Wednesday , May 24 2017
Home / دنیا / امریکہ میں ایک جنونی شخص کی مسلم خاندان سے بدکلامی

امریکہ میں ایک جنونی شخص کی مسلم خاندان سے بدکلامی

’’ڈونالڈ ٹرمپ تمہیں روک دینگے، میری عیسائیت تمہارے شرعی قانون سے بلند ہوگی، شرابی کی بکواس
ہوسٹن ۔ 12 مئی (سیاست ڈاٹ کام) امریکی ریاست ٹیکساس میں ایک امریکی خاندان کی سیر و تفریح اس وقت ایک بدنما شکل اختیار کر گئی جب قریبی ساحل پر ایک شخص نے مبینہ طور پر ان کے خلاف نسل پرستی پر مبنی آہانت آمیز اور نفرت انگیز فقرے کستے ہوئے کہا کہ ’’ڈونالڈ ٹرمپ تم کو روک دیں گے‘‘۔ ساؤتھ پیڈرے آئیلینڈ میں ایک مسلم خاندان کے 14 ارکان تعطیلات گذار رہے تھے کہ ساحل کے قریب ایک شخص نے جس کی شناخت واٹرفورڈ کنکٹی کٹ کے الیگزینڈر ڈاؤننگ کی حیثیت سے کی گئی ہے، ان سے رجوع ہوا اور بدکلامی کی۔ اس کو گذشتہ ہفتہ گرفتار کرتے ہوئے اس کے خلاف کھلے عام شراب نوشی کرتے ہوئے حالت نشہ میں گھومنے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔ ساؤتھ پیڈرے میں یہ مقدمہ درج کیا گیا ہے اور محکمہ پولیس نے کہا ہیکہ ڈاؤننگ نے عوامی مقامات پر حالت نشہ میں تھا جس سے خود اس کو اور دوسروں کو خطرہ لاحق تھا۔ اس  خاندان کی ایک رکن نوریہ نے یوٹیوب پر اس واقعہ کا ویڈیو کلپ پوسٹ کیا ہے، جس میں خاندان نے حفاظت و سلامتی کی خاطر اپنا آخری نام ظاہر نہ کرنے کی درخواست کی ہے۔ الیگزینڈر ڈاؤننگ کی گرفتاری سے قبل پیش آئے واقعہ کی تفصیلات بیان کی۔ ڈاؤننگ جو حالت نشہ میں تھا نوریہ اور ان کے  خاندان کے قریب پہنچ کر بدکلامی کررہا تھا۔ اس نے مسلم خاندان سے چیخ چیخ کر کہا کہ ’’تم لوگ مجھے کبھی بھی روک نہیں سکیں گے۔ ڈاؤننگ نے کہا کہ ’’میری عیسائیت تمہارے شرعی قانون سے بلند ہوگی۔ اندازہ کیجئے آئی  ایس آئی ایس بیکار محض ہے۔ نوریہ نے کہا کہ دو خواتین نے ان کے والد سے مدد کی درخواست کی اور کہا کہ یہ شخص ہراساں کررہا ہے۔ والد نے ڈاؤننگ سے کہا کہ وہ ساحل پر دوسروں کو تفریح کا موقع دے جس پر ڈاؤننگ واپس چلا گیا اور پھر واپس آتے ہوئے اس خاندان سے گالی گلوج کی اور کہا کہ ’’تم ایک بیکار محض مسلمان ہیں‘‘۔ نوریہ نے کہا کہ وہ اپنے خاندان سے ملنے کیلئے اس ٹاؤن کو پہنچی تھی۔ اس خاندان کے ایک اور رکن احمد نے کہاکہ ان کے خاندان نے اس واقعہ میں ڈاؤننگ کو ملزم بتانے کیلئے ویڈیو فٹیج بنایا ہے کیونکہ اس نے ان کے خاندان کے ساتھ جس میں 2 اور 4 سال کی عمر کے چند بچے بھی شامل تھے، بدتمیزی کی۔ احمد نے کہاکہ ’’سب سے پہلے تو ہم امریکی ہیں اور حسن اتفاق سے مسلمان بھی ہیں۔ اس سے پہلے مجھے ایسا تلخ تجربہ کبھی نہیں ہوا۔ ہم نے اس کو مشتعل کرنے کیلئے کچھ نہیں کہا تھا‘‘۔ واضح رہیکہ مسلمانوں کو ڈرانے دھمکانے اور غیرضروری و بیکار محض قرار دیئے جانے کی ملک بھر سے موصول ہونے والی اطلاعات میںاضافہ کے درمیان یہ واقعہ پیش آیا ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT