Sunday , September 24 2017
Home / پاکستان / امریکہ کی جانب سے پاکستان کو 337 ملین ڈالرس کی امداد

امریکہ کی جانب سے پاکستان کو 337 ملین ڈالرس کی امداد

کولیشن سپورٹ فنڈ (CSF) کے تحت وزیرستان میں القاعدہ شورش پسندی کے خلاف کامیاب کارروائی کا معاوضہ

اسلام آباد ۔ 24 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ پاکستان کو کولیشن سپورٹ فنڈ  کے تحت 337 ملین ڈالرس فراہم کرے گا جو دراصل ان کامیاب کارروائیوں کا نتیجہ ہے جو شمالی وزیرستان کے قبائیلی علاقوں میں ملک کے فوجی آپریشن کے ذریعہ کامیابی سے انجام دی گئیں۔ القاعدہ سے مربوط شورش پسندوںکے خلاف پاکستانی افواج نے مہم چھیڑ دی تھی جس کے مثبت نتائج سامنے آئے۔ اس سلسلہ میں امریکی حکومت نے اپنے عزائم سے کانگریس کو واقف کروادیا ہے کہ سی ایس ایف کے تحت خطیر رقم 15 دنوں کے نوٹس کے بعد پاکستان کیلئے جاری کردی جائے گی۔ یاد رہے کہ پاکستان کو دراصل مذکورہ بالا رقم 30 جولائی سے قبل مل جانے کی توقع تھی کیونکہ اس طرح خطیر رقم کو پاکستان اپنے اس بجٹ کے خسارہ کی پابجائی میں استعمال کرنا چاہتا تھا تاہم ایکسپریس ٹریبون کے مطابق خطیر رقم کی اجرائی میں تاخیر کی وجہ سے پاکستان کے مقاصد ادھورے رہ گئے۔ یہاں اس بات کا تذکرہ دلچسپ ہوگا کہ مذکورہ بالا رقم دراصل پاکستان کیلئے امریکہ کی جانب سے ایک ایسا انعامی معاوضہ ہے جو پاکستان نے امریکہ کی دہشت گردی کے خلاف جنگ میں شامل ہوکر اپنی جانب سے بھی خطیر رقم صرف کی۔ 2001ء سے اب تک پاکستان کو سی ایس ایف کے تحت امریکہ کی جانب سے تقریباً 13 بلین ڈالرس حاصل ہوچکے ہیں۔ تازہ ترین رقم پاکستان کو شمالی وزیرستان میں القاعدہ سے مربوط شورش پسندوں کا قلع قمع کرنے کیلئے کئے گئے اخراجات کے طور پر ادا کئے جارہے ہیں۔

علاوہ ازیں امریکہ پاکستانی افواج کو انتہائی اہم فوجی سازوسامان بھی سربراہ کرے گا جس کی ادائیگی دہشت گردی کے خلاف جنگ کیلئے قائم کئے گئے ایک دیگر فنڈ سے کی جائے گی جو پنٹاگون کی جانب سے قائم کیا گیا ہے۔ دوسری جانب پاکستان کو امریکہ کی جانب سے ملنے والی امداد پر تیار کی گئی ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہیکہ پاکستان کو حالیہ دنوں میں دفاعی شعبہ میں امریکہ کی جانب سے دل کھول کر امداد کی جارہی ہے۔ تاہم سیویلین امداد کا سلسلہ کافی عرصہ سے رکا ہوا ہے۔ پاکستان کی وزارت مالیات کی بجٹ بکس کے مشاہدہ سے پتہ چلتا ہیکہ پاکستان کو مالیاتی سال 2015ء کے دوران کیری ۔ لوگار ایکٹ کے تحت سیویلین شعبہ میں صرف 50 ملین امریکی ڈالرس کا تعاون ہی حاصل ہوسکا۔ بجٹ بکس کو قومی اسمبلی میں پیش کیا گیا تھا جبکہ امریکہ نے پاکستان سے وعدہ کیا تھا کہ 2010 تا 2015ء پاکستان کو کیری لوگار ایکٹ کے تحت 7.5 بلین ڈالرس دیئے جائیں گے جس کا تخمینہ فی سال 1.5 بلین ڈالرس ہوتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT