Monday , August 21 2017
Home / Top Stories / امریکہ کے مذہبی آزادی کمیشن کو ہندوستان کا ویزہ دینے سے انکار

امریکہ کے مذہبی آزادی کمیشن کو ہندوستان کا ویزہ دینے سے انکار

اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کو مایوسی، امریکہ مذہبی آزادی کے معاملہ میں ہندوستان سے بہتر : جان کربی
واشنگٹن ۔ 8 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ نے ہندوستان  کے ساتھ مذہبی آزادی کے موضوع پر تبادلہ خیال کرنے میں ذرہ برابر بھی ہچکچاہٹ کا مظاہرہ نہیں کیا کیونکہ جہاں تک اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کے اعلیٰ سطحی عہدیدار کا سوال ہے تو اس نے واضح طور پر اس سے ہندوستان کے اس فیصلہ پر مایوسی کا اظہار کیا کہ امریکہ کے ایک مذہبی کمیشن کے ارکان کو ویزہ دینے سے انکار کیا گیا۔ اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ ترجمان جان کربی نے کہا کہ ہم جانتے ہیں کہ ہندوستانی سفارتخانے سے یو ایس کمیشن آف انٹرنیشنل ریلیجئس فرئیم کمشنرس کو ویزے جاری نہیں کئے گئے جنہوں نے 4 مارچ کو ہندوستان کے دورہ کا منصوبہ بنایا تھا۔ انہوں نے کہا کہ ہم مذکورہ کمیشن کے ساتھ ہر ممکنہ تعاون کرتے ہیں کیونکہ یہ کمیشن دنیا کے تمام ممالک میں مذہبی آزادی کی خلاف ورزیوں کے واقعات کی تفصیلات جمع کرتا ہے تاکہ حقائق کی روشنی میں اور حالات کے پس منظر میں ان کا تجزیہ کیا جاسکے۔ یہاں تک کہ امریکی صدر بارک اوباما نے یہ بھی بات نوٹ کی تھی جب انہوں نے گذشتہ سال اپنے دورہ ہند کے دوران یہ تک کہہ دیا تھا کہ اگر حکومت ہند مذہبی آزادی اور تکثیریت کے فروغ کیلئے اقدامات کرتی ہے تو امریکہ ہمیشہ اس کی تائید کرے گا۔ بارک اوباما کا یہ بیان آج بھی اپنی جگہ مسلمہ ہے اور حقیقت پر مبنی ہے۔

کربی نے کہا کہ انہیں یہ کہتے ہوئے فخر محسوس ہوتا ہے کیونکہ جب میں نے صدر کا ذکر چھیڑ دیا ہے اور انہیں بھی مذہبی آزادی کے معاملہ میں بطورگواہ شامل کیا ہے تو مجھے کہنے دیجئے کہ مذہبی معاملات میں ہمارا ملک (امریکہ) زیادہ مستحکم ہے۔ یہاں ہر ایک کو اپنے پسند کے مذہب کو اختیار کرنے کی پوری آزادی ہے۔ یہاں تک کہ اگر کوئی کسی بھی مذہب کا پیروکار نہیں ہے تو اس سے کوئی پوچھ تاچھ نہیں ہوتی اور نہ ہی اس کے ساتھ اور نہ ہی دیگر مذاہب کے عقیدتمندوں کے ساتھ کوئی امتیازی سلوک روا رکھا جاتا ہے۔ امریکہ نے خصوصی طور پر مذہبی آزادی کے موضوع پر ہندوستان کے ساتھ کئی بار تفصیلی مذاکرات کئے ہیں کیونکہ یہ کوئی ایسا موضوع نہیں ہے جس کے بارے میں ہندوستان سے تبادلہ خیال کرتے ہوئے ہم ہچکچائیں یا خوفزدہ ہوں کیونکہ ہمارا خیال ہیکہ اگر کسی بھی سماج کومستحکم کرتا ہے تو وہاں لوگوں کو مذہبی آزادی فراہم کی جانی چاہئے۔ جب لوگ مذہبی طور پر آزاد ہوں گے تو لازمی بات ہیکہ ان کو استحکام حاصل ہوگا۔ بہرحال ہندوستان میں اس وقت مذہبی آزادی کا کیا موقف ہے اس کے بارے میں وثوق سے کچھ نہیں کہا جاسکتا لیکن امریکی کمیشن کے ارکان کو ویزا دینے سے انکار پر امریکہ کو یقینا مایوسی ہوئی ہے۔ ہندوستان نے آج اپنے انکار پر استدلال پیش کرتے ہوئے کہا کہ یو ایس سی آئی آر ایف کو ویزہ جاری نہ کرنا کوئی نئی بات نہیں ہے۔ ہندوستان 2009ء سے ویزے جاری نہیں کررہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT