Saturday , October 21 2017
Home / دنیا / امریکہ میں مسلم ٹیچر کو سرپوش سے پھانسی لینے کا مشورہ

امریکہ میں مسلم ٹیچر کو سرپوش سے پھانسی لینے کا مشورہ

واشنگٹن۔13نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) ایک 24سالہ مسلم اسکول ٹیچر کو امریکہ میں مشورہ دیا گیا کہ وہ اپنے سرپوش سے پھانسی لے لیں۔ ایک دستی تحریر میں نامعلوم شخص نے اس سے کہاکہ امریکہ میں سرپوش کا استعمال ممنوع قرار دیا جانے والا ہے ۔ ’’ مائرا ٹیلی ‘‘ ڈاکولا ہائی اسکول گوئنٹ کاؤنٹی کی ٹیچر تھی جو ریاست جارجیا میں اٹلانٹا کے مضافات میں واقع ہے ۔اُس نے گذشتہ ہفتہ فیس بک کے صفحہ پر اس تحریر کی تصویر شائع کی تھی ۔ مسرس ٹیلی آپ کا سرپوش ممنوع قرار دیا جانے والا ہے اس لئے آپ اسے اپنی گردن کے اطراف باندھ کر پھانسی پر لٹک کیوں نہیں جاتی ‘ یہ تحریر کالی سیاہی سے لکھی گئی ہے اور روانہ کرنے والا کا نام امریکہ تحریر ہے ۔ اٹلانٹا کے رسالے ’’ کانسٹی ٹیوشن ‘‘ نے یہ اطلاع دی ہے ۔ فیس بُک کے صفحہ پر خاتون نے تحریر کیا ’’ بحیثیت مسلمان میں سرپوش پہنتی ہوں کیونکہ یہ میرے عقیدہ کی ہدایت ہے ‘ میں اس کی حقیقت کے بارے میں ہماری برادری کا شعور بیدار کرنا اور سازگار ماحول پیدا کرنا چاہتی ہوں ۔ نفرت پھیلانے سے امریکہ دوبارہ عظیم نہیں بن جائے گا ‘‘ ۔ گوئنٹ کاؤنٹی اسکول کے ترجمان سلون رچ نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ اسکول کے عہدیدار اس تحریر کے لکھنے والے کا پتہ چلانے کی کوشش کررہے ہیں ‘ جسے ارکان عملہ کو ایک دھمکی اور سنگین معاملہ سمجھا جارہا ہے

TOPPOPULARRECENT