Wednesday , August 23 2017
Home / کھیل کی خبریں / امریکی شوٹنگ پرینا کو صدمہ، خاندان کی سلامتی پر اندیشے

امریکی شوٹنگ پرینا کو صدمہ، خاندان کی سلامتی پر اندیشے

بندوق پر مبنی تشدد پر اظہار افسوس، بھانجوں کے تحفظ کیلئے فکرمند، سوتیلی بہن کے قتل کی یادیں تازہ
لندن۔10 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) سرینا ولیمس نے کہا ہے کہ امریکہ میں بگڑتے ہوئے نسلی تعلقات اور بندوق پر مبنی تشدد سے انہیں سخت افسوس ہوا ہے۔ انہوں نے اعتراف کیا کہ موجودہ مخدوش صورتحال میں انہیں خود اپنے خاندان کے تحفظ و سلامتی کے بارے میں خطرات و اندیشے لاحق ہیں۔ 34 سالہ ٹینس اسٹار سرینا نے گزشتہ روز ساتویں مرتبہ ومبلڈن ٹائٹل جیت کر 22 ویں گرینڈ سلام فتح کرتے ہوئے اسٹیفی گراف کا ریکارڈ برابر کرلیا تھا۔ واضح رہے کہ ٹیکساس کے شہر ڈلاس میں پولیس مظالم کے خلاف احتجاجی مارچ کے دوران ایک سیاہ فام انتہاء پسند نے پانچ پولیس افسران کو گولی مارکر ہلاک کردیا تھا۔ رواں ہفتہ کے اوائل میں من سوٹا میں فیلانڈو کیٹائیل اور لوئیسیانا میں الٹن اسٹرلنگ کی ہلاکتوں کے خلاف سارے ملک کی طرح ڈلاس میں بھی پرامن احتجاجی مظاہرہ کیا جارہا تھا۔ سرینا ولیمس نے آل انگلینڈ کلب میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انتہائی جذباتی انداز میں کہا کہ ’’میں سوچتی ہوں کہ (وہاں) میرے بھی بھانجے بھتیجے ہیں۔ کیا مجھے انہیں کال کرتے ہوئے یہ کہنا ہوگا کہ وہ باہر نہ نکلیں۔ اگر آپ اپنی کار میں سوار ہوں گے تو شائد میں آپ کو آخری مرتبہ دیکھ رہی ہوں گی۔‘‘ انہوں نے مزید کہا کہ ’’یہی ایک بات ہے جس کے بارے میں میں گہری تشویش کے ساتھ سوچتی ہوں۔ کیوں کہ یہ انتہائی تباہ کن ہوسکتی ہے۔ وہ بہت اچھے بچے ہیں۔‘‘ سرینا ولیمس نے کہا کہ ’’میں نہیں سمجھتی کہ (ان حالات کا) جو اب یہی ہوگا کہ ہمارے نوجوان سیاہ فام افراد کو گولی مارکر شوٹ کیا جاتا رہے‘‘ سرینا نے کہا کہ ’’تشدد (اس مسئلہ کا) جواب نہیں ہے۔ ڈلاس میں ہوئی شوٹنگ انتہائی افسوسناک ہے۔ کوئی بھی اپنی زندگی سے محروم ہونے کا مستحق نہیں ہے۔ اس میں کوئی مضائقہ نہیں کہ کسی کا رنگ کیا ہے اور وہ کہاں کا ہے۔ ہم سب انسان ہیں‘‘ سرینا ولیمس اور ان کا خاندان بھی ماضی میں بندوق پر مبنی تشدد سے متاثر رہا ہے۔

ستمبر 2003 ء میں ان کی بڑی سوتیلی بہن اسٹونڈے پرائیس کو کامپٹن میں ڈرائیونگ کے دوران گولی مارکر ہلاک کردیا گیا تھا۔ کامپٹن جولاس اینجلس کا جرائم زدہ شہر مضافاتی علاقہ ہے جہاں سرینا ولیمس اپنا بچپن گزاری تھیں۔ 31 سالہ اسٹیونڈے پرائس اس وقت سرینا اور ان کی ٹینس کھلاڑی بہن وینس کی اسٹنٹ کے طور پر کام کیا کرتی تھیں۔ پرائس کو اس وقت گولی مارکر ہلاک کردیا گیا تھا جب وہ اپنے بوائے فرینڈ کے ساتھ کار میں سفر کررہی تھیں۔ اس واقعہ میں بوائے فرینڈ زخمی ہوگیا تھا۔ پڑوسیوں نے بتایا تھا کہ ان کی کار پر زائد از ایک درجن فائر کئے گئے تھے۔ سرینا ولیمس نے کہا کہ ’’ہم نے ایک دوسرے سے محبت کا سبق سیکھا ہے اور میرے خیال میں اس مقصد کے حصول کے لئے ہمیں شعور بیداری کے لئے بہت کچھ کام کرنا ہوگا۔‘‘ سرینا نے امریکہ میں حالات حاضرہ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ’’لیکن میں سمجھتی ہوں کہ ساری صورتحال انتہائی افسوسناک ہے۔ بالخصوص مجھ جیسی کسی کے لئے یہ اور بھی سنگین ہے۔ یہ کچھ ایسی بات ہے جیسی ہوتا دیکھ کر سخت تکلیف پہونچتی ہے۔‘‘ سرینا ولیمس امریکہ میں تشدد کی مذمت کرنے والی تازہ ترین اسپورٹس اسٹار ہیں۔ ان سے قبل این بی اے اسٹار کارمیلو انتھونی نے جمعہ کو اتھلیٹس پر زور دیا تھا کہ ’’ایک قدم آگے بڑھیں اور تبدیلی کا مطالبہ کریں۔‘‘

TOPPOPULARRECENT