جس کے بعد مسلم کونسل نے ہر تین ماہ پر ان حملوں کے بارے میں رپورٹیں تیار کرنی شروع کردیں ۔مسلمانوں کے خوف کی نگرانی اور اس سے نمٹنے والے محکمہ کے ڈائریکٹر کو ر نے سیلر نے کہا کہ عام خیال ہے کہ جس طرح 11 ستمبر کے حملوں کے بعد مسلم مخالف جذبات کی لہر آئی تھی اسی طرح کے حالات اب پیدا ہوگئے ہیں ۔تعصب برتنے کے واقعات مختلف قسم کے ہیں جن میں حملے سڑکوں پر لوگوں کو ہراساں کرنا ، ملازمت میں امتیاز یا ایف بی آئی کی جانب سے خواہ مخواہ پوچھ تاچھ۔مسلم مخالف نفرت انگیز جرائم بھی بڑھے ہیں۔ 2016 میں ایسے 260 واقعات ہوئے جبکہ ایک سال قبل 180 ایسے واقعات ہوئے تھے یعنی ان میں 44 فیصد اضافہ ہوا جبکہ یہ صرف وہ واقعات ہیں جن کی رپورٹ کی گئی ہے ۔کونسل کے وکیل ایک ایک واقعہ کا اچھی طرح تجزیہ کرتے ہیں۔ ٹرمپ نے اپنی انتخابی مہم کے دوران عہد کیا تھا کہ وہ مسلمانوں کے امریکہ میں داخلے پر پابندی لگادیں گے تاکہ یہاں مسلم جنگجوؤں کے حملے روکے جاسکیں۔
پیرس میں چوکسی، ریلوے اسٹیشن کا تخلیہ
پیرس، 9مئی (سیاست ڈاٹ کام) فرانس کے دارالحکومت پیرس میں سیکورٹی الرٹ کے بعد پولیس نے گیری ڈو نارد ریلوے اسٹیشن کو خالی کرا لیا ہے ۔مقامی پولیس حکام نے کہا کہ کسی بھی ہنگامی صورت حال سے نمٹنے کے لئے اسٹیشن کے باہر پولیس کی 10 گاڑیوں کی تعیناتی کی گئی ہے ۔اگرچہ انتظامیہ نے سرکاری طور پر ابھی تک اپنی اس مہم کی اطلاع نہیں دی ہے ۔ تفصیلی رپورٹ کا انتظار ہے ۔

TOPPOPULARRECENT