Wednesday , September 20 2017
Home / دنیا / امریکی تحدیدات میں اضافہ ‘ معاہدہ منسوخ کردینے صدر ایران کا انتباہ

امریکی تحدیدات میں اضافہ ‘ معاہدہ منسوخ کردینے صدر ایران کا انتباہ

تہران ۔ 15اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) صدر ایران حسن روحانی نے آج انتباہ دیا کہ ایران اپنے نیوکلیئر معاہدہ 2015ء کو جو عالمی طاقتوں کے ساتھ طئے پایاہے ‘ معاہدہ ‘ منسوخ کرسکتا ہے ۔ اگر امریکہ کی تحدیدات میں دن بہ دن اضافہ ہوتا جائے ‘ چند گھنٹے قبل ہی امریکہ نے ایران پر تازہ تحدیدات عائد کرنے کا اعلان کیا تھا ۔ پارلیمنٹ میں تقریر کرتے ہوئے حسن روحانی نے صدر امریکہ ڈونالڈ ٹرمپ پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے دکھادیا ہے کہ امریکہ ’’ اچھا شراکت دار ‘‘ نہیں ہے ۔ حسن روحانی کا یہ تبصرہ نیوکلیئر معاہدہ کے سلسلہ میں ایران پر میزائل تجربوں اور حملوں کے بعد بڑھتے ہوئے دباؤ کے پس منظر میں اہمیت رکھتا ہے ۔ ایران پر میزائل تجربوں اور حملوں کی بنیاد پر امریکہ نے تازہ تحدیدات عائد کی ہیں ۔ اس کا کہناہے کہ یہ تجربے اور دیگر خلاف ورزیاں نیوکلئیر معاہدہ کے جذبہ کے خلاف ہیں ۔ حسن روحانی نے انتباہ دیا کہ ایران معاہدہ سے دستبردار ہونے کیلئے تیار ہے ‘ اگر بیشتر بین الاقوامی تحدیدات اس کے نیوکلئیر پروگرام میں تخفیف کے بعد بھی کم نہ ہوں۔ انہوں نے کہا کہ تحدیدات کا تجربہ ناکام ہوچکا ہے ۔ سابق انتظامیہ دھمکیاں دے کر ایران کو بات چیت کی میز پر بلانے کی کوشش کر کے ناکام رہ چکا ہے ۔ حسن روحانی نے کہا کہ اگر وہ چاہتے ہیں کہ اس تجربہ کو دوہرائیں تو مختصر سی مدت میں چند ہفتوں یا مہینوں میں نہیں بلکہ چند دنوں اور گھنٹوں میں ہم اپنی سابق سرگرمیوں کا مزید شدت کے ساتھ احیاء کریں گے ۔ حسن روحانی نے کہا کہ ٹرمپ نے دکھا دیا ہے کہ وہ ناقابل اعتماد شراکت دار ہیں ۔ صرف ایران ہی نہیں بلکہ امریکہ کے تمام حلیف ممالک کو اس کا احساس ہوگیا ہے ۔ حالیہ مہینوں میں دنیا نے دیکھا ہے کہ امریکہ نے مسلسل اور بار بار اپنے تیقنات کی اور نیوکلیئر معاہدہ کی خلاف ورزی کی ہے ۔ اس نے دیگر کئی عالمی معاہدوں کو بھی نظرانداز کردیا اور اپنے حلیف ممالک پر ظاہر کردیا کہ امریکہ نہ تو اچھا شراکت دار ہے اور نہ ہی قابل اعتماد مذاکرات کا فریق ۔

TOPPOPULARRECENT