Tuesday , September 19 2017
Home / دنیا / امریکی ادارہ ’ناسا‘ اب خلاء میں آگ لگائے گا

امریکی ادارہ ’ناسا‘ اب خلاء میں آگ لگائے گا

واشنگٹن ، 16 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) امریکی خلائی تحقیق کے ادارہ ’ناسا‘ (NASA) کا جان ایچ گلن ریسرچ سنٹر خلاء میں ’’بڑے پیمانے پر آگ‘‘ جلانے والا ہے، جو ایک تجربے کا حصہ ہے کہ بہت ہی معمولی کشش ثقل کے ماحول میں آگ کے پھیلاؤ کو سمجھا جاسکے۔ اسے اسپیس کرافٹ فائر اکسپریمنٹ (Saffire) کا نام دیا گیا ہے جو آئندہ Orbital/ATK Cygnus کارگو مشن پر کیا جائے گا۔ خلاء میں سپلائی کیلئے استعمال کی جانے والی اس غیرانسان بردار گاڑی کو بین الاقوامی خلائی اسٹیشن (آئی ایس ایس) پر اہم سائنسی اشیاء پہنچانے کے بعد تجربہ گاہ بنایا جائے گا۔ 2016ء میں سفائر I، II اور III کو علحدہ موقعوں پر لانچ کیا جائے گا۔ ’کاٹن فائبر گلاس کے مادے‘ سے بھرے ایک ڈبے میں آگ لگائی جائے گی اور اس تجربے سے حاصل ہونے والا ڈیٹا زمین کو بھیجا جائے گا اور پھر Cygnus کا سیارہ زمین میں دوبارہ داخلہ ہوگا۔ اس خلائی گاڑی پر نصب کئے جانے والے آلات سے شعلہ کے بھڑکاؤ ، آکسیجن کے استعمال اور دیگر تبدیلیوں کی پیمائش ہوگی۔ ناسا کے سائنس دانوں کو معلوم ہے کہ خلاء میں شعلے بے ہنگم ہوسکتے ہیں لیکن انھیں اُن کی خاصیتوں اور سائنسی نکات کا پوری طرح اندازہ نہیں ہے۔ 22 مارچ کو ناسا کا کمرشیل پارٹنر Orbital ATK اپنی Cygnus خلائی گاڑی کو آئی ایس ایس کیلئے ری سپلائی مشن پر روانہ کرے گا۔

TOPPOPULARRECENT