Friday , August 18 2017
Home / دنیا / امریکہ ہندوستان اور چین کے درمیان دشمنی کیلئے کوشاں

امریکہ ہندوستان اور چین کے درمیان دشمنی کیلئے کوشاں

بیجنگ ۔ 16 مئی (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ پر ہندوستان اور چین کے درمیان نفرت کے بیج بونے کا الزام عائد کرتے ہوئے چین نے آج کہا کہ دو پڑوسی ممالک اتنے عقلمند ہیں کہ اپنے سرحدی تنازعہ کو پرامن طور پر بات چیت کے ذریعہ حل کرسکتے ہیں۔ چین نے امریکہ سے خواہش کی کہ ان کی کوششوں کا احترام کرے۔ امریکہ کے محکمہ دفاع پنٹگان کی بے بنیاد خبر کو جس میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ دیوقامت کمیونسٹ ملک زیادہ تعداد میں فوجی ہند ۔ چین سرحدوں پر تعینات کررہا ہے، مسترد کرتے ہوئے چین نے کہا کہ یہ اس کی فوجی ترقی کی غلط تاویل ہے۔ پی ٹی آئی کو ایک سوال کا تحریری جواب دیتے ہوئے وزارت دفاع چین نے کہا کہ چین ۔ ہند سرحد پر خیرسگالی اور امن برقرار رکھنا انتہائی اہم ہے۔ اس بات پر دونوں ممالک کے قائدین اتفاق کرچکے ہیں۔ فی الحال چین اور ہندوستان سرگرمی کے ساتھ سرحدی علاقوں میں باہم تبادلہ خیال کررہے ہیں اور دونوں افواج کے درمیان ہاٹ لائن قائم کی گئی ہے جس کی وجہ سے دونوں میں مواصلاتی نظام قائم ہوچکا ہے۔ سرحد پر تعینات فوجی عہدیداروں کی باقاعدہ ملاقاتیں ہوتی ہیں۔ ہند۔ چین سرحد پر بحیثیت مجموعی صورتحال پرامن اور مستحکم ہے۔ وزارت دفاع امریکہ کے عہدیدار واضح طور پر دونوں ممالک کے درمیان نفرت کے بیج بونے کی کوشش کررہے ہیں۔ اسی وجہ سے بے بنیاد اطلاعات کو شہرت دے رہے ہیں۔ وزارت خارجہ چین نے قبل ازیں ایک تحریری جواب میں کہا تھا کہ امریکہ کو چاہئے کہ ہندوستان اور چین کے سرحدی تنازعہ کو بات چیت کے ذریعہ پرامن طور پر حل کرنے کی کوششوں کا احترام کرے۔ گذشتہ ماہ ہندوستان اور چین نے 19 ویں مرحلہ کے مذاکرات منعقد کئے تھے تاکہ سرحدی تنازعہ کی یکسوئی کی جاسکے۔ چین کا کہنا ہیکہ سرحدی تنازعہ 2000 کیلو میٹر تک محدود ہے۔ اروناچل پردیش پر 3 جنوبی تبت ہونے کا دعویٰ کرتا ہے جبکہ ہندوستان سے اپنا اٹوٹ حصہ قرار دیتا ہے۔ علاوہ ازیں اقصائے چین کا پورا علاقہ دونوں ممالک کے درمیان متنازعہ ہے۔

TOPPOPULARRECENT