Tuesday , September 26 2017
Home / ہندوستان / امریکہ میں ہندوستانیوں پر حملے ، نفرت پر مبنی جرائم

امریکہ میں ہندوستانیوں پر حملے ، نفرت پر مبنی جرائم

حکمت عملی کی ساجھیداری کیلئے قومی مفاد پر مفاہمت ناممکن، راجیہ سبھا میں سشماسوراج کا بیان
نئی دہلی ۔ 20 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) حکومت نے آج کہا کہ امریکہ میں ہندوستانیوں پر ہوئے حالیہ حملے محض امن و قانون کا مسئلہ نہیں ہیں بلکہ نفرت پر مبنی جرائم تھے۔ حکومت نے اپنے اس عہد کا اعادہ بھی کیا کہ اس ملک (امریکہ) کے ساتھ حکمت عملی کی ساجھیداری کی خاطر بہرصورت قومی مفاد پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔ وزیرخارجہ سشماسوراج نے راجیہ سبھا میں بیان دیتے ہوئے اس اعتماد کا اظہار کیا کہ ٹرمپ انتظامیہ اس قسم کے واقعات پر کڑی نظر رکھے گا اور انہیں (ایسے واقعات کو) رجحان بننے کی اجازت نہیں دے گا۔ سشماسوراج نے کہا کہ ’’ہم ان واقعات کو محض امن و قانون کا مسئلہ تصور نہیں کرتے یہ اس حد تک معمولی نہیں ہیں۔ ہماری طرف سے ہم یہ کہتے ہیں کہ یہ 100 فیصد نفرت پر جرائم تھے اور اس پہلو سے ان واقعات کی تحقیقات کی جانی چاہئے‘‘۔ امریکہ میں ہندوستانیوں پر ہوئے حالیہ تین محلوں پر وزیرخارجہ یہ بیان دے رہی تھیں۔ 22 فبروری کو شہر کنساس میں ایک امریکی نے 32 سالہ ہندوستانی سافٹ ویر انجینئر کوچی بھوتلا سرینواس کو گولی مار کر ہلاک کردیا تھا۔ 2 مارچ کو ایک ہند نژاد امریکی ہرنیش پٹیل کو گولی مار کر ہلاک کردیا گیا تھا۔ 4 مارچ کو سیاٹل کے قریب کینٹ میں نامعلوم شخص نے ہند نژاد امریکی کو گولی مار دیا تھا۔ سشماسوراج نے کہا کہ ’’ہم اعلیٰ ترین سطح پر اس مسئلہ کو رجوع کررہے ہیں۔ ہم دی کھ رہے ہیں کہ آیا یہ (امریکہ میں ہندوستانیوں کے خلاف نفرت پر حملوں کا) کوئی رجحان تو نہیں بن رہا ہے‘‘۔ انہوں نے کہاکہ امریکی انتظامیہ کہتا رہا ہیکہ یہ حملے نفرت پر مبنی انفرادی نوعیت کے جرائم ہیں اور ان میں ایسا کوئی رجحان نہیں ہے۔ سی پی آئی لیڈر ڈی راجہ نے اندیشہ ظاہر کیا کہ ہندوستان کی جانب سے اس مسئلہ کو امریکہ سے رجوع کرنے کے معاملہ میں حکمت عملی کی ساجھیداری حائل ہوسکتی ہے جس پر سشماسوراج نے جواب دیا کہ ’’حکمت عملی کی ساجھیداری کا ہرگز یہ مطلب نہیں کہ ہم اپنے قومی مفادات پر سمجھوتہ کرلیں۔ آپ ہرگز یہ نہ سوچیں کہ محض حکمت عملی کی ساجھیداری کے نام پر ہم خاموش بیٹھ جائیں گے۔ سشماسوراج نے پرزور لہجہ میں کہا کہ ’’حکمت عملی کی ساجھیداری ثانوی معاملہ ہے لیکن ہمارے شہریوں کا تحفظ و سلامتی اولین اور مقدم ہے‘‘۔

TOPPOPULARRECENT