Monday , October 23 2017
Home / Top Stories / امریکہ میں مذہبی آزادی کی تائید اور دفاع کا ٹرمپ کا عہد

امریکہ میں مذہبی آزادی کی تائید اور دفاع کا ٹرمپ کا عہد

ایوانجیلیکل مذہبی عیسائیوں کے پُرہجوم جشن سے صدرامریکہ کا خطاب ‘ مذہبی آزادی کی تائید اور دفاع کا تیقن

واشنگٹن۔2جولائی ( سیاست ڈاٹ کام ) صدر امریکہ ڈونالڈ ٹرمپ نے عہد کیا کہ وہ امریکہ میں مذہبی آزادی کی تائید اور اس کا دفاع کریں گے ۔ وہ مذہبی عیسائیوں کے ایک جلسہ سے خطاب کررہے تھے ‘ جس کا موضوع ’’دہشت گردی ایک انتہائی سنگین اور مہلک خطرہ ‘‘ عصری دنیا میں مذہبی آزادی کیلئے خطرہ تھا ۔ انہوں نے کہا کہ ہم دہشت گردی اور انتہا پسندی کو ہمارے ملک میں اپنی تشہیر کی اجازت نہیں دے سکتے یا پھر اس کو ہمارے ساحلی علاقوں یا شہروں میں محفوظ پناہ گاہ فراہم کرسکتے ہیں ۔ یہ جلسہ آزادی کے جشن کے طور پر منایا جارہا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ کوئی بھی جو ہمارے ملک کے ساحلوں پر قدم رکھنا چاہتا ہے وہ ہماری اقدار کا احترام کرے گا اور ہمارے عوام سے محبت کرنے کی صلاحیت رکھے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ایوانجلیکلپہلا سب سے بڑا باپٹسٹ چرچ ہے جو ڈلاس اور سالم ذرائع ابلاغ گروپ کی زیر سرپرستی قائم ہوا تھا ۔ اس موقع پر جان ایف کینیڈی سنٹر کا سنگ بنیاد رکھا گیا تھا ۔ یہ مرکز اداکاری کے فن کی سرپرستی کیلئے قائم کیا گیا تھا ۔

اس چرچ کے پہلے پادری باپٹسٹ رابرٹ جیفرس تھے ۔ وہ 2016ء کی صدارتی انتخابی مہم میں ٹرمپ کی بھرپور تائید کررہے تھے ۔ بعض اوقات یہ تقریب ٹرمپ نے کہاکہ انہیں ایسا محسوس ہوتا ہے کہ ان کی تائید میں منعقد کردہ جشن ہے ۔ صدر امریکہ نے تیقن دیا کہ امریکہ ایک بار پھر خبر رساں ذرائع ابلاغ پر اپنی تنقید جاری رکھے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ذرائع ابلاغ کوشش کررہے تھے کہ انہیں وائٹ ہاؤز میں داخل ہونے سے روکیں ۔ انہوں نے کہا کہ لیکن آج میں امریکہ کا صدر ہوں اور ذرائع ابلاغ اپنی کوشش میں ناکام ہوچکے ہیں ۔ ٹرمپ ایک زبردست سجائے ہوئے شہ نشین سے امریکی پرچم کے سائے تلے تقریر کررہے تھے ۔ ٹرمپ کی صدارتی انتخابی مہم کا نعرہ تھا ’’ امریکہ کو دوبارہ عظیم بناؤ ‘‘ زبردست امریکی پرچم تلے مختلف گیتوں کی دھنے پیش کی گئیں‘ جن میں سے ایک گیت ٹرمپ کی صدارتی انتخابی مہم کے نعرے پر مبنی تھا ۔ اس تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ٹرمپ نے اپنی مہم کی تجدید کرتے ہوئے تیقن دیا کہ وہ سینئر امریکی شہریوں کا ہمیشہ دفاع کرتے رہیں گے ۔ انہوں نے کہاکہ وہ مذہبی آزادی کی تائید اور دفاع کریں گے ۔ ان کے ملک نے انہیں زندگی اسی لئے عطا کی ہے کہ وہ مذہبی آزادی کا بھرپوردفاع کریں۔۰

TOPPOPULARRECENT